عطاء الرحمٰن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

}}

عطاء الرحمٰن (ولادت – ١٩٣٣، وفات)

عتاوررحمٰن تخلص "عطا"، شہر ہبلی کے ایک قادرالکلام شاعر تھے۔ جن کا شمار ریاست کرناٹک کے نامور شوریٰ میں ہوتا ہے۔

پچپن تعلیم[ترمیم]

ادبی کارنامے[ترمیم]

وفات[ترمیم]

بڑے افسوس کی بات ہے کہ موصووف کا ١٩٨٦ میں اغوا ہوا۔ بعد میں اطلاع آی کہ ان کا قتل کر دیا گیا۔ حکوومت کی جانب سے مجرمین کو تلاش کرنے کی تمام کوششیں اگرچہ رایگاں گیئں لیکن حقیقت یہ ہے کہ بعض سیاسی وجوہات کارفرماں رہیں۔ جن میں چند بارثوق سیاست دان قانون کی گرفت میں نہیں آسکے۔ اور اس باکمال شاعر کو ایک افسوسناک انجام سے دوچار ہونا پڑا۔ ان کی کلام کا جب ہم مطالہ کرتے ہیں تو ان کے کلام میں پای جانے والی حق گوئی اور بیباکی کی ضرب شاید کسی سیاست دان پر پڑی ہو۔ اور اس نے بطور انتقام ان کا قتل کروایا ہو۔ مثال کے طور پر، علما سو کے بارے میں ان کی نظم اس بات کا پتہ دیتی ہے کہ ملت میں خلفشار ذممدار علمائے کرم خواہ مخواہ خود کو اس نظم کے مندرجات کا ہدف سمجھتے تہے۔

حوالہ جات[ترمیم]