عظمیٰ گیلانی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search


عظمیٰ گیلانی
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1945 (عمر 75–76 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
میرٹھ  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ اداکارہ اور ادکارہ  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
Pride of Performance (ribbon).gif تمغائے حسن کارکردگی 
ہم ایوارڈ برائے شاندار منفی اداکاری  ویکی ڈیٹا پر (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحہ  ویکی ڈیٹا پر (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

عظمیٰ گیلانی (انگریزی: Uzma Gillani) (پیدائش: 1945، میرٹھ؛[1][2] پاکستان ٹیلی ویژن کی ایک تجربہ کار اداکارہ ہیں، جو کرداروں کا انتخاب انتہائی چھان پھٹک کر کرتی ہیں۔ ان کا ٹیلی ویژن ڈراما کیریئر پینتالیس سال پر محیط ہے، جس میں شروعات پی ٹی وی ڈراموں یعنی وارث (1979–1982) ، نشیمن (1982) ، دہلیز (1981) اور پانہ (1981) سی کی اور بڑے پیمانے پر پذیرائی حاصل کی۔ انھی خدمات کے اعتراف میں حکومت پاکستان نے انہیں پرائیڈ آف پرفارمنس ایوارڈ دیا۔ .

ابتدائی زندگی اور پس منظر[ترمیم]

عظمیٰ گیلانی ننھیال میرٹھ میں 1945 کو پیدا ہوئیں تاہم آپ کے ددھیال کا تعلق دہلی سے ہے۔ اُن کے والد ریاست بہاولپور کے ایک بارسوخ فرد تھے۔ پہلے بہاول پور میں قیام پزیر رہیں پھر شادی کے بعد لاہور منتقل ہوئیں اور اب آسٹریلیا کے شہر سڈنی میں مقیم ہیں۔

سرطان سے صحتیابی[ترمیم]

عظمیٰ گیلانی نے اپنی زندگی میں سرطان سے کامیابی کے ساتھ جنگ جیتی.[3]

ڈرامے[ترمیم]

  • نشیمن
  • پناہ (1981)
  • وارث (1982)
  • امر بیل (2006)
  • من وسلویٰ (2007)
  • فراق(2014)
  • شہر اجنبی (2014)
  • مریم (2015)
  • دستار انا (2017)
  • بھول (2018)
  • سچ (2019)

حوالاجات[ترمیم]

  1. https://www.bbc.com/urdu/entertainment/2015/01/150107_book_review_sen_rwa
  2. http://daanish.pk/37269
  3. اداکارہ عظمیٰ گیلانی نے کینسر کے خلاف جنگ کیسے جیتی؟