عظمی اسلم خان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
عظمی اسلم خان
Uzma Aslam Khan.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش 19 فروری 1969 (52 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
لاہور  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی یونیورسٹی آف ایریزونا
ہوبارٹ اینڈ ولیم سمتھ کالجز
سینٹ پیٹرک اسکول  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ مصنفہ  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان انگریزی[2]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

ابتدائی زندگی اور تعلیم[ترمیم]

عظمی اسلم خان لاہور میں پیدا ہوئیں لیکن ان کی پرورش کراچی میں ہوئی ،جس کے ساتھ ساتھ ان کے ابتدائی سال منیلا ، ٹوکیو اور لندن میں بھی گزرے [3] انہوں نے نیو یارک کے ہوبارٹ اور ولیم اسمتھ کالجز [4] میں تعلیم حاصل کرنے کے لیے اسکالرشپ حاصل کی [4] جہاں سے انہوں نے تقابلی ادب میں بی اے حاصل کیا اور امریکی ریاست ٹزسن ، ایریزونا یونیورسٹی سے ایم ایف اے کی تعلیم حاصل کی [5]۔

ناول نگار[ترمیم]

عظمی خان کا پہلا ناول ، دی اسٹوری آف نوبل روٹ ، پینگوئن بوکس انڈیا نے 2001 میں شائع کیا تھا ، [6] اور اسے روپا اینڈ کمپنی نے 2009 میں دوبارہ شائع کیا تھا۔ [7] اان کا دوسرا ناول ، انڈرساسنگ ، برطانیہ اور پینگوئن بوکس انڈیا میں فلیمنگو / ہارپر کولینس نے 2003 میں بیک وقت شائع کیا ۔ اس کا اٹھارہ ممالک میں چودہ زبانوں میں ترجمہ ہوچکا ہے۔اسے افغانستان کی جنگ اور خلیجی جنگ کے بعد کی دہائیوں کے دوران 1990 کی دہائی میں ترتیب دیا گیا اور 9/11 سے کچھ مہینوں پہلے مکمل ہونے والی اس کتاب کو "پریذیانی" [8] کہا گیا ہے کیونکہ اس میں مغرب کی شمولیت کے اندھیرے اور پریشان کن سیاق و سباق کو پیش کیا گیا ہے۔ مشرق اور پاکستان سے آنے والے 9/11 کے بعد کے افسانوں کا پیش خیمہ۔ جیسا کہ خان نے کہا ہے کہ "اس کتاب کا زیادہ تر حصہ تاریخ میں آپ کو پریشان کرنے کے لیے واپس آ رہا ہے۔" [8] عظمی خان کا تیسرا ناول ، دی جیومیٹری آف گاڈ ، روپا اینڈ کمپنی انڈیا نے سن 2008 میں چھپا تھا۔[9] عظمی خان کا چوتھا ناول ، جلد سے پتلی ، 2012 میں امریکا اور اس کے بعد کینیڈا ، ہندوستان ، فرانس ، ترکی ، برطانیہ اور پاکستان میں شائع ہوا تھا اور 2020 میں اسے مصر میں ریلیز کیا جائے گا۔ اسے جنوبی ایشین ادب کے لیے ڈی ایس سی انعام مین ایشین لٹریری کے لیے نامزد کیا گیا تھا

حوالہ جات[ترمیم]

  1. جی این ڈی- آئی ڈی: https://d-nb.info/gnd/1051642124 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 جنوری 2016 — اجازت نامہ: CC0
  2. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb14547435v — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — مصنف: Bibliothèque nationale de France — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  3. "آرکائیو کاپی". 28 مئی 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 31 مارچ 2020. 
  4. ^ ا ب "Khan '91 Publishes Third Novel". 2.hws.edu. 
  5. "آرکائیو کاپی". 04 جولا‎ئی 2009 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 31 مارچ 2020. 
  6. "Penguin India". Penguin.co.in. 
  7. "Rupa Publications Home - Rupa Publications". Rupa Publications. اخذ شدہ بتاریخ 28 جولا‎ئی 2019. 
  8. ^ ا ب "Uzma Aslam Khan: A cocktail of influences". The Independent. 14 June 2003. اخذ شدہ بتاریخ 28 جولا‎ئی 2019. 
  9. "The Geometry of God". Amazon.co.uk. ISBN 9788129112965. Uzma Aslam Khan