علی اکبر صالحی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
علی اکبر صالحی
(فارسی میں: علی اکبر صالحی خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقامی زبان میں نام (P1559) ویکی ڈیٹا پر
تفصیل=

Vice President of Iran
Head of Atomic Energy Organization
آغاز منصب
16 اگست 2013
صدر حسن روحانی
Fleche-defaut-droite-gris-32.png Fereydoon Abbasi
  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
مدت منصب
16 جولائی 2009 – 13 دسمبر 2010
صدر محمود احمدی نژاد
Fleche-defaut-droite-gris-32.png Gholam Reza Aghazadeh
Mohammad Ahmadian Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
Minister of Foreign Affairs
مدت منصب
30 جنوری 2011 – 15 اگست 2013
Acting: 13 دسمبر 2010–30 جنوری 2011
صدر محمود احمدی نژاد
Fleche-defaut-droite-gris-32.png Manouchehr Mottaki
محمد جواد ظریف Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
معلومات شخصیت
پیدائش 24 مارچ 1949 (70 سال)[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
کربلا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of Iran.svg ایران  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
مذہب اسلام
اولاد 3[2]
رشتے دار Jawad Salehi (brother)
عملی زندگی
مادر علمی میساچوسٹس انسٹیٹیوٹ برائے ٹیکنالوجی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ سیاست دان،  واستاد جامعہ،  وسفارت کار،  وسائنس دان،  وطبیعیات دان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
ملازمت جامعہ شریف برائے ٹیکنالوجی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں نوکری (P108) ویکی ڈیٹا پر
دستخط
علی اکبر صالحی

علی اکبر صالحی ایرانی سیاست دان، سفیر، عالم اور سابق وزیر خارجہ جو مختلف اہم سفارتی عہدوں پر تعینات رہے ہیں۔ ساتھ ہی وہ تہران کی ایک جامعہ میں بطور پروفیسر وابستہ ہیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Munzinger person ID: https://www.munzinger.de/search/go/document.jsp?id=00000028579 — بنام: Ali Akbar Salehi — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  2. گفت و گوی دوستانہ با علی اکبر صالحی
  3. همسر علی‌اکبر صالحی در اردن +عکس
  4. "Iran's FM, nuclear chief, DM receive medals for role in nuclear deal"۔ Iranian Students' News Agency۔ 8 فروری 2016۔ مورخہ 31 مئی 2016 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 اپریل 2016۔
  5. Tasnim News Agency (Persian زبان میں)۔ 24 اگست 2013 http://web.archive.org/web/20181225221521/http://www.tasnimnews.com/fa/news/1392/06/02/122731/%D9%86%D8%B4%D8%A7%D9%86-%D9%87%D8%A7%DB%8C-%D8%AF%D9%88%D9%84%D8%AA%DB%8C-%D8%AF%D8%B1-%D8%B1%D9%88%D8%B2%D9%87%D8%A7%DB%8C-%D9%BE%D8%A7%DB%8C%D8%A7%D9%86%DB%8C-%D8%AE%D8%A7%D8%AA%D9%85%DB%8C-%D9%88-%D8%A7%D8%AD%D9%85%D8%AF%DB%8C-%D9%86%DA%98%D8%A7%D8%AF-%D8%A8%D9%87-%DA%86%D9%87-%DA%A9%D8%B3%D8%A7%D9%86%DB%8C-%D8%B1%D8%B3%DB%8C%D8%AF-%D8%AC%D8%AF%D9%88%D9%84۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 15 اپریل 2016۔ |title= غیر موجود یا خالی ہے (معاونت)