غلام نبی کشمیری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
غلام نبی کشمیری
غلام نبی کشمیری

معلومات شخصیت
وفات 7 نومبر 2019  ویکی ڈیٹا پر تاریخ وفات (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دہلی  ویکی ڈیٹا پر مقام وفات (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of India.svg بھارت  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مذہب اسلام
فرقہ اہل سنت
فقہی مسلک حنفی
عملی زندگی
پیشہ مدیر، عالم  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
P islam.svg باب اسلام

مولانا غلام نبی بخش کشمیری دارالعلوم وقف دیوبند کے سینئر استاذ اور ماہنامہ ندائے دارالعلوم کے ایڈیٹر تھے۔ دارالعلوم دیوبند کے ایک ممتاز فاضل اور وقف دارالعلوم کے جید اساتذہ میں شمار ہوتے تھے۔ انہیں درس و تدریس کے علاوہ خطابت و تحریر پر بھی یکساں عبور حاصل تھاچنانچہ جہاں چار دہائی سے زائد دارالعلوم وقف میں تدریسی خدمات انجام دیں وہیں اس ادارے سے شائع ہونے والے ماہانہ مجلہ کی ادارت بھی کرتے رہے،اس کے علاوہ انہوں نے متعدد کتابیں بھی تصنیف کیں ۔

مولانا خالص علمی آدمی تھے،شستہ و شگفتہ اخلاق کے حامل تھے،طلبہ و علماء میں انھیں یکساں مقبولیت حاصل تھی۔ درمیان میں کچھ عرصہ انہوں نے دیوبند کے ایک دوسرے ادارے دارالعلوم زکریامیں بھی تدریسی خدمت انجام دی تھی اور جب سے طبیعت زیادہ علیل ہوئی تھی تو کشمیر کے مدرسہ ضیاء العلوم میں تدریس حدیث کی خدمت انجام دے رہے تھے۔

ماہنامہ ندائے دار العلوم کی ادارت[ترمیم]

آپ دار العلوم دیوبند وقف سے شائع ہونے والا ماہنامہ مجلہ ندائے دار العلوم کے ایڈیٹر بھی تھے ۔ انہوں نے ندائے دارالعلوم میں بانی دارالعلوم دیوبند مولانا محمد قاسم نانوتوی کی تصانیف کی تسہیل و توضیح کا بھی اچھا سلسلہ شروع کیاتھا اوران کی مشہور کتابتقریر دلپذیرکی روشنی میں مولانا کے افکار و علوم کی تشریح کررہے تھے، جس کی اب تک 47 قسطیں شائع ہوچکی ہیں۔

تصنیف و تالیف[ترمیم]

آپ کو ایک طرف جہاں خطابت کا ملکہ حاصل تھا وہیں دوسری طرف آپ قلم کے سہشوار بھی تھے آپ کے قلم سے متعدد کتابیں وجود میں آ چکی ہیں جن سے عوام و خواص سبھی مستفید ہو رہے ہیں جن میں ایک بارہ مہینوں کے فضائل و خصوصیات پر مشتمل تقاریر کا مجموعہ اور عربی شعر و ادب کی مشہور کتاب دیوان متنبی کی شرح قابل ذکر ہیں۔

وفات[ترمیم]

7 نومبر 2019 بروز جمعرات صبح کے وقت آپ کی روح قفص عنصری سے پرواز کر گئے :

آسماں تیری لحد پر شبنم افشانی کرے سبزہ و نورستہ اس گھر کی نگہ بانی کرے

مولانا مرحوم کی نماز جنازہ 7 نومبر 2019ء بروز جمعرات بعد نماز عشاء دارالعلوم دیوبند کے احاطۂ مولسری میں ادا کی گئی۔ مرحوم کافی عرصے سے بیمار تھے اور مسلسل دوا علاج جاری تھا۔