فتنۂ ارتداد کی جنگیں

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
فتنۂ ارتدار کی جنگیں
عربی: حُرُوبُ الرِّدَّةِ
بسلسلہ اسلامی فتوحات
Mohammad adil-Riddah wars.ar.png
خارطة تُظهرُ أبرز المعارك التي وقعت أثناء حُرُوب الرَّدة بين المُسلمين والقبائل العربيَّة المُرتدَّة عن الإسلام ومعهم مُدعي النُبوَّة.
تاریخ1112ھ \ 632ء633ء
مقامجزیرہ نما عرب
نتیجہ مسلمانوں کی فتح اور جزیرہ نما عرب کے پورے علاقے پر دوبارہ حکمرانی حاصل ہوئی
محارب
BlackFlag.svg سلطنت خلافت راشدہ مرتد عرب قبائل
کمانڈر اور رہنما
شریک یونٹیں
أحد عشر (11) لواء رجال القبائل المُرتدَّة

محمد صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے آخری ایام میں نجد میں مسیلمہ اور یمن میں اسود عنسی سے نبوت کا دعوی کر دیا تھا۔ اس کے بعد اور کئی لوگوں نے نبوت کا دعوی کیا اور ان کے بہت سے پیروکار بھی اکٹھے ہو گئے۔ بعض لوگوں نے زکوۃ دینے سے انکار کر دیا۔ ابوبکر صدیق کی زیر قیادت مسلمانوں نے ان تمام مرتدین سے جنگ کی اور ایک سال کی جنگ کے بعد ان سب پر قابو پایا۔ ان جنگوں کو فتنۂ ارتدار کی جنگیں کہا جاتا ہے۔

پس منظر[ترمیم]

جنگیں[ترمیم]

شمار امیر لشکر لشکر کی سمت
1 خالد بن ولید ان کو بزاجہ کی طرف بھیجا گیا جہاں طلحہ بن خویلد اسدی موجود تھا۔ پھر وہ بطاح گئے جہاں مالک بن نویرہ کی سرکوبی مقصود تھی۔ پھر یمامہ گئے جہاں مسیلمہ کذاب کا مرکز تھا۔
2 عکرمہ بن ابی جہل پہلے یمامہ کی طرف مسیلمہ کذاب کے مقابلے کے لیے گئے۔ ان کو احتیاطا بھیجا گیا تھا تا کہ یمامہ میں بڑی جنگ کے لیے تیاری کی جا سکے۔ اصل معرکہ خالد بن ولید کے ذے تھا۔ عکرمہ کے ساتھ دو ہزار جنگجو تھے۔ پھر یمامہ کی طرف گئے جہاں ذوالتاج لقیط بن مالک اذدی کی سرکوبی مقصود تھی۔
3 عمرو ابن عاص یہ تبوک اور دومۃ الجندل گئے، جہاں قضاعہ، ودیعہ اور حارٹ کے قبائل تھے۔
4 شرجیل بن حسنہ یہ عکرمہ کے بعد احتیاطا یمامہ بھیجے گئے تا کہ مسیلمہ کذاب سے فیصلہ کن لزائی لڑی جا سکے۔ پھر وہ حضرموت گئے۔
5 خالد بن سعید انہیں شامی سرحد پر حمقتین کی طرف بھیجا گيا۔
6 طریفہ بن حاجز انہیں مکہ اور مدینہ کے مشرق میں ہوازن اور بنو سلیم کی سرکوبی کے لیے بھیجا گیا۔
7 علاء بن حضرمی انہیں بحرین کی طرف بھیجا گیا جہاں مغرور منذر بن نعمان بن منذر کی سرکوبی مقصود تھی۔
8 حذیفہ بن محصن قلعانی ان کو عمان میں ذوالتاج لقیط بن مالک اذدی کی طرف بھیجا گیا، پھر وہ مہرہ، حضرموت اور یمن گئے۔
9 عرفجہ بن ہرثمہ بارقی ان کو پہلے عمان پھر مہرہ، حضرموت اور یمن بھیجا گيا۔
10 مہاجر بن ابی امیہ ان کو یمن بھیجا گیا جہاں اسود عنسی کے کچھ حامی باقی تھے۔ پھر انہیں کندہ اور حضرموت کی طرف بھیجا گيا۔
11 سوید بن مقرن مزنی انہیں تہامہ اور بحر احمر کے ساحل کی طرف بھیجا گیا۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

بیرونی روابط[ترمیم]