فرینک میکورٹ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
فرینک میکورٹ
(انگریزی میں: Frank McCourt ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Frank McCourt by David Shankbone cropped.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائشی نام (انگریزی میں: Francis McCourt ویکی ڈیٹا پر (P1477) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیدائش 19 اگست 1930[1][2][3][4][5][6][7]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
نیویارک شہر[8]  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 19 جولا‎ئی 2009 (79 سال)[9][1][2][3][4][5][6]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
نیویارک شہر[10]  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ وفات اسودینومہ  ویکی ڈیٹا پر (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات طبعی موت  ویکی ڈیٹا پر (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of the United States (1795-1818).svg ریاستہائے متحدہ امریکا  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ نیور یارک  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ معلم،  مصنف،  آپ بیتی نگار،  منظر نویس،  ناول نگار  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان انگریزی  ویکی ڈیٹا پر (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان انگریزی[11]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دستخط
Autographed copy of Teacher Man (cropped).jpg
 
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحات  ویکی ڈیٹا پر (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
P literature.svg باب ادب

فرینک میکورٹ نژاد امریکی منصف۔ نیویارک 19 اگست 1930 میں پیدا ہوئے لیکن امریکا میں انیس سو تیس کے شدید اقتصادی بحران کے دوران میں اپنے والدین کے ساتھ آئرلینڈ چلے گئے۔ اپنی اس زندگی کے متعلقا انہوں نے بچپن کی یادوں پر مبنی کتاب انجلاز ایشز لکھی جس کی دس لاکھ کاپیاں فروخت ہوئیں اور جس پر انہیں انیس سو چھیانوے کے پلٹزر انعام سے بھی نوازا گیا۔ اس کتاب میں فرینک آئرلینڈ کے شہر کی ایک چھوٹی سی بستی لائمرک میں انتہائی غربت میں گزرنے والے بچپن کی بڑی بہترین منظر کشی کرتے ہیں۔ فرینک میکورٹ نے اپنے ان دنوں کو ’غربت کے عہد‘ کا نام دیا اور اس کتاب پر انیس سو ننانوے میں ہالی وڈ نے ایک فلم بھی بنائی تھی جس میں ایملی واٹسن اور رابرٹ کارلائی نے اداکاری کی۔ ان کی دوسری تحریریوں میں ’ٹس اور ٹیچر مین‘ شامل ہیں جو نیویارک میں گزری ان کی زندگی پر مبنی ہیں۔ 19 جولائی 2009 کو کینسر کے موذی مرض کی وجہ سے ان کا انتقال ہوا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب ربط : https://d-nb.info/gnd/11946411X  — اخذ شدہ بتاریخ: 27 اپریل 2014 — اجازت نامہ: CC0
  2. ^ ا ب http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb131678137 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — مصنف: Bibliothèque nationale de France — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  3. ^ ا ب دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Frank-McCourt-American-author — بنام: Frank McCourt — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  4. ^ ا ب ایس این اے سی آرک آئی ڈی: https://snaccooperative.org/ark:/99166/w6bs0mh1 — بنام: Frank McCourt — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  5. ^ ا ب فائنڈ اے گریو میموریل شناخت کنندہ: https://www.findagrave.com/cgi-bin/fg.cgi?page=gr&GRid=39643273 — بنام: Frank McCourt — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  6. ^ ا ب Munzinger person ID: https://www.munzinger.de/search/go/document.jsp?id=00000022885 — بنام: Frank McCourt — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  7. Brockhaus Enzyklopädie online ID: https://brockhaus.de/ecs/enzy/article/mccourt-frank — بنام: Frank McCourt — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  8. ربط : https://d-nb.info/gnd/11946411X  — اخذ شدہ بتاریخ: 11 دسمبر 2014 — اجازت نامہ: CC0
  9. http://www.nytimes.com/2009/07/20/books/20mccourt.html?_r=1&hpw
  10. ربط : https://d-nb.info/gnd/11946411X  — اخذ شدہ بتاریخ: 31 دسمبر 2014 — اجازت نامہ: CC0
  11. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb131678137 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — مصنف: Bibliothèque nationale de France — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ