فواد چودھری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
فواد چودھری
وزیر اطلاعات و نشریات
آغاز منصب
20 اگست 2018ء
Fleche-defaut-droite-gris-32.png سید علی ظفر (قائم مقام)
  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
رکن قومی اسمبلی پاکستان
آغاز منصب
13 اگست 2018ء
Fleche-defaut-droite-gris-32.png نوابزادہ راجہ مطلوب مہدی
  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
ووٹ 93,102
معلومات شخصیت
پیدائش صدی 20  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
رہائش جہلم  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں رہائش (P551) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
جماعت پاکستان تحریک انصاف (2016–)
پاکستان پیپلز پارٹی (2012–2013)
آل پاکستان مسلم لیگ (–2012)
پاکستان مسلم لیگ ق (2013–2016)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) ویکی ڈیٹا پر
رشتے دار چودھری الطاف حسین (چچا)[1]
چودھری افتخار حسین (چچا)[1]
چودھری شہباز حسین (چچا)[1]
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان،  وکیل  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر

فواد احمد چودھری ایک پاکستانی قانون دان اور سیاست دان جو قومی اسمبلی کے رکن[2] اور پاکستان کے موجودہ وزیر اطلاعات و نشریات ہیں۔[3]

ذاتی زندگی[ترمیم]

وہ جہلم کے بااثر سیاسی خاندان سے تعلق رکھتے ہیں اور لاہور ہائی کورٹ کے سابقہ چیف جسٹس چودھری افتخار حسین کے بھتیجے ہیں۔

سیاسی کیریئر[ترمیم]

اس نے پنجاب صوبائی اسمبلی کی نشست کے لیے پاکستان کے عام انتخابات 2002ء میں پی پی-25 (جہلم 2) سے آزاد امیدوار کے طور پر حصہ لیا لیکن ناکام رہا۔ اس نے صرف 162 ووٹ حاصل کیے اور پاکستان مسلم لیگ (ق) کے امیدوار چودھری تسییم ناصر وہاں سے کامیاب قرار پائے۔ [4]

جنوری 2012ء میں اس نے آل پاکستان مسلم لیگ کے میڈیا کوآرڈینیٹر کے طور پر استعفی دیا۔ [5] مارچ 2012ء میں اس نے آل پاکستان مسلم لیگ چھوڑ کر پاکستان پیپلز پارٹی میں شمولیت اختیار کی۔ [6] اپریل 2012ء میں وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے اسے خصوصی معاون برائے سیاسی معاملات مقرر کیا اور ریاستی وزیر کی حیثیت دی۔ [7] جولائی 2012ء میں وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف نے اسے خصوصی معاون برائے سیاسی معاملات مقرر کیا۔ [8]

پاکستان کے عام انتخابات، 2013ء میں وہ حلقہ این اے۔63 سے قومی اسمبلی پاکستان کے لیے پاکستان مسلم لیگ (ق) کا امیدوار تھا تاہم وہ کامیاب نہ ہوا۔ اس انتخابات میں وہ پنجاب کی صوبائی اسمبلی کے حلقے پی پی 24 (جہلم- 1) سے بھی امیدوار تھا اور اسے اس نشست پر بھی ناکامی ہوئی۔ [9]

جون 2016ء میں اس نے پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کی۔ [10][11] اگست 2016ء میں اس نے بطور پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار حلقہ این اے 63 (جہلم 2) سے ضمنی انتخابات میں حصہ لیا لیکن اب بھی کامیابی ہاتھ نہ لگی اور اس حلقے سے نوابزادہ راجا مطلوب مہدی کامیاب قرار پائے۔ [12]

نومبر 2016ء میں اسے پاکستان تحریک انصاف کا ترجمان مقرر کیا گیا۔ [13] مارچ 2018ء میں اسے پی ٹی آئی کا سیکرٹری اطلاعات مقرر کر دیا گیا۔ [14][15]

پاکستان کے عام انتخابات، 2018ء میں اس نے حلقہ این اے 67 (جہلم 2) سے بطور پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار حصہ لیا اور مد مقابل پاکستان مسلم لیگ (ن) کے امیدوار نوابزادہ راجا مطلوب مہدی کو 93,102 ووٹ حاصل کر کے شکست دی۔ [16] اسی انتخاب میں اس نے صوبائی اسمبلی پنجاب کے حلقے پی پی 27 (جہلم 3) سے بھی پی ٹی آئی کے امیدوار کے طور حصہ لیا اور 67,003 ووٹ حاصل کر کے مسلم لیگ ن کے امیدوار ناصر محمود کو شکست دی۔ [17] انتخابات کے بعداس نے ایک ٹی وی شو میں بات چیت میں پنجاب کے وزیر اعلیٰ بننے کی خواہش کا اظہار کیا۔ [18][19]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ "A Potohari family album ‹ The Friday Times"۔ دی فرائڈے ٹائمز۔ اخذ شدہ بتاریخ 19 اگست 2018۔
  2. Fawad Chaudhry | Pakistan Tehreek-e-Insaf
  3. فراز ہاشمی۔ "عمران کی کابینہ میں تبدیلی کا عنصر ناپید"۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
  4. "2002 election results"۔ ECP۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل (پی‌ڈی‌ایف) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  5. "Musharraf's former mediaman joins PPP | The Express Tribune"۔ The Express Tribune۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  6. "Ex-APML spokesman Fawad Chaudhry joins PPP"۔ www.pakistantoday.com.pk۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  7. From the Newspaper۔ "Gilani appoints Fawad Chaudhry as assistant"۔ DAWN.COM۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  8. "Fawad made special assistant to PM"۔ The Nation۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  9. "2013 election results"۔ ECP۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل (پی‌ڈی‌ایف) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  10. "Prominent TV anchor Fawad Chaudhry joins PTI – ARYNEWS"۔ ARYNEWS۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  11. "Fawad Chaudhry joins PTI, will contest NA- 63 Jhelum by-polls"۔ Daily Pakistan Global۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  12. "PML-N wins NA-63, PP-232 by-elections"۔ The News (انگریزی زبان میں)۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  13. "PTI appoints Fawad Chaudhry as party spokesperson | The Express Tribune"۔ The Express Tribune۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  14. "PTI appoints Fawad Chaudhry as information secretary"۔ ARYNEWS۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  15. "Fawad Chaudhry appointed as Secretary Information PTI – Pakistan – Dunya News"۔ Dunya News۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  16. "ECP – Election Commission of Pakistan"۔ www.ecp.gov.pk۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  17. "ECP – Election Commission of Pakistan"۔ www.ecp.gov.pk۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  18. "Fawad Chaudhry says would be 'great honour' if Imran Khan names him CM Punjab"۔ Geo News۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔
  19. "PTI's Fawad Chaudhry wishes to become Punjab CM"۔ Daily Pakistan Global۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جولائی 2018۔