قابوس نامہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
قابوس نامہ
Ghaboosnameh.jpg
مصنف امیر کیکاؤس بن سکندر
اصل عنوان قابوس نامہ
مترجم

اردو:میں محمد افضل
[1] انگریزی:ریوبن لیوی
(A Mirror for Princes: The Qabus Nama) کے نام سے[2]
اطالوی:آکورا دی رچرڈ زیپو
[3]

Il libro dei consigli (Qabus-Nama) کے نا م سے
ملک ایران
زبان فارسی
موضوع پند و نصائح (کامیاب زندگی سے متعلق)
صنف نثر
ناشر

فارسی: ابن سینا پبلشر، تہران
اردو: شاہکار بک فاؤنڈیشن، لاہور
انگریزی: ای پی ڈوٹن (E. P. Dutton)

اطالوی: ایڈلفی پبلشرز (Adelphi)اردو: الفیصل ناشران، لاہور
طرز طباعت شائع شدہ، صوتی اور انٹرنیٹ پر دستیاب
صفحات

فارسی جدید طباعت:272
اردو ترجمہ: 238

انگریزی ترجمہ:165
آئی ایس بی این [[خاص:BookSources/{{{ISBN}}}|{{{ISBN}}}]] ناقابل اطلاق آئی ایس بی این

قابوس نامہ (فارسی:قابوس‌نامه) کلاسک فارسی ادب کی ایک اہم کتاب ہے۔ یہ امیر کیکاؤس بن سکندر نے اپنے بیٹے کے لیے کامیاب زندگی گزارنے کے لائحہ عمل پر لکھی۔

وجہ تالیف[ترمیم]

کتاب کا نام مصنف نے اپنے دادا کے نام پر "قابوس"رکھا۔ وہ اپنے بیٹے کو زندگی گزارنے کا لائحہ عمل بتانا چاہتا ہے۔ قابوس نامہ میں بادشاہ کیکاؤس نے بیٹے کر مخاطب کر کے لکھا کہ:

اس سے پہلے کہ نامہ قضا مجھ تک پہنچے میں چاہتا ہوں کہ دنیا کی تلخیوں اور نجی معاملات میں کامیابی حاصل کرنے پر نسخہ لکھ کر چھوڑ جاؤں اور تجھے اس سے بہرہ مند کروں۔

موضوعات[ترمیم]

قابوس نامہ ایک باپ (کیکاؤس) کی طرف سے اپنے بیٹے (گیلان) کے لیے عمدہ نصیحتوں پر مشتمل ہے۔ پند و نصائح کے اس مجموعہ کے 44 ابواب ہیں، ہر باب میں زندگی کا ایک الگ اور خاص پہلو زیربحث لایا گیا ہے اور موضوع کی مناسبت سے نہایت دلچسپ، موثر اور بیشتر ذاتی تجربات پر مبنی 50 حکایات بھی شامل ہیں۔
نوجوانوں کو مخاطب کر کے جن موضوعات پر بحث کی گئی ہے، ان میں سے کچھ خاص عنوانات یہ ہیں، دوستی، محبت، تعیش، شراب نوشی، دولت، شادی بیاہ، اولاد کی تربیت، سپہ سالاری، عہدہ وزارت، عہدہ کتابت، عہدہ ندیمی، آداب جہاں بانی اور بادشاہی، شعر و شاعری، بڑھاپے اور جوانی کا مقابلہ، کھانا پینا، ذاتی دیکھ بھال، شطرنج، چوگان، غلام خریدنا، گھوڑے خریدنا، طالب علمی، تجارت، گلوکاری اور وزارت وغیرہ۔[4]

موجود نسخے[ترمیم]

تراجم[ترمیم]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]