قرینہ (مافوق فطرت)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
اگر یہ آپ کا مطلوبہ صفحہ نہیں تو دیکھیے، قرینہ۔

قرینہ ایک ایسی مافوق فطرت مادہ عفریت کو کہا جاتا ہے کہ جو نیند کے دوران کسی انسان سے منسلک ہو جاتی ہے یا اس سے ہم بستری کرتی ہے، بنیادی طور پر اس مافوق فطرت کا تصور، قبل از اسلام سے ہے اور اسلام میں اس قسم کا کوئی وجود ثابت نہیں ہوتا۔ اس کی ایک نفسیاتی وجہ خواب بیان کی جاتی ہے جو سونے کے دوران نظر آتے ہیں۔ یہ لفظ اپنی اساس میں عربی کے لفظ قرن سے بنا ہے جس کے متعدد معنوں کے ساتھ ساتھ ایک معنی ربط یا جوڑ اور جوڑنے کے بھی ہوتے ہیں؛ اسی قرن سے اردو میں قرین جو پیوست، قریب اور ملحق کے معنی میں ہے کا لفظ بھی بنایا جاتا ہے۔ اردو میں اس سے قریب (یعنی عورت کے بھوت کا) ایک تصور چڑیل کی صورت میں پایا جاتا ہے جبکہ انگریزی میں اسے succubas سے قریب سمجھا جاسکتا ہے۔

حوالہ جات[ترمیم]