قیدیوں پر تجربات

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

تاریخ میں ایسی مثالیں کثرت سے ملتی ہیں جس میں قیدیوں پر ایسے طبّی تجربات کیے گئے جو عام شہریوں پر کرنا ممکن نہ تھا۔ ان تجربات کی خاص بات یہ رہی کہ یہ طب اور سائنس کے پیشہ ور ماہرین نے انجام دیے یا ان کی نگرانی میں یا مدد سے کیے گئے۔

مثالیں[ترمیم]

  • 2001ء کے بعد امریکی طبیبوں نے آبتختہ (waterboarding) کی اذیت کو کارگر بنانے کی تحقیق میں شرکت اور مدد کی۔ یہ تجربات دہشت کے الزام میں پکڑے گئے مسلمانوں پر کیے گئے۔[1]
  1. اے پی پی، 6 جون 2010ء، "Report says doctors helped refine harsh methods"