لوئیس پاسچر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(لوئی پاسچر سے رجوع مکرر)
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
لوئیس پاسچر
Louis Pasteur, foto av Félix Nadar Crisco edit.jpg
نادر کی کلک کردہ تصویر
پیدائش 27 دسمبر 1822 (1822-12-27)ڈول، فرانس
وفات ستمبر 28، 1895 (عمر 72 سال)
مارنس لا کوکیٹ، فرانس
قومیت فرانسیسی
میدان
ادارے
مادر علمی اکولے نورمالے سپیریئر
یونیورسٹی آف پیرس
قابل ذکر طلباء چارلس فریڈل[1]
اہم انعامات
دستخط

لوئیس پاسچر (/ˈli pæˈstɜr/، فرانسیسی: [lwi pastœʁ]؛ 27 دسمبر، 1822ء – 28 ستمبر، 1895ء) ایک حیاتیات ، کیمیا ، اور چرثومیات کا فرانسیسی ماہر تھا، جس نے کتے کے کاٹے کا اعلاج دریافت کیا اور یہ ثابت کیا کہ بہت سی بیماریاں ازخود نہیں جراثیم کی وجہ سے پیدا ہوتی ہیں۔ خمیر کے بارے میں اس کی تحقیقات سے جرثومیات کا نیا علم وجود میں آیا، اور متعدی امراض کے اسباب اور ان کی روک تھام کے بارے میں تحقیقات سے عضویات میں ایک نئے شعبے کا اضافہ ہوا۔ پاسچر نے چڑیوں ، جانوروں اور حیوانوں میں متعدی امراض پھیلانے والے جراثیم کو بھی مطالعہ کیا۔ اُسے معلوم ہوا کہ مویشیوں کا بخار اور مرغیوں کی بیماری ’’چکن کالرا‘‘ مختلف جراثیم کی وجہ سے پیدا ہوتی ہیں۔ اس کے بعد اس نے جنون سگ گزیدگی ’’ ریبیز ‘‘ کے مرض کا مطالعہ کیا اور اس بیماری کا ایک ٹیکا ایجاد کیا۔ دودھ کو حرارت پہنچا کر بیکٹریا سے محفوظ کرنے کا عمل اسی کی ایجاد ہے۔ اور اسی کے نام سے موسوم ہے۔ پاسچر کی تحقیقات اور خدمات کے اعتراف میں پیرس میں پاسچر انسٹی ٹیوٹ قائم کیا گیا۔ جس میں ہیضہ ، میعادی بخار اور دوسری بیماریوں کے ٹیکے تیار کیے جاتے ہیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Asimov, en:Asimov's Biographical Encyclopedia of Science and Technology 2nd Revised edition
  2. "II. Abdülhamid'in Fransız kimyagere yaptığı yardım ortaya çıktı". CNN Türk. اخذ کردہ بتاریخ 3 جولائی 2017.