لواری سرنگ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
چترال

سرنگِ لواری یعنی "لواری سرنگ" (انگریزی:Lowari Tunnel، کھوار:(راولیی ٹنل) پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع چترال اور ضلع دیر کے درمیان درہ لواری میں پہاڑوں کے نیچے سے گذرتی ہے۔ مٹر گاڑیوں کے زیر استعمال یہ سرنگ چترال اور دیر کو ملاتی ہے۔ یہ دو سرنگیں ہیں۔ ان میں سے ایک کی لمبائی 8.5 کلومیٹر اور دوسری کی لمبائی 3 کلومیٹر ہے۔یہ پاکستان کی طویل ترین سرنگ ہے۔ یہ منصوبہ 1970 کی دہائی سے زیر غور رہا تھا، بھٹو صاحب نے اس کا اعلان کیا مگر تین دھائیوں تک اس پر کام کا آغاز نہ ہو سکا یہاں تک کہ مشرف دور میں اس پراجیکٹ کا آغاز کیا گیا، پھر پی پی پی دور میں اس پر کام بند ہو گیا، بالاخر مسلم لیگ ن کی2013 تا 2018 کی حکومت نے اس پراجیکٹ کو مکمل کیا۔اس پراجیکٹ کی تکمیل کے بعد دیر سے چترال کا زمینی سفر لگ بھگ ڈھائی سے تین گھنٹے کم ہو گیا ہے۔ اس سے پہلے سردیوں میں برف باری کے بعد لواری پاس ٹریفک کے لیے بند ہوجایا کرتا تھا جس کے سبب چترال کا ملک کے دیگر علاقوں کے ساتھ زمینی راستہ منقطع ہوجایا کرتا تھا اور کھانے پینے کی اشیاء کی رسد براستہ افغانستان ہوا کرتی تھی۔سرنگ بننے سے قبل لواری پاس سے گزرتے ہوئے بالخصوص سردیوں کے موسم میں ہر سال آدھ درجن انسان لقمہ اجل بن جایا کرتے تھے۔