ماتر بھومی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ماتر بھومی
Matrubhoomi poster.jpg
تھیٹر کا منظر عام پر آنے والا پوسٹر
ہدایت کار منیش جاہ
پروڈیوسر پیٹرک سوبیلمین، پنکج کھاربندا
تحریر میشن جاہ
ستارے ٹیولپ جوشی، سدھیر پانڈے، پیوش مشرا، شوشانت سنگھ، آدتیہ شری واستو
موسیقی سلیم مرچنٹ، سلیمان مرچنٹ
سنیماگرافی وینو گوپال
ایڈیٹر ایشمنٹ کندر، سریشن کندر
تاریخ اشاعت
  • 17 دسمبر 2003ء (2003ء-12-17)
دورانیہ
93 منٹ
ملک بھارت
زبان ہندی زبان

ماتر بھومی 2013ء میں منظر عام پر آنے والی بھارتی ہندی فلم ہے۔ اس فلم کو منیش جھا نے تحریر کیا ہے اور فلم کی ہدایت کاری بھی منیش جھا کی ہی ہے۔ اس فلم کا موضوع جنس کی بنیاد پر لڑکیوں کا پیدائش کے وقت قتل کرنا ہے۔ فلم کے بہت سے واقعات حقیقی زندگی سے بھی ملتے جلتے ہیں۔ اس فلم کو 2003ء میں بڑے 6 بڑے فلمی میلوں میں پیش کیا گیا۔ اس فلم میں ڈائریکٹر نے ایک ایسی دنیا دکھائی جو عورت کے بغیر ہوتی ہے۔ فلم کا آغاز بھارتی ریاست بہار میں ایک بچی کی پیدائش سے ہوتا ہے۔ جیسے ہی مرد کو بتایا جاتا ہے لڑکی پیدا ہوئی وہ بچی کو ایک عوامی تقریب میں دودھ میں ڈبو کر مار ڈالتا ہے۔ غربت کے شکار سماج میں یہ چلن چونکہ عام ہوتا ہے۔ اس کے نتیجے میں سماج میں مرد باقی رہ جاتے ہیں۔ عورت نایاب ہو جاتی ہے۔ عورت کی نایابی کا زمانہ 2050 کا زمانہ دکھایا جاتا ہے۔ اس کے بعد کے حالات کی عکاسی ماتربھومی فلم میں بہت عمدگی سے کی گئی ہے۔ فلم میں مرد اپنے فطری تقاضے اور جنسی ہیجان کی وجہ سے مجبور ہو کر جانوروں تک کو نہیں چھوڑتے۔ عورت کے حصول کے لیے رقم ہاتھوں میں لیے در بدر مارے مارے پھرتے ہیں۔ پھر ایک منظر وہ بھی آتا ہے جس میں ایک لڑکی کی شادی لڑکی کا باپ رقم لے کر پانچ بھائیوں سے کر دیتا ہے۔ سماج کا بھیانک روپ یہیں پر ختم نہیں ہوتا۔ بلکہ ان پانچ لڑکوں کا باپ بھی اس لڑکی کو اپنے تصرف میں لاتاہے۔ مرد جن کا سماج عورت کے وجود سے خالی ہوتا ہے۔ انسان سے جانور بن جاتے ہیں۔ اور عورت کو گائے بھینس جتنی اہمیت بھی نہیں دے سکتے۔ مرد کی تمام سفاکیت کی جزیات تک کو فلم کے ہر سین میں بے نقاب کیا گیا ہے۔[1] اس فلم نے کئی ایوارڈ بھی حاصل کیے ہیں۔

کردار[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

بیرونی روابط[ترمیم]