مالم جبہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مالم جبہ کے ریسورٹ کا ایک منظر
Malam Jabba Village, Swat Valley, Pakistan.jpg
مالم جبہ گاوں برف میں ڈھکا ہوا

مالم جبہ ایک سیاحتی اور تفریحی مقام ہے جو ضلع سوات، خیبر پختونخوا، پاکستان میں واقع ہے۔ یہ اسلام آباد سے 314 کلو میٹر اور سیدو شریف سے 51 کلو میٹر دور ہے۔ مالم جبہ قراقرم پہاڑی سلسلے میں ایک پہاڑی مقام ہے۔

مالم جبہ پاکستان میں برف کے کھیل اس کی کا واحد مرکز ہے۔ یہاں چیر لفٹ اور محکمہ سیاحت کی قیام گاہ بھی واقع ہے۔ اس علاقے میں بدھ مت کے دو سٹوپا اور چھ عبادت خانے (مونیسٹری) بھی موجود ہیں جو اس ریسورٹ کے اردگرد وسیع علاقے میں جگہ جگہ موجود ہیں۔ ان نشانات کی اتنی اونچائی پر موجودگی اس بات کا ثبوت ہے کہ یہ علاقے تقریباً 2000 سال سے آباد ہے۔ اس سیاحتی جگہ کے اردگرد دہ پیدل چلنے کے راستے بھی موجود ہیں، ایک وادی غربند اور شانگلہ ٹاپ سے گزرتا ہے اور ریسورٹ سے تقریباً 18 کلو میٹر کے فاصلے سے شروع ہوتا ہے، جبکہ دوسرا وادی سبونیو سے گزرتا ہے اور ریسورٹ سے 17 کلومیٹر کے فاصلے سے شروع ہوتا ہے۔[1]

مالم جبہ سکی ریسورٹ[ترمیم]

مالم جبہ کے پہاڑوں کا ایک منظر
وادی سوات میں مالم جبہ کی طرف جانے والی سڑک

مالم جبہ سکی ریسورٹ پاکستان ٹورزم ڈیولپمنٹ کارپوریشن کی ملکیت ہے اور اس کے سکی ڈھلوان کی لمبائی 800 میٹر ہے جس میں سب سے اونچا مقام سطح سمندر سے 9200 فٹ کی بلندی پر واقع ہے۔ مالم جبہ سکی ریسورٹ حکومت پاکستان اور آسٹریلیا کی حکومت کی مشترکہ کوششوں کا نتیجہ ہے۔ یہ ریسورٹ جدید سہولتوں سے آراستہ ہے جیسے، سکیٹنگ کی جگہ، چیئر لفٹ، ٹیلیفون اور برف ہٹانے کی مشینری وغیرہ۔

مالم جبہ کی طرف جاتے ہوئے

اس ریسورٹ کو جدید تر بنانے کا ارادہ کر لیا گیا ہے اور اس کے لیے اسلام آباد میں کاغذات 6 ستمبر 2014 میں تیار کر لیے گئے ہیں۔ نئے ریسورٹ میں 4 ستاری ہوٹل، چیئر لفٹ، کیبل گاڑی، سکیئنگ کی جگہ، برف پر تختے سے چلنے کی سہولت اور سکی ڈھلوان موجود ہوں گے اور یہ سب ملکی و غیر ملکی سیاحوں کے لیے دستیاب ہو گا۔ یہ ریسورٹ پاکستان میں اپنی طرز کا پہلا ریسورٹ ہو گا جس میں سردی کے کھیلوں اور خطرے کی سیاحی کی سہولت ہو گی۔[1]

مالم جبہ کی تصویری نمائش[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب en.wikipedia.org/wiki/Malam_Jabba