مانکیالہ اسٹوپا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مانکیالہ اسٹوپا
Mankiala Stupa.JPG
خیال کیا جاتا ہے کہ یہ وہ مقام ہے جہاں گوتم بدھ نے شیر کے بچوں کو خوراک فراہم کرنے کے لیے اپنے آپ کو قربان کر دیا
مانکیالہ اسٹوپا is located in پاکستان
مانکیالہ اسٹوپا
Shown within پاکستان
بنیادی معلومات
مقام مانکیالہ
پنجاب
پاکستان
متناسقات 33°16′N 73°08′E / 33.26°N 73.14°E / 33.26; 73.14متناسقات: 33°16′N 73°08′E / 33.26°N 73.14°E / 33.26; 73.14
مذہبی انتساب بدھ مت
ریاست پنجاب، پاکستان
سنہ تقدیس دوسری صدی

مانکیالہ اسٹوپہ (انگریزی: Mankiala Stupa) خطہ پوٹھوار میں بدھ مت دور کی ایک یادگار ہے۔
مانکیالہ اسٹوپا[1] راولپنڈی سے جنوب کی طرف 27 کلو میٹر کے فاصلہ مانکیالہ گاؤں میں واقع ہے اسٹوپہ ہونے کی بنا پر گاؤں کا نام توپ مانکیالہ کے نام سے معروف ہے یہ اسٹوپہ اسلام آباد سے لاہور سفر کرتے ہوئے روات سے 6کلومیٹر کے فاصلہ پرجی ٹی روڈ سے مشرق کی جانب نظر آتا ہے۔ ایک کہانی کے مطابق مانکیالہ نام راجا مان یا مانک کے نام سے منسوب ہے جو اس گاؤں میں رہتا تھا اور اس نے اس کو بنوایا تھا۔ 1930ء میں اس سے سونے، چاندی اور تانبے کے زیورات بھی دریافت کیے گئے ہیں۔ اسٹوپہ کا منہ اوپر کی جانب کھلتا ہے جہاں سے یہ ایک کنواں نما نظر آتا ہے۔ اس کے اوپر سے گردو نواح کی آبادیاں خوبصورت منظر پیش کرتی ہیں۔ محکمہ آثار قدیمہ نے توپ مانکیالہ کے چاروں طرف حفاظتی دیوار بنا دی ہے۔[2] مقامی لوک کہانیوں کے مطابق راجا رسالو نے ایک آدم خور جن کو اس بہت بڑے پیالے میں الٹا قید کر رکھا ہے مگر حقیقت میں کنشک دور کی یہ بدھ عبادت گاہ اٹھارہ سو سال پرانی ہے۔ بدھستوا کے مخصوص کنول، بنیاد کی دیواروں پہ منقش ہیں۔ اوپر جانے کے لیے سیڑھیاں بنی ہیں جو آدھے راستے میں ختم ہو جاتی ہیں۔ اسٹوپا کے اوپر پہنچیں تو درمیان میں ایک بہت بڑا کنواں ہے جو درحقیقت نیچے اترنے کا زینہ ہے۔ یہ سیڑھیاں بتدریج تنگ ہوتی جاتی ہیں جس کے سبب نیچے گھپ اندھیرا دکھائی دیتا ہے۔ ایک اور کہانی اس کنوئیں کا رشتہ کسی پوشیدہ سرنگ کے ذریعہ سارنگ خان کے محل سے بھی جوڑتی ہے۔[3]

حوالہ جات[ترمیم]