محمد مجلوم خان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
محمد مجلوم خان
پیدائشمحمد مجلوم خان
6 دسمبر 1973ء (عمر 47 سال)
حبی گنج ضلع، سلہٹ ڈویژن، بنگلہ دیش
پیشہمصنف، ادبی نقاد، اسکالر
زبانانگریزی
قومیتبرطانوی
مادر علمییونیورسٹی آف ایسٹ اینگلیا
اصنافغیر افسانوی
موضوعاسلام، تقابل ادیان، عصری فکر، موجودہ امور، تاریخ
سال‌ہائے فعالیت1993 – تاحال
شریک حیاتفہمیدہ خان
اولاد2
رشتہ دارمحمد پٹھان یاور خان (والد)، مصطفی الامین خان (فرزند)

محمد مجلوم خان (پیدائش: 6 دسمبر 1973) ایک بنگلہ دیشی غیر افسانوی مصنف ہیں۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

مجلوم خان بنگلہ دیش کے سلہٹ ڈویژن کے حبی گنج ضلع میں پیدا ہوئے اور ان کی پرورش اور تعلیم انگلستان میں ہوئی۔ خان نے دار العلوم ( اسلامی مدرسہ) سے کلاسیکی عربی اور روایتی اسلامی علوم کی تعلیم حاصل کی۔ انھوں نے یونیورسٹی آف ایسٹ اینگلیا سے بزنس اینڈ سوشل پالیسی میں ڈگری حاصل کی۔[1]

حالات زندگی[ترمیم]

خان اسلامی فکر و تاریخ کے ایک استاد، ادیب، ادبی نقاد، ریسرچ اسکالر اور محقق ہیں۔ انھوں نے دنیا بھر میں 150 سے زائد مضامین شائع کیے ہیں جن میں 100 مضامین؛ اسلام، تقابل ادیان ، معاصر فکر اور موجودہ امور سے متعلق مضامین شامل ہیں۔ 19 سال کی عمر سے وہ مسلم نیوز میں حصہ لیتے رہے ہیں۔[2][3] وہ بی بی سی ریڈیو میں بھی باقاعدہ حصہ لینے والے ہیں۔

خان ایک یونیورسٹی اسلامی سوسائٹی کے سابق صدر اور برطانیہ اور ایئر (FOSIS) میں فیڈریشن آف اسٹوڈنٹ اسلامک سوسائٹی کے ایگزیکٹو ممبر ہیں۔ وہ برطانیہ اور آئرلینڈ کی رائل ایشیٹک سوسائٹی کے شریک اور بنگال مسلم ریسرچ انسٹی ٹیوٹ برطانیہ کے بانی ڈائریکٹر ہے۔[4] وہ ایپس وچ اور سفولک مسلم کونسل کے چیئرمین[5] اور بنگلہ دیشی سپورٹ سینٹر کے منیجر بھی ہیں ۔[6] وہ Her Majesty's Prison Service [1] کے امام ہیں۔

ستمبر 2011 میں خان بنگلہ دیشی سپورٹ سینٹر (بی ایس سی) کے زیر اہتمام 1 بڑے کثیر الثقافتی میلہ سے جڑے۔[7]

اعزازات[ترمیم]

خان اسلام کے بارے میں اپنے مضامین کے لیے 1 بین الاقوامی اور 2 قومی انعامات حاصل کر چکے ہیں۔

ذاتی زندگی[ترمیم]

خان کی شادی نینی فہمیدہ خان سے ہوئی ہے۔ وہ اپنے خاندان کے ساتھ اپسوئچ میں رہتے ہیں۔[3] 1988 میں ان کے والد ، محمد پٹھان یاور خان کا انتقال ہو گیا۔ اس کے دو بچے مہتدی خان (پیدائش 2001) اور مصطفیٰ الامین خان (پیدائش 2003) بھی ہیں۔

تصانیف[ترمیم]

سال عنوان ناشر آئی ایس بی این
2008 سو مسلمان: تاریخ کے سب سے زیادہ بااثر مسلمانوں کی زندگیاں ، افکار اور کارنامے (انگریزی)[8] کیوب پبلیشنگ لیمیٹیڈ 978-1847740069
2013 بنگال کا مسلم ثقافتی ورثہ: بنگلہ دیش اور مغربی بنگال کے عظیم مسلم اسکالرز ، مصنفین اور مصلحین کی زندگیاں ، خیالات اور کارنامے (انگریزی)[9] 978-1-84774-052-6
2017 مغرب کے عظیم مسلمان: مغربی اسلام کے بنانے والے (انگریزی)[10] 9781847741127آرکائیو شدہ [Date missing] بذریعہ kubepublishing.com [Error: unknown archive URL]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "The Muslim 100 : The Lives, Thoughts, and Achievements of the Most Influential Muslims in History (Muhammad Mojlum Khan)". Kube Publishing. 22 مارچ 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 1 اکتوبر 2013. 
  2. "Muhammad Mojlum Khan". Kube Publishing. 03 مارچ 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 01 اکتوبر 2013. 
  3. ^ ا ب "The Muslim Heritage of Bengal: The Lives, Thoughts & Achievements". Kitabun. اخذ شدہ بتاریخ 1 نومبر 2013. 
  4. "The Team". Bengal Muslim Research Institute. اخذ شدہ بتاریخ 01 نومبر 2013. 
  5. "The Team". Ipswich and Suffolk Muslim Council. 3 نومبر 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 1 نومبر 2013. 
  6. "The Team". Ipswich and Suffolk Bangladeshi Support Centre. 08 جولا‎ئی 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 01 نومبر 2013. 
  7. "1Big Multicultural Festival staged in Ipswich park". BBC News. Suffolk. 31 August 2011. اخذ شدہ بتاریخ 01 نومبر 2013. 
  8. Elshayyal، M. F (26 ستمبر 2008). "Book Review – One hundred influential Muslim personalities". The Muslim News. 1 اکتوبر 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 1 اکتوبر 2013. 
  9. Ali، Fuad. M (26 جولائی 2013). "Book Review: Rediscovering the Muslim heritage of Bengal". The Muslim News. 1 اکتوبر 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 1 اکتوبر 2013. 
  10. "Kube Publishing » Great Muslims of the West – Makers of Western Islam". Kube Publishing. 24 مئی 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 14 دسمبر 2017.