محمد ہاشم جاڑوی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
قبلہ علامہ محمد ہاشم جاڑوی اعلی اللہ مقامہ

تعارف[ترمیم]

علامہ محمد ہاشم جاڑوی اعلیٰ اللہ مقامہ یکتائے روزگار مدرس تھے کہ جن کی تدریس کے سبب کافی طلبۂ کرام نے کسب فیض کیا اور مہارت علمی کی انتہا کو پہنچے۔

ولادت[ترمیم]

آپ 1945 کو بستی جاڑا ضلع ڈیرہ اسماعیل خان میں پیدا ہوئے، آپ کے والد بزرگوار کا نام شیخ غلام قاسم تھا۔[1]

ابتدائی تعلیم[ترمیم]

ابتدائی تعلیم اپنے علاقہ میں ماسٹر یار محمد سے حاصل کی اور قرآن و دینیات کا درس مولانا غلام محمد سے لیا۔[1]

دینی تعلیم[ترمیم]

آپ مدرسہ علمیہ باب النجف جاڑا کے ابتدائی طلاب کرام میں سے ہیں جنہوں نے مدرسہ کی تعمیر میں حصہ لیا۔،[2] آپ نے یہاں درس نظامی علامہ حسین بخش جاڑا اعلی اللہ مقامہ اور مولانا غلام حسن فاضل عراق سے حاصل کیا[1]

فاضل عربی[ترمیم]

1965 میں آپ نے لاہور بورڈ سے فاضل عربی کا امتحان پاس کیا۔[1]

خطیب شیعہ مساجد[ترمیم]

آپ نے کافی شہروں کی شیعہ جامع مساجد میں امامت کرائی اور مومنین کرام تک فرائضِ اسلام و دینی احکام پہنچائے۔

جامع مسجد نارنگ منڈی[ترمیم]

فاضل عربی کا امتحان پاس کرنے کے بعد آپ جامع مسجد نارنگ منڈی ضلع شیخوپورہ تشریف لے گئے اور وہاں آپ کا قیام پونے دو سال رہا۔[1]

جامع مسجد ڈھڈیال[ترمیم]

جولائی 1976 سے 1977 تک آپ جامع مسجد شیعہ ڈھڈیال ضلع چکوال میں پیش نمازی کے فرائضں انجام دیتے رہے۔[1]

درس و تدریس[ترمیم]

دار العلوم جعفریہ خوشاب[ترمیم]

آپ جنوری 1977 سے مئی 1978 تک دار العلوم جعفریہ خوشاب میں مدرس رہے۔[1]

کلیۃ النجف نارنگ سیداں[ترمیم]

مئی 1978 کو آپ کلیۃ النجف نارنگ سیداں ضلع چکوال تشریف لے گئے اور بطور مدرس اعلیٰ فرائض انجام دیتے رہے۔[1]

قم المقدسہ روانگی[ترمیم]

اس کے بعد مزید کسب فیض کے لیے آپ حوزہ علمیہ قم المقدسہ تشریف لے گئے[1] اور کافی وقت وہاں تحصل علوم آل محمدؑ کرتے رہے۔ آپ نے وہاں جن اساتذہ سے درس خارج پڑھا ان میں آیت اللہ العظمی سید علوی گرگانی کا نام سر فہرست ہے۔

مدرسہ خاتم الانبیاء[ترمیم]

حوزہ علمیہ قم سے واپس آئے تو چکوال شہر میں ایک دینی مدرسہ بنایا جس کا نام علم کے شہر کی مناسبت سے "مدرسہ خاتم الانبیاء" تجویز کیا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ ت ٹ ث ج چ ح تذکرہ علما امامیہ پاکستان ص16
  2. تفسیر انوار النجف فی اسرار المصحف ج1 ص4 اشاعت 2004 عیسوی