محمود دیوبندی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
ملا

محمود دیوبندی
Mahmud Deobandi calligraphy.png
ذاتی
وفات1886
مدفندیوبند
مذہباسلام
فرقہسنی اسلام
فقہی مسلکحنفی
وجہ شہرتدارالعلوم دیوبند کے پہلے استاد
مرتبہ

محمود دیوبندی (معروف بہ ملا محمود) (متوفی: 1886ء) ایک بھارتی مسلمان عالم تھے جو دار العلوم دیوبند کے پہلے استاذ مقرر ہوئے۔[1] ان کےسب سے ممتاز شاگرد محمود حسن دیوبندی ہیں۔[2]

سوانح[ترمیم]

ملا محمود دار العلوم دیوبند کے بانی، محمد قاسم نانوتوی کے ساتھی تھے۔ انھوں نے شاہ عبد الغنی سے حدیث پڑھی۔[3] 1866 میں جب دار العلوم دیوبند قائم ہوا تو وہ وہاں بطور استاد مقرر ہوئے۔[4] انھوں نے دار العلوم دیوبند میں بیس سال تک درس و تدریس کے فرائض انجام دیے؛ یہاں تک کہ سن 1886ء میں ان کا انتقال ہو گیا۔[5] اور دیوبند ہی میں مدفون ہیں۔[3]

ان کے شاگردوں میں محمود حسن دیوبندی، اشرف علی تھانوی[6][5] اور عزیز الرحمن عثمانی شامل ہیں۔[7]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ڈیوڈ ایمینول سنگھ، The Independent Madrasas of India: Dar al-'Ulum, Deoband and Nadvat al-'Ulama, Lucknow (PDF)، آکسفرڈ سینٹر فار مشن اسٹڈیز، مورخہ 2020-11-24 کو اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ، اخذ شدہ بتاریخ 01 اگست 2020 
  2. Metcalf، Barbara (1978). "The Madrasa at Deoband: A Model for Religious Education in Modern India". Modern Asian Studies. 12 (1): 111–134. JSTOR 311825. doi:10.1017/S0026749X00008179. 
  3. ^ ا ب اسیر ادروی. تذکرہ مشاہیرِ ہند: کاروانِ رفتہ (بزبان Urdu) (ایڈیشن دوسرا ، اپریل 2016). دیوبند: دار المؤلفین. صفحہ 229. 
  4. رضوی، سید محبوب. تاریخ دار العلوم دیوبند. 1 (ایڈیشن 1992). دیوبند: دار العلوم دیوبند. صفحہ 155. 
  5. ^ ا ب اسیر ادروی. حضرت شیخ الہند: حیات اور کارنامے [Shaykhul Hind: Life and Works] (ایڈیشن اپریل 2012ء). دار العلوم دیوبند: شیخ الہند اکیڈمی. صفحہ 39. 
  6. پرویز، شاہد (1999). "محمود حسن (18S1-1920)". The Deoband movement till 1920 the ideological and institutional dimensions (PhD). شعبۂ تاریخ ، علی گڑھ مسلم یونیورسٹی. صفحہ 111. اخذ شدہ بتاریخ 01 اگست 2020. 
  7. عاشق الہیٰ بلند شہری. "عظیم عالم ، ملا محمود دیوبندی". الاناقید الغالية من الاسانید العالیة (بزبان عربی). کراچی: مکتبہ شیخ. صفحہ 41.