مخدوم سلطان ایوب قتال

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مخدوم سیدسلطان ایوب قتال
Makhdoomsultanayyub.jpg
مزارِ مخدوم سلطان ایوب قتال
لقب •سلطان العارفین
•قطب الاقطاب
شیخ
•قتال
ذاتی
پیدائش نامعلوم
وفات
مدفن قتال پور،تحصیل دنیا پور، پاکستان Flag of پاکستان
مذہب اسلام
سلسلہ قادریہ
مرتبہ
دور بارہویں/ تیرہویں صدی
پیشرو مخدوم عبدالرشید حقانی

سلطان العارفین حضرت مخدوم سلطان ایوب قتال برصغیر پاک و ہند کے معروف روحانی بزرگ ہیں۔ آپ کا مزار تحصیل دنیا پور، پاکستان سے دس کلو میٹر کی مسافت پر "قتال پور" نامی گاؤں میں موجود ہے۔ آپ علوم ظاہری و باطنی سے مالا مال تھے۔ آپ برصغیر پاک و ہند میں سلسلہ قادریہ کے بانی اور عظیم روحانی بزرگ حضرت مخدوم عبدالرشید حقانی کے پوتے ہیں۔ آپ کا زمانہ اولیائے کرام کا زمانہ مشہور ہے۔ حضرتجلال الدین جہانیاں جہاں گشت، حضرتشاہ رکن عالم سہروردی ان کے ہم عصر اولیاء تھے۔ آپ نسباً سادات ہاشمی ولحسنی ہیں۔

ولادت[ترمیم]

آپ کی ولادت ایک کامل بزرگ حضرت مخدوم محمد ابو بکر کے ہاں ہوئی، آپ کے والدین نے آپ کا نام "محمد ایوب" رکھا۔

ابتدائی تعلیم و تربیت[ترمیم]

آپ نے نے خالص علمی و روحانی اور صوفیانہ ماحول میں آنکھ کھولی اور بہت کم عمری میں مروجہ علوم کے مراحل طے کیے۔7 سال کی عمر میں والد کا سایہ سر سے اٹھ گیا ، آپ کی پرورش آپ کے دادا مخدوم عبدالرشید حقانی اور شفیق چچاؤں نے کی۔ آپ نے ابتدائی تعلیم اپنے دادا مخدوم عبدالرشید حقانی کے قائم کردہ مدرسہ میں اپنے دادا اور والد کے زیر سایہمخدوم رشید میں ہی حاصل کی۔ بعد ازاں آپ نے ملتان کا رخ کیا جو اس وقت عالم اسلام کا ایک عظیم گڑھ بن چکا تھا۔

شجرہ طریقت[ترمیم]

بیعت و خلافت[ترمیم]

آپ نے تمام ظاہری و باطنی علوم اپنے عظیم دادا حضرت مخدوم عبدالرشید حقانی سے ہی حاصل کیے اور انہی کے دست مبارک پر بیعت کی۔ اس کے علاوہ آپ نے حضرت بہاؤالدین زکریا ملتانی سے بھی خرقہ حاصل کیا۔

ازواج و اولاد[ترمیم]

آپ نے حضرت سید ایوب ماچینی رحمتہ الله علیہ کی دختر نیک اختر بی بی سیدہ فاطمہؒ سے عقد کیا ۔ حضرت بی بی مستورہ کے بطن مبارک سے الله نے آپ کو چار فرزند عطا کیے۔

  • مخدوم محمد یوسف شاہ ؒ
  • مخدوم محمد عالم شاہ ؒ
  • مخدوم رکن الدین شاہ ؒ
  • مخدوم ابو بکر شاہ ؒ
  • مخدوم باید ولیؒ ( جو کم سنی میں ہی وصال فرما گئے)۔

برادران[ترمیم]

  • مخدوم حافظ لعل شاہؒ
  • مخدوم محمد یعقوب شاہؒ
  • مخدوم ہود شاہؒ

وصال[ترمیم]

آپ اپنے والد اور شفیق دادا کے وصال کے بعد اپنے چچا حضرت مخدوم صدر الدین قتال جو خود بھی ایک کامل معروف اولیاء الله میں سے تھے کے پاس آکر رہنے لگے۔ شفیق چچا کے ساتھ کھیتی باڑی کرتے اور جانور چراتے اور خلق کو دین کی تبلیغ کرتے۔ روایت کے مطابق آپ نے اپنے چچا سے اپنے اور ان کی وفات کے متعلق کہا تھا کہ آپ اور میں ایک ساتھ ہی اس دنیا سے رخصت ہوں گے۔ تو جس رات آپ کے چچا کا وصال ہوا، اس کے اگلے دن آپ بھی اس دنیا سے پردہ فرما گئے۔

مزار[ترمیم]

آپ کا مزار مبارک تحصیل دنیا پور، لودھراں سے 10 کلومیٹر کی مسافت پر "قتال پور" نامی گاؤں میں موجود ہے۔ آپ اور آپ کے چچا کے مزار کو ایک سیدھی سڑک ملاتی ہے اور آپ کے عرس کے موقع پر زائرین پہلے حضرت مخدوم صدر الدین قتال المعروف نواب سائیں کی درگاہ پر حاضری دیتے ہیں اور پھر آپ کے مزار کا رخ کرتے ہیں۔ پورے پاکستان اور خاص طور پر سندھ سے آپ کے مریدین ہزاروں کی تعداد میں حاضری دیتے ہیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  • حضرت مخدوم عبد الرشید حقانی رحمتہ اللہ علیہ، جلد اول، حقانی اکیڈمی، مخدوم رشید ملتان۔
  • پروگرام میری دنیا، رپورٹر عمر جاوید، دنیا نیوز رپورٹ ، میلہ حضرت مخدوم سلطان ایوب قتال رحمتہ الله علیہ۔
  • مقالہ نمائندے کی ڈائری، عقیل احمد ہاشمی، روزنامہ دنیا (نور گڑھ)۔
  • سوانح سلطان العارفین ، غوث زماں حضرت مخدوم عبدالرشید حقانی رحمتہ الله علیہ ۔