مرزا ترسون زادہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مرزا ترسون زادہ
(تاجک میں: Мирзо Турсунзода ویکی ڈیٹا پر مقامی زبان میں نام (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
TajikistanPNew-1Somonis-1999 f-donatedtk.jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش 19 اپریل 1911  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 24 ستمبر 1977 (66 سال)  ویکی ڈیٹا پر تاریخ وفات (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دوشنبہ  ویکی ڈیٹا پر مقام وفات (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of the Soviet Union (1922–1923).svg سوویت اتحاد  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جماعت اشتمالی جماعت سوویت اتحاد  ویکی ڈیٹا پر سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ شاعر، سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان تاجک زبان  ویکی ڈیٹا پر زبانیں (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
SU Order of the October Revolution ribbon.svg اعزاز اکتوبر انقلاب
SU Order of Lenin ribbon.svg آرڈر آف لینن  ویکی ڈیٹا پر وصول کردہ اعزازات (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
P literature.svg باب ادب

مرزا ترسون زادہ (تاجک زبان: Мирзо Турсунзода) (پیدائش: 2 مئی 1911ء - وفات: 24 ستمبر 1977ء) تاجکستان کے نامور شاعر، ڈراما نویس، سیاستدان اور تاجکستان کے قومی ہیرو ہیں۔

حالات زندگی[ترمیم]

مرزا ترسون زادہ تاجکستان کے ایک گاؤں قراتاغ میں 2 مئی 1911ء کو پیدا ہوئے۔ ابتدائی تعلیم پڑوس کی مسجد کے مدرسہ سے حاصل کی۔ اس کے بعد قراتاغ میں سوویت غلبہ کے بعد پہلا اقامتی اسکول کھولا گیا تو ترسون زادہ اس اسکول کا پہلا طالب علم تھا۔ مرزا ترسون زادہ مشرق اور خاص کر ہندوستان پر لکھی ہوئی نظموں اور مشرقی سیاحتوں کی بدولت خاص شہرت رکھتے تھے۔ تاشقند کی یونیورسٹی میں تعلیم مکمل کرتے کرتے شاعری میں نام پیدا کر چکے تھے۔ انھوں نے غزلوں کے علاوہ ڈرامے، مختصر اور طویل نظمیں اور داستانیں بھی لکھیں۔۔[1]

ترسون زادہ کی تصویر تاجکستان کے کرنسی نوٹ "1 تاجک سومنی" پر

حالیہ برسوں میں ترسون زادہ تاجکستان کے ہیرو کے طور پر ابھرے ہیں۔ ترسون زادہ کی تصویر تاجکستان کے کرنسی نوٹ 1 "تاجک سومنی" پر موجود ہے۔ اس کے علاوہ "ترسون زادہ" کا علاقہ آپ کے نام سے موسوم ہے جو تاجکستان کے دارالحکومت دوشنبہ سے 60 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ہے اور "اوپیرا اینڈ بیلٹ سینٹر" دوشنبہ کو مرزا ترسون زادہ کے نام سے منسوب کیا گیا ہے۔

تخلیقات[ترمیم]

نظمیں[ترمیم]

  • تارا چوہدری
  • از گنگا تا کریملن
  • باغ معلق

اعزازات[ترمیم]

مجسمہ مرزا ترسون زادہ، انجمنِ مصنفین تاجکستان عمارت، دوشنبہ

اداروں سے وابستگی[ترمیم]

  • رکن سپریم سوویت برائے سوویت اتحاد
  • رکن کمیونسٹ پارٹی تاجکستان
  • رکن سوویت امن کمیٹی
  • چیئرمین سوویت کمیٹی برائے یکجہتی ایشیا وافریقہ
  • رکن ادارتی بورڈ برائے تاجک دائرۃ المعارف
  • رکن آل یونین کمیٹی برائے لینن انعام و سوویت ریاستی انعام

وفات[ترمیم]

مرزا ترسون زادہ 66 سال کی عمر میں 24 ستمبر 1977ء کو دوشنبہ، تاجکستان، سوویت یونین میں وفات پا گئے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ظ انصاری / تقی حیدر، موج ہوائے عصر، رادوگا اشاعت گھر ماسکو،سوویت یونین، 1985ء، ص 362