مرزا محمد حیدر دوغلات

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مرزا محمد حیدر دوغلات
Stamp of Kazakhstan 292.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش 8 اگست 1499  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاشقند  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات سنہ 1551 (51–52 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کشمیر  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ شاعر،  مؤرخ  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

مرزا محمد حیدر دوغلات بیگ (ولادت: 1499ء یا 1500ء – وفات: 551ء) ایک چاغتائی ٹورکو منگول فوجی جنرل، کشمیر کا حکمران اور ایک تاریخی مصنف تھے۔ وہ ترک بولنے والے دوغلات شہزادے تھے جس نے فارسی [1] اور چغتائی زبانوں میں لکھا تھا۔ شہزادہ مرزا محمد حیدر، شہزادہ ظہیر (جو بعد میں شہنشاہ بابر کے نام سے مشہور ہوا) کے پہلے کزن تھا، ان دونوں کی مائیں بہنیں تھیں۔

کشمیر میں 1533ء حیدر دوغلات نے سید خان کے نام پر چاندی کے سسنو جاری کئے تھے۔ اس پر السلطان الاعظم میر سعید غان لکھا ہے ۔
مرزا محمد حیدر دوغلات نے مغل شہنشاہ ہمایوں کے نام کشمیر میں 1546ء-1550ء کے دوران چاندی کے سسنو جاری ہوئے۔ جس پر السلطان الاعظم محمد ہمایوں غازی لکھایا تھا۔

زندگی[ترمیم]

مرزا محمد حیدر دوغلات نے پہلے کاشغر کے سلطان سعيد خان کی طرف سے 1533ء میں کشمیر میں انتخابی مہم چلائی تھی۔ اس نے بابر کے دوسرے بیٹے کامران کو نکال دیا۔[2] تاہم، وہ مقامی سلطان کے ساتھ معاہدہ کرنے کے بعد زیادہ دیر تک کشمیر میں نہیں رہا۔ مرزا محمد حیدر دوغلات کی فوج کو شکست کا سامنا کرنا پڑا اور پھر کشمیریوں سے معاہدہ کیا۔ اس کے مختصر قیام کا اس حقیقت سے کچھ تعلق رہا ہو گا کہ سلطان سعيد خان اسی سال فوت ہوگئے تھے۔

مرزا محمد حیدر دوغلات 1540ء میں مغل شہنشاہ نصیر الدین محمد ہمایوں، [3] بابر کے پہلے بیٹے، کے لئے لڑنے کے لئے واپس آیا۔ یہ 1540ء میں کنوج کی لڑائی میں ہمایوں کی شکست کے فورا بعد ہوا، جہاں دغلاٹ بھی ہارنے کی طرف تھا۔  مرزا محمد حیدر دوغلات نے لداخ کے راستے تبت پر بھی حملہ کیا تھا لیکن وہ ناکام رہا تھا۔[4] کشمیر پہنچ کر حیدر نے سلطان کو سربراہ نازک کے طور پر نصب کیا۔ 1546ء میں، ہمایوں نے کابل پر دوبارہ قبضے ہونے کے بعد، حیدر نے نازوک شاہ کو ہٹا دیا۔[5] وہ 1550ء میں کشمیریوں سے جنگ میں مارے جانے کے بعد فوت ہوا۔ وہ سری نگر کے گورستان شاہی میں دفن کیے گئے۔

تحریر[ترمیم]

مرزا محمد حیدر دوغلات کا تاریخی کام تاریخ رشیدی ہے یہ ایک ذاتی یادداشت ہے جو وسطی ایشیائی تاریخ کے ساتھ مل کر فارسی میں لکھا گیا ہے۔

کنبہ[ترمیم]

مرزا محمد حیدر دوغلات کاشغر کے موروثی حکمرانوں دوغلات امیر کے خاندان سے تعلق رکھتے تھے۔ مرزا محمد حیدر دوغلات کے والد محمد حسین مرزا کرکان تھے (ان کی شادی خوب نگار خانم، يونس خان کی بیٹی سے ہوئی تھی)، بیٹا محمد حیدر مرزا کورکن (اس کی شادی دولت نگار خانم، عیسن بوقہ خان کی بیٹی سے ہوئی تھی)، امیر سید علی کورکن کے بیٹے (اس کی شادی ویس خان کی بہن ازون سلطان خانم سے ہوئی تھی)۔

مرزا محمد حیدر دوغلات کی والدہ خوب نگار خانم، ایان دولت بیگم سے يونس خان کی تیسری بیٹی اور بابر کی والدہ کٹلک نگار خانم کی چھوٹی بہن تھیں۔ مرزا محمد حیدر نے کشمیر پر 1540ء سے 1551ء حکومت کی۔[6]

محمد حیدر مرزا (اول) دوغلات مرزا محمد حیدر دوغلات کے دادا تھے۔

فلمیں[ترمیم]

2007ء میں، قازق فلم اسٹوڈیو نے محمد حیدر دوغلات («Мұхаммед Хайдар Дулати») دستاویزی فلم جاری کی، جس کی ہدایت کاری کالیلا عمرو نے کی تھی ۔

حواشی[ترمیم]

  1. René Grousset, The Empire of the Steppes: A History of Central Asia (1970 translation), p. 497.
  2. Sanderson Beck (2006)، "Mughal Empire 1526–1707"، India & Southeast Asia to 1800، World Peace Communications، ISBN 978-0-9762210-9-8 
  3. Shahzad Bashir, Messianic Hopes and Mystical Visions: The Nurbakhshiya Between Medieval And Modern Islam (2003), p. 236.
  4. Bell, Charles (1992). Tibet Past and Present. omer Banarsidass Publ. صفحہ 33. ISBN 81-208-1048-1. 
  5. Stan Goron and J.P. Goenka: The Coins of the Indian Sultanates, New Delhi: Munshiram Manoharlal, 2001, pp. 463-464.
  6. List of Rulers: South Asia | Thematic Essay | Timeline of Art History | The Metropolitan Museum of Art

حوالہ جات[ترمیم]

  • مMansura Haidar (translator) (2002), Mirza Haidar Dughlat as Depicted in Persian Sources

بیرونی روابط[ترمیم]