مسرت احمد ذیب

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
مسرت احمد ذیب
قومی اسمبلی پاکستان کی رکن
مدت منصب
1 جون 2013ء – 31 مئی 2018ء
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1950 (عمر 70–71 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

مسرت احمد ذیب (انگریزی: Mussarat Ahmed Zeb) (ولادت: 1950ء) ایک پاکستانی سیاست دان ہیں جو جون 2013ء سے مئی 2018ء تک پاکستان کی قومی اسمبلی کی رکن تھیں۔ وہ والی سوات‎ ميانگل جہاں زیب کے بیٹے ميانگل احمد زیب کی بیوہ بیوی ہیں۔ 2018ء سے ان کا تعلق مسلم لیگ (ن) سے ہے۔ اس سے قبل وہ پاکستان تحریک انصاف میں تھیں۔

سیاسی زندگی[ترمیم]

2013ء کے عام انتخابات[ترمیم]

مسرت احمد ذیب 2013ء کے پاکستانی عام انتخابات میں خیبر پختونخوا سے خواتین کے لئے مخصوص نشست پر پاکستان تحریک انصاف کی امیدوار کی حیثیت سے پاکستان کی قومی اسمبلی کی رکن منتخب ہوئیں۔[1][2][3][4]

2014ء میں، پی ٹی آئی نے مسرت کی رکنیت منسوخ کردی اور قومی اسمبلی کی رکنیت سے نااہلی کا مطالبہ کیا۔[5][6]

مئی 2018ء میں، انہوں نے پاکستان تحریک انصاف چھوڑ کر مسلم لیگ (ن) میں شامل ہوگئیں۔[7]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "PML-N secures most reserved seats for women in NA - The Express Tribune". The Express Tribune. 28 مئی 2013. 04 مارچ 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 8 مارچ 2017. 
  2. "Women, minority seats allotted". DAWN.COM (بزبان انگریزی). 29 مئی 2013. 7 مارچ 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 8 مارچ 2017. 
  3. "Princess and the PTI: Mussarat Ahmed Zeb joins the 'party of hope' - The Express Tribune". The Express Tribune. 14 مارچ 2013. 9 مارچ 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 8 مارچ 2017. 
  4. "Final count: ECP announces MPAs, MNAs on reserved seats - The Express Tribune". The Express Tribune. 28 مئی 2013. 7 مارچ 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 8 مارچ 2017. 
  5. Wasim، Amir (30 دسمبر 2016). "PTI suspends more members for violating discipline". DAWN.COM (بزبان انگریزی). 16 مارچ 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 22 مئی 2017. 
  6. Chaudhry، Fahad (22 مئی 2017). "MNA Mussarat Ahmadzeb alleges attack on Malala was 'scripted'". DAWN.COM (بزبان انگریزی). 22 مئی 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 22 مئی 2017. 
  7. "PTI, PML-N lawmakers switch loyalties ahead of general elections". Daily Pakistan Global. اخذ شدہ بتاریخ 27 مئی 2018.