مصابیح السنہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

احادیث کے اس مجموعہ کے مولف پانچویں اور چھٹی صدی ہجری کے نامور محدث ابو محمد حسین بن مسعود بن محمد الفرا البغوی ہیں۔ ان کی کنیت ابو محمد، لقب فراء (کیونکہ پوستین کی تجارت کرتے تھے)۔ ہرات و سرخس کے درمیان ایک بستی بَغو کے رہنے والے تھے اس لیے بغوی کہلاتے ہیں۔ خواب میں نبی ﷺ نے فرمایا کہ تُو نے میری سنت زندہ کی، اللہ تجھے زندہ رکھے لہذا خطاب محی السنتہ ہے، آپ شافعی المذہب ہیں۔ بڑے متقی عالم، زاہد اور تارک الدنیا بزرگ تھے، ہمیشہ روکھی روٹی یا زیتون و کشمش سے روٹی کھائی۔ اسی برس سے زیادہ عمر پا کر 615 ہجری میں مقام کرد میں وفات پائی۔ اپنے استاد قاضی حسین کے پہلو میں دفن ہوئے۔ آپ نے مصابیح السنتہ، شرح السنتہ، تفسیر معالم التنزیل، کتاب التہذیب، فتاوی بغوی وغیرہ کتب تصنیف فرمائیں۔
مصابیح میں چار ہزار چار سو چونتیس حدیثیں ہیں۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. مرٱت المناجیح، حکیم الامت مفتی احمد یار خاں نعیمی اشرفی بدایونی