ممتاز بیگم (کارکن)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ممتاز بیگم
معلومات شخصیت
پیدائش 20 مئی 1923(1923-05-20)
ہاوڑہ، کولکتہ، بنگال پریزیڈنسی، برطانوی ہندوستان
تاریخ وفات جون 30، 1967(1967-60-30) (عمر  44 سال)
شہریت British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند
Flag of Pakistan.svg پاکستان  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی بیتھون کالج
جامعہ ڈھاکہ
پیشہ فعالیت پسند  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات

ممتاز بیگم (پیدائش کلیانی رائے چوہدری ؛ 20 مئی 1923- 30 جون ، 1967) مشرقی پاکستان (بعد میں بنگلہ دیش) سے تعلق رکھنے والی بنگالی زبان کی کارکن تھیں۔ انہوں نے بنگلہ خواتین کے حقوق اور کے لئے بہت کوششیں کیں۔ بنگلہ دیش کی حکومت نے زبان کی تحریک میں ان کے کردار کے لئے انہیں 2012 میں ایکوشے پدک سے نوازا تھا۔

پس منظر اور تعلیم[ترمیم]

ممتاز بیگم کے والد کا نام موہیم چندرا تھا۔ وہ ضلعی جج تھے اور بعد میں کولکتہ ہائی کورٹ کے جسٹس بن گئے۔ ان کی والدہ کا نام مکھنمتی دیوی تھا جو ایک اسکول میں مدرس کی خدمات سرانجام دے رہی تھیں۔ وہ اس وقت کے معروف ادیب پرماٹھا ناتھ بشی کی بھانجی تھیں۔ 1944 میں اس کی شادی کولکتہ سول سپلائی آفس کے اہلکار اور کولکتہ یونیورسٹی میں قانون کے طالب علم، عبد المناف سے ہوئی۔ ممتاز بیگم نے نے اپنی تعلیم جاری رکھنے کا فیصلہ کیا اور 1938 میں میٹرک کا امتحان پاس کیا تھا۔ بعدازاں انہوں نے 1942 میں بیتھون کالج سے بی اے کی ڈگری حاصل کی اور 1951 میں ڈھاکہ یونیورسٹی سے بی اے ڈی کا امتحان مکمل کیا۔

کیریئر[ترمیم]

21 فروری 1952 کو بنگالی زبان کی تحریک کے دوران خواتین کے پہلے جلوس کی قیادت ممتاز بیگم نے کی۔ اسی جلوس کے وجہ سے انہیں پابند سلاسل کر دیا گیا اور وہ فروری 1952 سے مئی 1953 تک قید رہی۔ رہائی کے بعد انہوں نے تدریسی کارم جاری رکھا اور بعدازاں وہ آنندومئی گرلز ہائی اسکول اور احمد بوانی گرلز ہائی اسکول ، شیشو نکیتن میں مدرس کی خدمات سر انجام دیتی رہیں اور بعد ہیڈ مسٹریس کی حیثیت سے خدمات انجام دیتی ہیں۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]