مندیگک

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
Mundigak
منډیګک
Archeological site
Mundigak منډیګک is located in Afghanistan
Mundigak منډیګک
Mundigak
منډیګک
Location in Afghanistan
متناسقات: 31°54′14″N 65°31′29″E / 31.9039°N 65.5246°E / 31.9039; 65.5246متناسقات: 31°54′14″N 65°31′29″E / 31.9039°N 65.5246°E / 31.9039; 65.5246
ملکFlag of Afghanistan.svg افغانستان
صوبہصوبہ قندہار

مندیگک ( پشتو: منډیګک‎ ) افغانستان کے صوبہ قندھار میں واقع ایک آثار قدیمہ ہے۔کانسی کے دور کے دوران یہ ہلمند کی ثقافت کا مرکز تھا۔ یہ قندھار کے شمال مغرب میں شاہ مقصد کے قریب تقریبا 55 کلومیٹر (180,000 فٹ) کے فاصلے پر دریائے کشکی نخود کے اوپری نالے پر واقع ہے۔

تاریخ[ترمیم]

سطح چہارم کا برتن

مندیگک ایک بہت بڑا قدیم تاریخی قصبہ تھا جو 5 ویں ہزارے سے دوسرے ہزارے قبل مسیح تک ایک اہم ثقافتی خطہ تھا۔ اس کی کھدائی فرانسیسی اسکالر جین میری کیسل نے سن 1950 میں کی تھی [1] ۔ کھدائی کے وقت اس ٹیلے کی لمبائی نو میٹر تھی۔ [2]

تیسرے ہزارے قبل مسیح کے مٹی کے برتن اور دیگر نمونے ظاہر کرتے ہیں کہ یہ ایک بڑا شہری مرکز بن گیا تھا اور ترکمانستان ، بلوچستان اور ابتدائی ہڑپہ سندھ کے خطے کے ساتھ باہمی روابط کی نشاندہی بھی ہوتی ہے۔

مندیگک ہلمند وادی (سیستان) کی ثقافت کے دوران پروان چڑھا جسے ہلمند ثقافت ( صوبہ ہلمند ) بھی کہا جاتا ہے۔ [3]

21 ہیکٹر (52 ایکڑ)کے ساتھ یہ ہلمند ثقافت کا دوسرا سب سے بڑا مرکز تھا ، پہلے کا نام شہر سوختہ تھا جو 2400 قبل مسیح میں 150 ایکڑ (60 ہیکٹر) رقبے تک پھیلا ہوا تھا۔ [4]

ایران میں واقع بامپور ایک قریبی تقابلی مقام ہے۔

تقریبا 2200 قبل مسیح میں ، شہرِ سوختہ اور مندیگک ، دونوں پر زوال آنا شروع ہو گیا، جس کے بعد دونوں کے علاقے میں کافی سکڑاؤ آیا اور بعد کی تاریخوں میں مختصر عرصے کے لیے زیر قبضہ بھی آئے۔ [5]

وادی سندھ روابط[ترمیم]

مندیگک میں وادی سندھ کی تہذیب سے متعلق کچھ مواد موجود ہے۔ یہ مواد سانپوں اور چھلکے ہوئے بیلوں ، اور دیگر اشیاء کی سیرامک مجسموں کے ایک حصے پر مشتمل ہے ، جو وادی سندھ کے دیگر مقامات پر پائے جانے والے ملتے جلتے ہیں۔ [6]

مندیگک میں ملنے والے مٹی کے برتنوں میں کوٹ ڈیجی میں پائے جانے والے اسی طرح کی اشیاء کے ساتھ متعدد مماثلتیں پائی گئی۔ [7] یہ مواد کوٹ ڈیجی کی ابتدائی پرت میں ظاہر ہوا تھا۔

  • 1951-58 کاسل ، MAI– کھدائی۔ [8]

موسیی گوئیمٹ میں لیول 4 دریافتیں[ترمیم]

مزید دیکھو[ترمیم]

  • وادی سندھ کی تہذیب کے مقامات کی فہرست
  • وادی سندھ تہذیب کی ایجادات اور دریافتوں کی فہرست
  • وادی سندھ تہذیب کی ہائیڈرولک انجینئرنگ
  • مہر گڑھ ۔ کوئٹہ کے قریب بولان میں آثار قدیمہ کا مقام
  • شیری خان ترکئی - بنوں میں آثار قدیمہ کا مقام
  • ہڈا - صوبہ ننگرہار میں آثار قدیمہ
  • سرخ کوتل ۔ صوبہ بغلان میں آثار قدیمہ
  • میس عینک - صوبہ لوگر میں آثار قدیمہ

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Casal, Jean Marie (1961): Fouilles de Mundigak, Paris
  2. "Afghanistan Prehistory". February 18, 2012 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 
  3. McIntosh, Jane. (2008) The Ancient Indus Valley, New Perspectives. ABC-CLIO. Page 86.
  4. McIntosh, Jane. (2008) The Ancient Indus Valley, New Perspectives. ABC-CLIO. Page 87.
  5. McIntosh, Jane. (2008) The Ancient Indus Valley: New Perspectives. ABC-CLIO. Page 86.
  6. Ghosh، Amalananda (1990). An Encyclopaedia of Indian Archaeology. google.com. ISBN 9004092641. اخذ شدہ بتاریخ 21 ستمبر 2015. 
  7. McIntosh, Jane. (2008) The Ancient Indus Valley: New Perspectives. ABC-CLIO. Page 75.
  8. CASAL، Jean-Marie (1954). "Quatre campagnes de fouilles à Mundigak 1951-1954". Arts Asiatiques 1 (3): 163–178. doi:ڈی او ئي. آئی ایس ایس این 0004-3958. https://www.jstor.org/stable/43483921. 
  • آثار قدیمہ کا جیزٹر آف افغانستان / کیٹلاگ ڈیس سائٹس آرکولوجکس ڈی افغانستان ، جلد اول ، واروک بال ، ایڈیشنز ریچری سور لیس تہذیبوں ، پیرس ، 1982۔

بیرونی روابط[ترمیم]