منسکی مومنٹ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

منسکی مومنٹ (Minsky Moment) سے مراد مالیات کی دنیا میں وہ موقع ہوتا ہے جب اثاثوں کی قیمتیں اچانک تیزی سے گرتی ہیں۔ یہ اصطلاح پروفیسر Hyman Minsky کے نام سے منسوب ہے جس نے 1986ء میں Stabilizing an Unstable Economy کے نام سے اپنا مقالہ لکھا تھا۔

منسکی سائیکل کے مختلف مرحلے.

منسکی کا موقف تھا کہ بڑے بینکیں، تاجر اور قرض دینے والے ادارے مل کر وقفے وقفے سے مارکیٹ میں مصنوعی ہیجان پیدا کرتے ہیں جس کی وجہ سے شیئر پلاٹ وغیرہ کی قیمتیں بہت بڑھ جاتی ہیں۔ لوگ منافع کے لالچ میں بڑے بڑے قرضے لے کر انویسٹمنٹ کرتے ہیں لیکن جب اچانک قیمتیں گرتی ہیں تو بری طرح نقصان اٹھاتے ہیں۔
منسکی کے خیال میں کیپیٹل ازم اور زبردست کاروباری اتار چڑھاو لازم و ملزوم ہیں۔
Minsky’s insight that financial capitalism is inherently and endogenously given to bubbles and busts is not just right, but spectacularly right.

1992ء میں منسکی نے اپنی تصنیف The Financial Instability Hypothesis میں واضح کیا کہ کس طرح قرض اپنی پہلی شکل (Hedge) سے دوسری شکل (سٹہ) اختیار کرتا ہے جو پھر تیسری شکل Ponzi Finance میں تبدیل ہو کر مارکیٹ کے بیٹھ جانے کا سبب بنتا ہے۔

“Three distinct income-debt relations for economic units, which are labeled as hedge, speculative, and Ponzi finance, can be identified.

دنیا بھر میں ہونے والی زرمبادلہ کی ترسیلات کا صرف 2 فیصد حقیقی معیشت پر مشتمل ہوتا ہے جبکہ 98 فیصد سٹے پر مشتمل ہوتا ہے۔[1]. جون جولائی 1998ء میں انڈونیشیا میں ہونے والے مالیاتی بحران کی وجہ سے انڈونیشیا کو اپنی آمدنی کا 13.5 فیصد نقصان برداشت کرنا پڑا اور اسکی آبادی کا 40 فیصد یعنی 8 کروڑ افراد غربت کا شکار ہو گئے۔ [2]

مزید دیکھیئے[ترمیم]

بیرونی ربط[ترمیم]

The Shadow Banking System

حوالہ جات[ترمیم]

  1. The Future of Money – A global currency?
  2. Public Infrastructure — Welcome to the World of Waste, Fraud, and Abuse