میرا نام جوکر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
میرا نام جوکر
Mera Naam Joker
Mera Naam Joker poster.jpg
فلم کا پوسٹر
ہدایت کارراج کپور
پروڈیوسرراج کپور
منظر نویسخواجہ احمد عباس
کہانیخواجہ احمد عباس
ستارےراج کپور
سیمی گریوال
رشی کپور
Kseniya Ryabinkina
پدمنی
منوج کمار
دھرمیندر
دارا سنگھ
Rajendra Kumar
موسیقیشنکر جے کشن
سنیماگرافیRadhu Karmakar
ایڈیٹرراج کپور
پروڈکشن
کمپنی
تقسیم کارآر کے فلمز
تاریخ نمائش
  • 18 دسمبر 1970ء (1970ء-12-18)
دورانیہ
248 منٹ
ملکبھارت
زبانہوتی زبان[1]
باکس آفس73.1 million tickets (سوویت اتحاد)

میرا نام جوکر (انگریزی: Mera Naam Joker) 1970ء کی بھارتی ہندی زبان کی فلسفیانہ ڈراما فلم ہے، جسے راج کپور نے اپنے بینر آر کے فلمز کے تحت ڈائریکٹ، ایڈٹ اور پروڈیوس کیا ہے، اور اسے خواجہ احمد عباس نے لکھا ہے۔

کہانی[ترمیم]

یہ راجو (راج کپور) کی کہانی ہے جس کا باپ سرکس کی دنیا کا مشہور اداکار تھا لیکن کلا بازی کا اسٹنٹ دکھاور وقت ہونے والے حادثے میں اس کی موت ہو جاتی ہے۔ اس کے باوجود راجو کا جھکاؤ شروع سے ہی سرکس کی طرف ہو جاتا ہے۔ اس فلم میں راجو کے جوان ہونے سے لیکر اس کے آخری دن تک کی انتہائی جذباتی کہانی ہے۔ یہ تین حصوں میں ہے۔

پہلا حصہ راجو لڑکے کی کہانی ہے جو اپنی ٹیچر میری (سیمی گریوال) کو محبت کرتا ہے۔ اسی عمر میں راجو کو یہ احساس ہو جاتا ہے کہ وہ دوسروں کو خوشی دینے کے لیے پیدا ہوا ہے چاہے اس کے اپنے دل پر جو بھی گزرے۔ پھر نوجوان راجو کی کہانی شروع ہوتی ہے جو جیمنی سرکس میں اک جوکر ہے۔ یہ سرکس مہیندر سنگھ (دھرمندر) کی ہے۔

وہاں راجو دی ملاقات ایک روسی آرٹسٹ مرینا (کسینیا) سے ہوتی ہے۔ راجو اور مرینا کے درمیان زبان کی رکاوٹ موجود ہے پھر بھی راجو اپنے دل کی آواز مرینا تکّ پہنچا دیتا ہے۔ آخر وہ دن آتا ہے جب سرکس ختم ہونے کے بعد مرینا واپس روس چلی جاتی ہے۔ راجو کا دل اک بار پھر ٹوٹ جاتا ہے۔

کہانی کے آخری حصے میں راجو مینا (پدمنی) کو ملتا ہے۔ مینا راجو سے لڑکے دی شکل میں ملتی ہے اور دوکو گلیوں میں ناچ تماشہ دکھا کے گزارا کرتے ہیں۔ ایک دن راجو ماننے مینا کی حقیقت کھل جاتی ہے۔ اس بعد وہ مینا سے لگاؤ محسوس کرنے لگتا ہے۔ اس دوران مینا کو سپر سٹار راجندر کمار کی ایک فلم میں رول مل جاتا ہے جس کے بعد وہ پچھے مڑ کے نہیں دیکھتی۔ راجو پھر اکلا رہی جاتا ہے اور اس کے ہکتھ میں وہی پرانی محبوب کلاؤن ڈول ہے، جو اس کے بھولے دل کا نشان ہے۔


مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Dwyer، Rachel (2006). Filming the Gods: Religion and Indian Cinema. روٹلیج. صفحہ 106. ISBN 978-1-134-38070-1.