میری وولسٹن کرافٹ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
میری وولسٹن کرافٹ
(انگریزی میں: Mary Wollstonecraft ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Mary Wollstonecraft by John Opie (c. 1797).jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائش 27 اپریل 1759[1][2][3][4][5][6][7]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
سپٹل فیلڈز، لندن[8]  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 10 ستمبر 1797 (38 سال)[1][2][3][4][5][6][7]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
سمرز ٹاؤن، لندن[8]  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات بھارت میں دوران زچگی اموات  ویکی ڈیٹا پر (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش بیویرلے[9]
بارکنگ، لندن
اپنگ فارسٹ
ویلز
نیوونگٹن گرین، لندن
جزیرہ آئرلینڈ
پیرس
ساؤتھ ہوارک
بلومزبری  ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Great Britain (1707–1800).svg مملکت برطانیہ عظمی  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مذہب انگلیکانیت[8]،  توحید پرستی[8]  ویکی ڈیٹا پر (P140) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد میری شیلی[10]  ویکی ڈیٹا پر (P40) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ مصنفہ،  مترجم،  فلسفی،  تاریخ دان،  ناول نگار،  مضمون نگار،  کاروباری شخصیت،  سفرنامہ نگار،  بچوں کی ادیبہ  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان فرانسیسی،  جرمن،  انگریزی[11]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل مضمون،  صنفی مطالعات  ویکی ڈیٹا پر (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

میری وولسٹن کرافٹ (UK: /ˈwʊlstənkrɑːft/، /-kræft/;[12] 27 اپریل 1759ء – 10 ستمبر 1797ء) انگریو مصنفہ، بچزں کی ادیبہ اور حقوق نسواں کی حامی تھیں۔ آزاد خیال فلسفہ اور خواتین میں عدم مساوات کا ادراک سے پہلے 1792ء میں وولسٹن کرافٹ نے اپنی کتاب آ وینڈی کیشن آف رائٹس آف وومن میں کیا تھا۔ یہ کتاب نسائیت کے میدان میں پہلی دستاویز ثابت ہوئی۔

نطریات[ترمیم]

وولسٹن نے 18ویں صدی کی بورژوائی خواتین کی زندگی کو پنجرے کے پرندوں سے تعبیر کیا۔ جو اپنی مرضی نہیں رکھتے۔ متوسط طبقے کی خاتون ہونے کی صورت میں اسے اپنی محت، آزادی اور کردار کو شوہر کی مرضی پر قربان کر دینا پڑتا ہے۔ مرد وقار، عیش کوشی اور اقتدار کا لطف اٹھاتا ہے۔ جب کہ خواتین کو اپنے فیصلے لینے کا کوئی حق حاصل نہیں ہے۔

وولسٹن کے مطابق خواتین کے اندر آزادی کا فقدان ہے سماج اور خاندان میں ان کی منطقی صلاحیت میں اضافے کی حوصلہ شکنی کی جاتی ہے۔ انھیں مردوں اور بچوں کی خواہشات کے مطابق عمل کرنے پر زور دیا جاتا ہے۔ عورتوں کے کردار پر بات کرتے ہوئے کرافٹ نے اس عام خیال کی تردید کی کہ عورت فطری طور پر تعیش پسند اور عیش کا سامان ہوتی ہے۔ البتہ اس کا خیال ہے کہ اگر مردوں کو اسی قید میں ڈال دیا جائے جس میں عورت بند ہوتی ہے ت وان کے اندر بھی محکومیت کی وہی خصومیات پیدا ہو جائیں گی جو عورت کے اندر ہیں۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

ملاحظات[ترمیم]

  1. ^ ا ب ربط : https://d-nb.info/gnd/118639285  — اخذ شدہ بتاریخ: 24 اپریل 2014 — اجازت نامہ: CC0
  2. ^ ا ب http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb119293724 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  3. ^ ا ب NE.se ID: https://www.ne.se/uppslagsverk/encyklopedi/lång/mary-wollstonecraft — بنام: Mary Wollstonecraft — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Nationalencyklopedin
  4. ^ ا ب دا پیرایج پرسن آئی ڈی: https://wikidata-externalid-url.toolforge.org/?p=4638&url_prefix=https://www.thepeerage.com/&id=p14822.htm#i148220 — بنام: Mary Wollstonecraft — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — مصنف: ڈئریل راجر لنڈی — خالق: ڈئریل راجر لنڈی
  5. ^ ا ب فائنڈ اے گریو میموریل شناخت کنندہ: https://www.findagrave.com/memorial/12828 — بنام: Mary Wollstonecraft Godwin — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  6. ^ ا ب InPhO ID: https://www.inphoproject.org/thinker/4137 — بنام: Mary Wollstonecraft — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  7. ^ ا ب بنام: Mary Wollstonecraft — FemBio ID: https://www.fembio.org/biographie.php/frau/frauendatenbank?fem_id=29115 — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Банк інформації про видатних жінок
  8. ^ ا ب پ عنوان : Oxford Dictionary of National Biography — ناشر: اوکسفرڈ یونیورسٹی پریس
  9. http://www.hu17.net/2018/08/28/the-first-feminist-mary-wollstonecraft-1759-1797/
  10. عنوان : Kindred Britain
  11. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb119293724 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  12. "Mary Wollstonecraft". Oxford Learner's Dictionaries. Oxford University Press. اخذ شدہ بتاریخ 12 نومبر 2020. 

بیرونی روابط[ترمیم]