میسن ریمی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
چارلس میسن ریمی
ابتدائی مغربی بہائی زیارت، الٹی سے سیدھی جانب کھڑے ہوئے لوگ: چارلس میسن ریمی، سگرڈ روسل، ایڈورڈ گیٹسنگر، لورا کلیفورڈ بارنی؛ بیٹھے ہوئے لوگ الٹی سے سیدھی جانب: ایتھل جینر روسنبرگ، میڈم جیکسن، شوقی آفندی، ہیلن ایلیس کول، لُوا گیٹسنگر، ایموجین ہواج۔
ابتدائی مغربی بہائی زیارت، الٹی سے سیدھی جانب کھڑے ہوئے لوگ: چارلس میسن ریمی، سگرڈ روسل، ایڈورڈ گیٹسنگر، لورا کلیفورڈ بارنی؛ بیٹھے ہوئے لوگ الٹی سے سیدھی جانب: ایتھل جینر روسنبرگ، میڈم جیکسن، شوقی آفندی، ہیلن ایلیس کول، لُوا گیٹسنگر، ایموجین ہواج۔

معلومات شخصیت
پیدائش 15 مئی 1874[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
برلنگٹن، آئیووا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
تاریخ وفات 4 فروری 1974 (100 سال)[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of the United States (1795-1818).svg ریاستہائے متحدہ امریکا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
مذہب بہائیت
عملی زندگی
مادر علمی کورنیل یونیورسٹی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ معمار  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر

میسن ریمی ایک یورپین جو شوقی آفندی کا مقرب تھا اور حسین و جمیل شخص تھا۔ میسن ریمی ایک متنازع شخصیت ہے اکثر بہائی بھی اس کو عزت کی نگاہ سے نہیں دیکھتے، کہا جاتا ہے کہ اس نے شوقی آفندی کو بد راہ کر کے انہیں یورپ کی خرافات سے متعارف کروایا۔ جب شوقی آفندی بہائیوں کے ولی لامر بنے تو اسے مقرب بناکر رئیس کا لقب دیا، اسی وجہ سے میسن ریمی کی تعلیمات پر عمل کرنے والا فرقہ ”اتباع الرئیس“ کہلایا۔ اتباع الرئیس کو ”میسن ریمؤن“ بھی کہا جاتا ہے۔ شوقی آفندی کی چونکہ اولاد نہ تھی تو میسن ریمی بہائیوں کا ولی الامر بن بیٹھا اور بعد میں اس نے نبی ہونے کا دعویٰ کر دیا اور اس نے فرانس اور یورپ و امریکا کے کئی لوگوں کو اپنا پیروکار بنالیا۔[2][3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب ایس این اے سی آرک آئی ڈی: https://snaccooperative.org/ark:/99166/w6959q9g — بنام: Mason Remey — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  2. کنیاز پرنس دالغورکی، پرنس دالغورکی، ص 76-77
  3. علامہ ظہیر، البھائیہ، ص 351