میٹ ہنری (کرکٹر)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
میٹ ہنری
A head and shoulders photograph taken from behind of a cricketer fielding whilst wearing a blue uniform with the number 24 on his back
ہینری جون 2018ء میں بیکنہیم میں کینٹ کے لیے فیلڈنگ کر رہے ہیں۔
ذاتی معلومات
مکمل ناممیتھیو جیمز ہنری
پیدائش14 دسمبر 1991ء (عمر 30 سال)
کرائسٹ چرچ، کینٹربری، نیوزی لینڈ
قد6 فٹ 2 انچ (1.88 میٹر)
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیدائیں ہاتھ کا فاسٹ میڈیم گیند باز
حیثیتگیند باز
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 266)21 مئی 2015  بمقابلہ  انگلینڈ
آخری ٹیسٹ10 جون 2022  بمقابلہ  انگلینڈ
پہلا ایک روزہ (کیپ 183)31 جنوری 2014  بمقابلہ  بھارت
آخری ایک روزہ15 جولائی 2022  بمقابلہ  آئرلینڈ
پہلا ٹی20 (کیپ 65)4 دسمبر 2014  بمقابلہ  پاکستان
آخری ٹی203 جنوری 2017  بمقابلہ  بنگلہ دیش
ملکی کرکٹ
عرصہٹیمیں
2010/11– تاحال کینٹربری
2016وورسٹر شائر
2017کنگز الیون پنجاب
2017 ڈربی شائر
2018کینٹ
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ ایک روزہ فرسٹ کلاس لسٹ اے
میچ 17 60 81 138
رنز بنائے 312 214 1,758 657
بیٹنگ اوسط 18.35 14.26 19.75 12.39
100s/50s 0/2 0/0 0/6 0/0
ٹاپ اسکور 66 48* 81 48*
گیندیں کرائیں 3,943 3,144 17,145 6,922
وکٹ 53 110 351 227
بالنگ اوسط 40.24 25.22 24.78 26.66
اننگز میں 5 وکٹ 1 2 16 4
میچ میں 10 وکٹ 0 0 3 0
بہترین بولنگ 7/23 5/30 7/23 6/45
کیچ/سٹمپ 7/– 18/– 34/– 50/–
ماخذ: CricInfo، 15 July 2022

میتھیو جیمز ہنری (پیدائش: 14 دسمبر 1991ء) نیوزی لینڈ کا ایک پیشہ ور کرکٹر ہے جو کینٹربری اور نیوزی لینڈ کی قومی ٹیم کے لیے کھیلتا ہے۔ وہ دائیں ہاتھ کا فاسٹ میڈیم باؤلر ہے۔

تعلیم[ترمیم]

اس نے پاپانوئی کے سینٹ جوزف سکول [1] اور کرائسٹ چرچ [2] کے سینٹ بیڈز کالج میں تعلیم حاصل کی اس سے پہلے کہ اس نے ایک سال کے سکالرشپ پر انگلینڈ کے سینٹ جوزف کالج، ایپسوچ میں اپنی چھٹی فارم کی تعلیم مکمل کی۔ [3]

ڈومیسٹک اور ٹی ٹوئنٹی کیریئر[ترمیم]

ہنری نے 2011ء سے نیوزی لینڈ کی ڈومیسٹک کرکٹ میں کینٹربری کے لیے کھیلا، مارچ 2011ء میں ویلنگٹن کے خلاف 2010-11 پلنکٹ شیلڈ میں فرسٹ کلاس کرکٹ میں ڈیبیو کیا۔ اس نے 2016ء میں ایک مدت کے لیے وورسٹر شائر کے لیے انگلینڈ میں کاؤنٹی کرکٹ کھیلی ہے [4] اور 2017ء نیٹ ویسٹ ٹی 20 بلاسٹ میں ڈربی شائر کے لیے اور 2018ء کے سیزن کے پہلے نصف میں کینٹ کے لیے ان کے غیر ملکی کھلاڑی کے طور پر کھیلا ہے کلب کے لیے سیزن کے اختتام پر کھیلیں۔ [4] [5] گلوسٹر شائر کے خلاف کینٹ ڈیبیو پر سات وکٹیں لینے کے بعد، ہنری نے اپریل 2018ء کے آخر میں ڈرہم کے خلاف اپنی بہترین اننگز اور میچ بولنگ کے اعداد و شمار حاصل کیے۔ اس نے ڈرہم کی پہلی اننگز میں پانچ اور دوسری میں سات وکٹیں لے کر میچ کے اعداد و شمار 12/73 کے ساتھ اپنی پہلی دس وکٹیں حاصل کیں ۔ [6] [7] ہینری کو کلب کے ساتھ اپنے پہلے دور کے دوران اس کی کینٹ کیپ سے نوازا گیا۔ فروری 2017ء میں انہیں کنگز الیون پنجاب کی ٹیم نے 2017ء انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) کے لیے 5 ملین روپے میں خریدا۔ [8] اس سے قبل انہوں نے 2014ء اور 2015ء کے درمیان آئی پی ایل میں چنئی سپر کنگز کے لیے معاہدہ کیا تھا لیکن ٹیم کے لیے کوئی میچ نہیں کھیلا۔ جولائی 2019ء میں انہیں یورو ٹی20 سلیم کرکٹ ٹورنامنٹ کے افتتاحی ایڈیشن میں ایڈنبرا راکس کے لیے کھیلنے کے لیے منتخب کیا گیا۔ [9] [10] تاہم اگلے مہینے ٹورنامنٹ منسوخ کر دیا گیا۔ [11] نومبر 2021ء میں، ہنری کو دوبارہ کینٹ کے لیے کھیلنے کے لیے سائن کیا گیا۔ اس بار انگلینڈ میں 2022ء کے کرکٹ سیزن کے لیے۔ [12]

بین الاقوامی کیریئر[ترمیم]

ہنری نے 31 جنوری 2014ء کو ہندوستان کے خلاف پانچویں ون ڈے میں اپنے بین الاقوامی کیریئر کا آغاز کیا۔ [13] انہوں نے 4 دسمبر 2014ء کو متحدہ عرب امارات میں پاکستان کے خلاف نیوزی لینڈ کے لیے اپنا ٹوئنٹی 20 انٹرنیشنل ڈیبیو کیا۔ [14] 2015ء کرکٹ ورلڈ کپ کے لیے 15 کے حتمی سکواڈ میں منتخب نہ کیے جانے کے باوجود انھیں ایڈن پارک میں جنوبی افریقہ کے خلاف سیمی فائنل میچ میں ایڈم ملنے کے متبادل کے طور پر منتخب کیا گیا۔ [15] وہ میچ میں بغیر وکٹ کے تھے لیکن میلبورن میں فائنل میں آسٹریلیا کے خلاف ہنری نے سنجیدہ رفتار کا مظاہرہ کیا  اور ڈیوڈ وارنر اور مائیکل کلارک کی دو وکٹیں حاصل کیں۔ [16] اس نے جمی نیشام کے ساتھ بلے بازی کرتے ہوئے ریکارڈ قائم کیا، مارچ 2018ء تک نیوزی لینڈ کے لیے ون ڈے میں سب سے زیادہ 9ویں وکٹ کی شراکت داری، 2016ء میں بھارت کے خلاف جوڑی کے طور پر 84 رنز کا اضافہ کیا۔ ہینری کا نیوزی لینڈ کے لیے ٹیسٹ ڈیبیو مئی 2015ء میں انگلینڈ کے خلاف دورے کے دوران ہوا۔ [17] مئی 2018ء میں وہ ان 20 کھلاڑیوں میں سے ایک تھے جنہیں نیوزی لینڈ کرکٹ نے 2018-19ء کے سیزن کے لیے ایک نیا معاہدہ دیا تھا۔ [18] اپریل 2019ء میں انہیں 2019ء کرکٹ ورلڈ کپ کے لیے نیوزی لینڈ کی ٹیم میں شامل کیا گیا۔ [19] [20] 3 جولائی 2019ء کو انگلینڈ کے خلاف میچ میں، ہنری نے اپنا 50 واں ون ڈے کھیلا۔ [21] پہلے سیمی فائنل میں نیوزی لینڈ نے بھارت کو 18 رنز سے شکست دی، ہینری نے 37 کے عوض تین وکٹیں حاصل کیں، اور انہیں میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔ [22] [23] فروری 2022ء میں جنوبی افریقہ کے خلاف پہلے میچ میں ہینری نے ٹیسٹ کرکٹ میں 7/23 کے ساتھ اپنی پہلی پانچ وکٹیں حاصل کیں ۔ [24]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Senior Prospectus". St Joseph's College. اخذ شدہ بتاریخ 07 اکتوبر 2017. 
  2. Kent County Cricket Club Annual 2018, p.27. Canterbury: Kent County Cricket Club.
  3. Watson S (2015) Ex-Suffolk schoolboys resume rivalry on international stage at England’s cricketers take on New Zealand, East Anglian Daily Times, 2015-06-23. Retrieved 2018-03-14.
  4. ^ ا ب Impact of Worcestershire's New Zealand ace Matt Henry hailed by Steve Rhodes, Worcester News, 2016-07-13. Retrieved 2018-03-14.
  5. Fordham J (2018) Kent sign New Zealand fast bowler Matt Henry as an overseas player, Kent Online, 2018-03-14. Retrieved 2018-03-14.
  6. Fordham J (2018) Matt Walker says Matt Henry was a 'class apart' in Kent's win at Durham, Kent Online, 2018-04-22. Retrieved 2018-04-23.
  7. Henry rules for Kent with record figures, Cricket Australia, 2018-04-22. Retrieved 2018-04-23.
  8. "List of players sold and unsold at IPL auction 2017". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 20 فروری 2017. 
  9. "Eoin Morgan to represent Dublin franchise in inaugural Euro T20 Slam". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 19 جولا‎ئی 2019. 
  10. "Euro T20 Slam Player Draft completed". Cricket Europe. اخذ شدہ بتاریخ 19 جولا‎ئی 2019. 
  11. "Inaugural Euro T20 Slam cancelled at two weeks' notice". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 14 اگست 2019. 
  12. "Matt Henry to return to Kent for 2022". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 26 نومبر 2021. 
  13. "India tour of New Zealand, 5th ODI: New Zealand v India at Wellington, Jan 31, 2014". ESPNcricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 31 جنوری 2014. 
  14. "New Zealand tour of United Arab Emirates, 1st T20I: New Zealand v Pakistan at Dubai (DSC), Dec 4, 2014". ESPNcricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2014. 
  15. "Milne ruled out of New Zealand tilt". ESPNCricinfo. 26 March 2015. اخذ شدہ بتاریخ 28 مارچ 2015. 
  16. "ICC CWC Finals: Aus vs NZ Full Scorecard". 29 March 2015. اخذ شدہ بتاریخ 13 جون 2021. 
  17. "New Zealand tour of England, 1st Test: England v New Zealand at Lord's, May 21-25, 2015". ESPN Cricinfo. 21 May 2015. اخذ شدہ بتاریخ 21 مئی 2015. 
  18. "Todd Astle bags his first New Zealand contract". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 15 مئی 2018. 
  19. "Sodhi and Blundell named in New Zealand World Cup squad". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 03 اپریل 2019. 
  20. "Uncapped Blundell named in New Zealand World Cup squad, Sodhi preferred to Astle". بین الاقوامی کرکٹ کونسل. اخذ شدہ بتاریخ 03 اپریل 2019. 
  21. "ICC World Cup 2019: England vs New Zealand--Statistical Highlights". Zee News. اخذ شدہ بتاریخ 03 جولا‎ئی 2019. 
  22. "New Zealand beat India to reach World Cup final". BBC Sport. اخذ شدہ بتاریخ 10 جولا‎ئی 2019. 
  23. "New Zealand stun India to reach World Cup final". SuperSport. اخذ شدہ بتاریخ 10 جولا‎ئی 2019. 
  24. "Matt Henry: 'You pinch yourself when you hear those stats'". ESPN Cricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 17 فروری 2022.