م ش عالم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے

طنز و مزاح کے بہترین شاعر

م ش عالم کا نام محمد شفیق ملک تھا جو والدِ مرحوم کے دوست نے رکھا قلمی نام م ش عالم ہے، ضلع مظفر گڑھ میں 11 اپریل 1967ء کو پیدا ہوئے ، ان کا آبائی علاقہ حیدرآباد سندھ ہے والد کا نام ؛صوفی محمد رمضان تھا پہلا شعر بارہ/تیرہ سال کی عمر میں کہا سب سے پہلے استاد؛ سید ضامن علی حسنی تھے، اپنے بہترین استاد پر پیراگراف اور دوسرے بہترین استاد؛ پروفیسر عنایت علی خان تھے، رسمی تعلیم نہ حاصل کر سکے، دکان داری ذریعہ معاش رہا اور اصلاحِ شاعری بھی کرتے رہے،

اعزازات[ترمیم]

اعلی کارکردگی پر ملنے والا ایوارڈ؛

  • اکادمی ادبیات (سندھ) کی جانب سے 2007ء میں بہترین مزاح گو شاعر کا ایوارڈ
  • اکادمی ادبیات (سندھ) کی جانب سے 2008ء میں
  • کتاب "عالَم آن لائن" کو بہترین 'مزاحیہ شاعری' کی کتاب کا ایوارڈ
  • مختلف اداروں، کلبز اور تنظیموں کی جانب سے بے شمار شیلڈز، سرٹیفیکیٹس

تصانیف[ترمیم]

  • عالم آن لائن(شاعری)

نمونہ کلام[ترمیم]

  • جو حلوے پوری کا سن ڈے کو ناشتا نہ کرے
  • تو وہ فضیلت چھٹی کا تذکرہ نہ کرے
  • " سنا ہے اس کو محبت دعائیں دیتی ہے "
  • جو ایزی لوڈ کرے مگر گلہ نہ کرے
  • یہ ٹھیک ہے نہیں مرتا کوئی حیا سے کبھی
  • خدا کسی کو مگر پھر بھی بے حیا نہ کرے
  • وہ بے حیائی کا اعلی ترین ماڈل ہے
  • جو بندہ اپنے پرائے کا بھی حیا نہ کرے
  • تو جب بھی ملتا ہے ہم کو مٹن کھلانا ہے
  • " وہ دل ہی ترے ملنے کی جو دعا نہ کرے
  • ہے زن مریدی میں حقدار گولڈ میڈل کا
  • جو روز مار بھی کھائے مگر گلہ نہ کرے
  • مرے خیال میں عالم ! ہے یہ بھی پامردی
  • کہ بندہ قرض لے، لیکن کبھی ادا نہ کرے

۔۔۔ ۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

  • ناصر کاظمی اور غلام علی کی زمین میں
  • '" دل میں اک لہر سی اٹھی ہے ابھی "
  • آن لائن جو تو ہوئی ہے ابھی
  • " بھری دنیا میں جی نہیں لگتا "
  • عقد ثانی کی جو کمی ہے ابھی
  • تو نے میسیج کیا تو ایسے لگا
  • " کوئی تازہ ہوا چلی ہے ابھی "
  • ابھی سریا نہیں ہے گردن میں
  • اپنی شہرت نئی نئی ہے ابھی
  • " شور برپا ہے خانہ دل میں "
  • کہیں مچھلی تلی گئی ہے ابھی
  • لگ رہی ہے سنی سنی مجھ کو
  • یہ جو تو نے غزل پڑھی ہے ابھی
  • اتنی جلدی ہے کیا کمانے کی
  • " غم نہ کر زندگی پڑی ہے ابھی "
  • دیکھنا پارلر کے بعد اس کو
  • یہ جو ڈائن سی لگ رہی ہے ابھی

کہہ رہی تھی مجھے شریف انساں وہ کہاں مجھ کو جانتی یے ابھی

  • چھوڑ دیں ذکر مہ و شاں عالم
  • عمر اتنی کہاں ڈھلی ہے ابھی

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

  • ادا میں خوش مزاجی کی بناوٹ ہو تو اچھا ہے
  • تعلق میں محبت کی تراوٹ ہو تو اچھا ہے
  • ملاوٹ گو علامت ہے برائی کی مگر عالم
  • تکلم میں تبسم کی ملاوٹ ہو تو اچھا ہے

[1]

وفات[ترمیم]

13 دسمبر 2022ء کو 55 سال کی عمر میں بوجہ کینسر وفات پا گئے ،

حوالہ جات[ترمیم]

  1. تحریر و تعارف آغا نیاز مگسی