نائلہ چوہان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
نائلہ چوہان کی 1982ء کی ایک تصویر

محترمہ نائلہ چوہان 6 مئ 1958 کو راولپنڈی میں پیدا ہوئیں۔ ایک اچھی سفارتکار اور خاتون ارٹسٹ کے طور پر شہرت رکھتی ہیں۔ اپنے کیریئر میں نائلہ چوہان ممبر بورڈ آف ڈائریکٹر آف اوورسیزایمپلائمنٹ کارپوریشن آف پاکستان، انٹراسٹیٹ ویسٹ سسٹم وغیرہ رہی ہیں۔ نائلہ چوہان نے پوری دنیا میں کیمیکل ہتھیاروں کے خلاف مہم بھی چلائی ہے اس ضمن میں وہ پہلی سویلین اور خاتون پیڈ آف نیشنل اتھارٹی فار تخفیف کیمیکل ہتھیار رہیں۔ 2013ء کے خاتمے تک نائلہ چوہان ارجنٹائن، پیرو، اوروگوائی اور ایکواڈور میں پاکستان کی سفیر رہیں۔ وہ لاطینی جنوبی امریکہ اور پاکستان کے تعلقات مضبوط بنانے کی خاوہاں رہیں اس وقت وہ ایڈیشنل سیکریٹری منسٹری آف فارن افیرز اسلام آباد مقرر تھیں کہ ان کی پوسٹنگ آسٹریلیا میں ہوئی۔

تعلیم[ترمیم]

نائلہ چوہان نے انٹرنیشنل ریلیشنز میں قائد اعظم یونورسٹی سے ماسٹرڈگری حاصل کی ہے اور پیرس سے انٹرنیشنل ریلیشنز میں پی ایچ ڈی سیشن سرٹفیکیٹ حاصل کیا ہے۔ انہوں سے پیرس میں مشہور سینٹرز سے بھی تربیت حاصل کی ہے۔ انہوں نے کینیڈی اسکول آف گورنمنٹ ہارورڈ یونورسٹی میں ایگزیکوٹو ڈیولپمنٹ پروگرام بھی کیا۔ انہیں کئ زبانوں پے عبور حاصل ہے۔ 35 سال کی عمر تک انہوں نے انگریزی، فرانسیسی، بنگالی، پنجابی، اردو، فارسی، اور 51 سال کی عمر میں ہسپانوی زبان پر عبور حاصل کیا۔

کیریئر[ترمیم]

اپنے سفارتکاری کیریر میں دو ہائی کمیشن آف پاکستان اوٹاوا کینیڈا رہیں۔ 1987ء میں جرنل اسمبلی اقوام متحدہ میں پاکستان کی نامزد سفیر رہیں اور تہران میں 1989ء سے 1993ء تک جبکہ کوالا لمپور میں 1997 سے 2001ء تک خدمات انجام دیں۔

خاندان[ترمیم]

نائلہ چوہان کے شوہر کا نام موسی جاوید چوہان ہے اور ان کے دو بیٹے ہیں جن کے نام عثمان وقاص چوہان اور ابراہیم ابوبکر چوہان ہیں۔