نائٹروجن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
Nitrogen,  7N
Liquidnitrogen.jpg
Nitrogen Spectra.jpg
Spectral lines of Nitrogen
General properties
Pronunciation /ˈnaɪtrɵdʒɨn/, NYE-tro-jin
Appearance colorless gas, liquid or solid
Nitrogen in the دوری جدول
سانچہ:Infobox element/periodic table
جوہری عدد (Z) 7
Group, period 15 (pnictogens), period 2
Block p-block
مشابہ عناصر گروہوں کے اجتماعی نام سانچہ:Infobox element/category format
Standard atomic weight (Ar) 14.0067(2)
برقی تشکیل 1s2 2s2 2p3
Electrons per shell
2, 5
Physical properties
Phase gas
نقطۂ انجماد 63.153 کیلون ​(-210.00 °C, ​-346.00 °F)
نقطہ کھولاؤ 77.36 K ​(-195.79 °C, ​-320.3342 °F)
کثافت at stp (0 °C and 101.325 kPa) 1.251 g/L
نقطۂ ثلاثیہ 63.1526 K, ​12.53 kPa
Critical point 126.19 K, 3.3978 MPa
سخانۂ ائتلاف (N2) 0.72 جول فی مول
Heat of (N2) 5.56 kJ/mol
Molar heat capacity (N2)
29.124 J/(mol·K)
بخاری دباؤ
Atomic properties
تکسیدی عددs 5, 4, 3, 2, 1, -1, -2, -3 ​strongly acidic oxide
برقی منفیت Pauling scale: 3.04
تائین توانائی
(more)
Covalent radius 71±1 پیکومیٹر
وانڈروال رداس 155 pm
Miscellanea
قلمی ساخت سانچہ:Infobox element/crystal structure
آواز کی رفتار (gas, 27 °C) 353 میٹر فی سیکنڈ
حر ایصالیت 25.83 × 10−3 W/(m·K)
مقناطیسیت diamagnetic
کیمیائی شعبۂ اخلاص اندراجی عدد 7727-37-9
Main isotopes of nitrogen
سانچہ:Infobox element/isotopes header
| references | in Wikidata

نطرساز (nitrogen) ایک کیمیائی عنصر کا نام ہے جس کی علامت N اختیار کی جاتی ہے اور اس کا جوہری عدد 7 تسلیم کیا جاتا ہے جبکہ اس کا جوہری وزن 14۔00674 ہوتا ہے۔ عنصری حالت میں پائے جانے کی صورت میں نطرساز ایک بے رنگ ، بے بو ، بے ذائقہ اور معیاری درجۂ حرارت و دباؤ پر عموماً خامل دوجوہری (inert diatomic) فارغہ یا gas کی شکل میں ملتی ہے۔

وجۂ تسمیہ[ترمیم]

نطرساز کا نام انگریزی اور اردو دونوں زبانوں میں ایک قبل مسیح سے موجود لفظ نطر (ntr) سے ماخوذ ہے جو قدیم مصر میں مومیانے (mummification) کے لیے بھی استعمال ہوتا تھا اور جسم کی صفائی کے طور پر بھی (صابن کی مانند) استعمال کیئے جانے کا گمان ہے۔ عبرانی زبان میں یہ لفظ بائبل میں متعلق صفائی کے بطور neter آتا ہے اور عربی میں مسلم سائنسدان اس قسم کی شے کے لیے نطرون (natron) کا لفظ استعمال کرتے رہے ہیں جہاں سے یہ لفظ لاطینی اور پھر انگریزی زبان میں داخل ہوا۔ نطرون جھیلوں سے پانی بخارات کی شکل میں اڑ جانے کے بعد رہ جانے والے رسوب سے حاصل کیا جاتا تھا اور آج کل اس کو sodium carbonate کی دس آبی (decahydrate) شکل تسلیم کیا جاتا ہے ، گویا نطرون sodium carbonate کی ایک قدرتی پائی جانے والی آبیدہ شکل ہے۔

صابونی ابہام[ترمیم]

نطرون تو sodium carbonate ہوا کرتا تھا لیکن اسی نطر کی اساس سے پایا جانے والا ایک اور لفظ ناطر یا شورہ (nitre) بھی پایا جاتا ہے اور مذکورہ بالا neter سے ہی اخذ کیا گیا تھا اور اپنے استعمال میں ، زمانۂ قدیم میں ، ایک ابہام رکھتا تھا اس کو sodium carbonate کے علاوہ potassium carbonate اور potassium nitrate کے لیے بھی اختیار کیا جاتا تھا۔ مزید یہ کہ اسی لفظ کا براہ راست تعلق sodium کے لیے مستعمل لفظ natrium سے بھی جڑتا ہے۔ جب 1772ء میں Daniel Rutherford نے اس فارغہ (gas) کی ہوا میں موجودگی کی اشاعت کی تو اس نے aere fixo یعنی ثابت ہوا کا لفظ استعمال کیا یعنی ہوا کا وہ حصہ جو جلنے کے عمل میں متحرک ہونے کے بجائے ثابت رہتا ہے۔ Antoine Lavoisier نے کہا کہ ہوا کا یہ حصہ ایک عنصر ہے اور اس نے اسے azote کا نام دیا یعنی بے حیات (a = بے + zoo = حیات) اور اس کا یہی بنیادی نام آج بھی چند زبانوں میں اس فارغہ (gas) کے نام کی بنیاد ہے جیسے جاپانی میں اسے chiso کہا جاتا ہے جہاں chi بمعنی روکنا (سانس یا حیات) اور so بمعنی عنصر کے آتا ہے۔ بعد میں اس کے لیے azote کے بجائے nitrogen کا لفظ پیش کیا گیا جس کی بنیاد لفظ nitron کو بنایا گیا جو (جیسا کہ مذکورہ بالا عبارت میں بیان ہوا) sodium carbonate اور قلمی شورہ (saltpeter) یعنی potassium nitrate کے لیے قرون وسطی میں اختیار کیا جانے والا نام ہے (دیکھیں نطرون)۔ جبکہ gen کا لاحقہ ، وجود میں لائے جانے کے مفہوم میں آتا ہے۔ اس کا اردو متبادل نطرساز بھی نطرون (nitro) سے نط اور بنانے والے کے مفہوم میں gen کے لیے ساز ملا کر نطرساز بنایا جاتا ہے۔