نصیر ترابی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
نصیر ترابی
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1945  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ریاست حیدرآباد،  برطانوی ہند  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ وفات 10 جنوری 2021 (75–76 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش کراچی  ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان
British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ کراچی  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ شاعر،  مصنف،  فرہنگ نویس  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان اردو  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
P literature.svg باب ادب

نصیر ترابی (ولادت: 25 جون 1945ء - وفات 10 جنوری 2021ء)پاکستان سے تعلق رکھنے والے اردو زبان کے نامور شاعر، ماہر لسانیات، لغت نویس تھے۔ وہ نامور شیعہ ذاکر اور خطیب علامہ رشید ترابی کے فرزند تھے۔ پاکستانی ڈراما سیریل ہم سفر کے ٹائٹل گیت وہ ہم سفر تھا انہی کا لکھا ہوا ہے۔[1] نصیر ترابی رشید ترابی کے بیٹے تھے۔[2]

حالات زندگی[ترمیم]

نصیر ترابی 15 جون 1945ء کو ریاست حیدرآباد دکن میں پیدا ہوئے۔ آپ کے والد کا نام رشید ترابی تھا۔[2] تقسیم ہند کے بعد پاکستان آگئے۔ 1968ء میں جامعہ کراچی سے تعلقات عامہ میں ایم اے کیا۔ 1962ء میں شاعری کا آغاز کیا۔ ان کا اولین مجموعۂ کلام عکس فریادی 2000ء میں شائع ہوا۔ ایسٹرن فیڈرل یونین انشورنس کمپنی میں ملازمت اختیار کی اور افسر تعلقات عامہ مقرر ہوئے۔[3]

تصانیف[ترمیم]

  • عکسِ فریادی (غزلیات)
  • شعریات (شعر و شاعری پر مباحث اور املا پر مشتمل)
  • لاریب (نعت، منقبت، سلام)، اکادمی ادبیات پاکستان کی جانب سے علامہ اقبال ایوارڈ ملا۔
  • لغت العوام

وفات[ترمیم]

نصیر ترابی 10 جنوری 2021ء کو 75 سال کی عمر میں انتقال کرگئے۔ نصیر ترابی کے انتقال کی تصدیق ان کے اہلخانہ نے کی ہے۔[2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "वो हम-सफ़र था मगर उस से हम-नवाई न थी, पढ़ें नसीर तुराबी की शानदार शायरी". 
  2. ^ ا ب پ "معروف شاعر اور دانش ور نصیر ترابی انتقال کرگئے". 
  3. بحوالۂ:پیمانۂ غزل(جلد دوم)،محمد شمس الحق،صفحہ:379