ننھی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
فائل:Nanhi.jpg
افتتاحی تھیم
نوعیتسنسنی
ڈرامہ
سماجی
تحریرمونا حسیب
ہدایاتحسیب حسن
نمایاں اداکار
افتتاحی تھیمچھوٹی سی ننھی سی ایلیسیا ڈیاس کی گلوکاری
نشرپاکستان
زباناردو
اقساط17
تیاری
عملی پیشکشمونا حسیب
فلم سازاقبال انصاری
مقامکراچی، پاکستان
دورانیہapprox. 35-45 منٹ
تقسیم کارجیو ٹی وی
نشریات
چینلجیو انٹرٹینمنٹ
11 مارچ 2013ء (2013ء-03-11) – 1 جولائی 2013 (2013-07-01)


ننھی 2013 کا پاکستانی تھرلر ڈرامہ سیریل ہے جس کی ہدایت کاری حسیب حسن نے 2013 میں جیو انٹرٹینمنٹ پر کی تھی۔ سیریل مونا حسیب نے لکھا اور اقبال انصاری نے پروڈیوس کیا ۔ پاکستانی معاشرے کے مسائل جیسے کہ چائلڈ اسمگلنگ اور نوجوان لڑکیوں کی تعلیم پر توجہ مرکوز کی گئی ہے، اس میں سجل علی ، شہود علوی ، اسماء عباس اور جاوید شیخ شامل ہیں۔ [1] [2] اس وقت کے سب سے زیادہ مقبول سیریل نے 6.5 کی سب سے زیادہ TRP، [3] نے مقامی اور بین الاقوامی ناظرین کے درمیان جیو ٹی وی کی اہمیت کو بڑھا دیا۔ اسے 13 ویں لکس اسٹائل ایوارڈز کی تمام بڑی کیٹیگریز کے لیے نامزد کیا گیا تھا جس میں بہترین ٹی وی پلے، بہترین ٹی وی اداکارہ، بہترین ٹی وی رائٹر، بہترین ٹی وی ڈائریکٹر شامل ہیں اور اس نے بہترین ٹی وی ڈائریکٹر کے لیے چار میں سے ایک ایوارڈ جیتا تھا [4] [5] اور یہ چوتھے پاکستان میڈیا ایوارڈز کے لیے 2 کیٹیگریز کے لیے بھی نامزد کیا گیا جس میں بہترین ڈرامہ اداکارہ اور بہترین معاون اداکار شامل ہیں۔ [6]

خلاصہ[ترمیم]

یہ ننھی کی کہانی ہے جس کی پرورش اس کی خالہ شمو نے کی۔ شمو ایک ہسپتال میں ایک پیشہ ور نرس ہے اور ہسپتال سے بچوں کو اغوا کرتی ہے۔ ننھی بھی شمو کے ہاتھوں اغوا شدہ لڑکی تھی۔ ننھی ہمیشہ سوچتی تھی کہ شمو اس کی ماں ہے۔ ننھی بچوں کو اغوا کرنے اور بیچنے کے لیے ہمیشہ شمو کے خلاف تھی کیونکہ وہ بچوں سے پیار کرتی تھی اور اپنا ایک چاہتی تھی۔ اس کے بعد واقعات کا ایک سلسلہ شروع ہوتا ہے کہ اس نے خود ایک بچہ پیدا کیا اور پھر تنازعہ کھڑا ہو جاتا ہے۔

ننھی کو اس کی نام نہاد ماں شمو نے 4 یا 5 سال کی عمر سے اغوا شدہ بچوں کی دیکھ بھال کے لیے بنایا ہے۔ شمو ننھی کو بچوں کی دیکھ بھال اس وقت تک کرتی ہے جب تک کہ وہ انہیں اچھے سودے میں بیچنے کے قابل نہ ہو جائے۔ اس میں سول ہسپتال کی نرس اور گارڈ جہاں شمو مقامی پولیس اہلکار کے ساتھ مل کر کام کرتے ہیں سب کی ملی بھگت ہے۔ ننھی بچوں سے پیار کرنا شروع کر دیتی ہے اور اپنے بچوں میں سے ایک ہونے کی منتظر رہتی ہے۔ وہ بچوں کو اغوا کرنے کے لیے وقتاً فوقتاً شمو کو ڈانٹتی ہے۔ ننھی کی بچپن کی سہیلی ہے جسے چندا کہتے ہیں۔ وہ مل کر اپنے علاقے میں کھیلتے ہیں۔ وہ دونوں اپنے پڑوسی زمان کے گھر بھی جاتے ہیں۔ زمان کی بیوی نے ابھی ایک بچی کو جنم دیا ہے۔ زمان اپنی بیوی کو موٹا اور بدصورت ہونے اور بیٹی کو جنم دینے کی وجہ سے حقیر سمجھتا ہے۔ آخر کار زمان کا چندا کے ساتھ افیئر ہو گیا۔ محلے میں، ایک بوڑھا آدمی اللہینو ہے، جو پرائمری اسکول کا استاد ہے۔ اس کے علاوہ ایک نوجوان شاہد ہے جو ننھی سے پیار کرتا ہے۔ ننھی تقریباً 15-16 سال کی ہو جاتی ہے (چندا کی طرح)، لیکن دل اور رویے میں اب بھی بچہ ہے۔ ایک دن، شمو ایک چوری شدہ بچے کو لے کر آتی ہے۔ ننھی کو اس سے بہت لگاؤ ہوتا ہے، لیکن پولیس کی طرف سے شمو کے گھر پر چھاپے کے دوران اسے چھپانے کی کوشش کے دوران بچہ دم گھٹنے سے ہلاک ہو جاتا ہے۔ ننھی غصہ ہو گئی ۔ وہ زمان کی بیٹی کو کسی کے علم میں لائے بغیر اپنے گھر لے آتی ہے۔ زمان اور اس کی بیوی پورے محلے میں تلاش کرتے ہیں، آخر کار ان کی لڑکی مل جاتی ہے۔ زمان اس بات پر ننھی سے بہت ناراض ہے اور شمو کے وہاں نہ ہونے پر اسے اپنے ہی گھر میں جنسی زیادتی کا نشانہ بناتا ہے۔ ننھی اس زیادتی سے غافل ہے اور درحقیقت اس بات پر خوش ہے کہ اس کے ہاں بچہ ہوگا جیسا کہ زمان نے اسے بتایا تھا۔ کچھ دنوں کے بعد جب ننھی کو بچہ نہیں ملتا تو وہ زمان پر پتھر پھینکتی ہے۔ چندا اور زمان کی بیوی دونوں ننھی سے اس بات پر ناراض ہیں۔ اس کے بیچ میں زمان کی بیوی چندا کے گھر پر اپنے شوہر کے ساتھ افیئر کی وجہ سے بہت بڑا شور مچاتی ہے۔ چندا کی بیوہ ماں اسے ڈانٹتی ہے، لیکن بے سود۔ زمان کی بیوی بھی ننھی سے کہتی ہے کہ وہ اس کے گھر نہ آئے کیونکہ اس کا بھی اپنے شوہر کے ساتھ کوئی تعلق ہو سکتا ہے۔ زمان اور چندا بغیر کسی کے علم میں ننھی کو ایک خالی مکان میں لے گئے اور زمان پر پتھر پھینکنے پر اسے بے رحمی سے مارا۔ زمان اسے دھمکی بھی دیتا ہے کہ وہ زیادتی کے بارے میں کسی کو نہ بتائے۔ وہ اسے بالکونی سے پھینکنے ہی والے تھے کہ شاہد جو کہ ایک قریبی گلی میں کرکٹ کھیل رہا تھا نانی کو لے کر ان کے پیچھے چل پڑا۔ وہ ننھی کو بچاتا ہے۔ ننھی بھاگتی ہوئی اپنی عمارت میں آتی ہے جہاں ناراض زمان کی بیوی اس کا گلا گھونٹنے کی کوشش کرتی ہے۔ شاہد نے ننھی کو پھر سے بچا لیا۔ ننھی پراسرار ہے اور اللہ دینو کے گھر بھاگتی ہے۔ شاہد اس بات سے بے خبر ہے۔ کچھ عرصہ قبل شاہد کی ننھی سے منگنی ہوئی ہے۔ اللہ دینو ننھی کا خیال رکھتا ہے۔ ننھی کا کہنا ہے کہ وہ گھر نہیں جانا چاہتی کیونکہ اس کی ماں شمو اس سے نفرت کرتی ہے، چندا، زمان وغیرہ سب اس کی زندگی کے پیچھے ہیں۔ اللہ دینو خاموشی سے اسے اپنے آبائی گھر لے جاتا ہے، جہاں اللہ دینو کی معذور اور بیمار پہلی بیوی ننھی کو اس کی بیوی سمجھتی ہے اور آخر کار ان دونوں کی شادی کر وا دیتی ہے۔ یہاں، شاہد شمو کو بتاتا ہے کہ کس طرح زمان، اس کی بیوی اور چندا نے ننھی کے ساتھ ظلم کیا۔ شمو ایک مقامی پولیس اہلکار کی مدد سے ان سب کو سلاخوں کے پیچھے ڈال دیتا ہے۔ اس دوران، 2 رپورٹرز بچے کے اغوا کے معاملے میں کھود رہے ہیں اور شمو پر شک کرنا شروع کر رہے ہیں اور اس کے تعاقب میں ہیں۔ زمان اور چندا جیل سے باہر آتے ہی شادی کر لیتے ہیں۔ زمان کی بیوی اپنے ہی گھر میں نوکر بن جاتی ہے۔ ننھی اللہ دینو کے بچے کی حاملہ ہے۔ اللہ دینو اسے شہر واپس شمو کے گھر لے آتا ہے۔ شمو کو نہیں معلوم کہ وہ شادی شدہ ہیں اور اس کی شادی شاہد سے کرنے کی کوشش کرتی ہے۔ ننھی اسے بتاتی ہے کہ وہ شادی شدہ ہے اور اس سے شادی نہیں کر سکتی۔ شمو کو یہ جان کر بہت غصہ آیا۔ زمان اور چندا بھی علاقے میں ننھی کے کردار پر زور زور سے طعنے دیتے ہیں۔ آخر میں شمو کو بچوں کے اغوا کے الزام میں گرفتار کیا جاتا ہے۔ ننھی اور اللہ دینو نیوز چینل پر اپنی کہانی سنانے کے لیے نمودار ہوتی ہیں۔ 6 ماہ کے بعد ننھی نے ایک بچی کو جنم دیا اور اسے اللہ دینو کے ساتھ خوش دکھایا گیا۔

کردار[ترمیم]

بین الاقوامی نشریات[ترمیم]

ننھی کو ہندوستان میں بھی 14 جنوری 2016 سے 2 فروری 2016 تک اسی عنوان کے ساتھ زندگیچینل پر نشر کیا گیا تھا جبکہ 2020 میں اسے 190 ممالک میں آن لائن اسٹریم کرنے کے لیے ہندوستانی OTT پلیٹ فارم Zee5 پر دستیاب کیا گیا تھا۔

ایوارڈز اور نامزدگی[ترمیم]

تقریب کی تاریخ ایوارڈ قسم وصول کنندہ نتیجہ Ref.
4 دسمبر 2014 لکس اسٹائل ایوارڈز بہترین ٹیلی ویژن ڈائریکٹر حسیب حسن فاتح [4] [5]
بہترین ٹیلی ویژن سیریل - سیٹلائٹ ننھی نامزد
بہترین ٹیلی ویژن اداکارہ سجل علی نامزد
بہترین ٹیلی ویژن رائٹر مونا حسیب نامزد
28 دسمبر 2013 ۔ پاکستان میڈیا ایوارڈز بہترین ڈرامہ اداکارہ سجل علی نامزد [6]
بہترین معاون اداکار جاوید شیخ نامزد

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Important Pakistani dramas you can catch up on while self-isolating". DAWN Images. 2020-05-12. اخذ شدہ بتاریخ 26 جنوری 2021. 
  2. "Nanhi". www.tv.com.pk. اخذ شدہ بتاریخ 31 جنوری 2021. 
  3. "Top Brands of HUM TV, ARY DIGITAL, GEO ENTERTAINMENT AND A-PLUS". Review It.pk. 31 August 2014. اخذ شدہ بتاریخ 31 جنوری 2021. 
  4. ^ ا ب "2014 Lux Style Awards: Meet the nominees!". ڈان (اخبار). اخذ شدہ بتاریخ 31 جنوری 2021. 
  5. ^ ا ب "13th Lux Style awards: And the winners are...". ڈان (اخبار). اخذ شدہ بتاریخ 25 جنوری 2021. 
  6. ^ ا ب "4th Pakistan Media Awards Nominations". Ahsanat Ulain. Pakistan Mirchi Music. December 27, 2013. 27 دسمبر 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ January 31, 2021. 
  7. "TV Rewind: 5 Sajal Aly Performances You Need To Watch Right Now!". Diva Online. اخذ شدہ بتاریخ 31 جنوری 2021. 

بیرونی روابط[ترمیم]