نور الدین الہیثمی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
نور الدین الہیثمی
معلومات شخصیت
تاریخ پیدائش سنہ 1335  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ وفات سنہ 1404 (68–69 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
استاد عبد الرحیم عراقی  ویکی ڈیٹا پر (P1066) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
نمایاں شاگرد حافظ ابن حجر عسقلانی  ویکی ڈیٹا پر (P802) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ محدث  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل علم حدیث  ویکی ڈیٹا پر (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کارہائے نمایاں مجمع الزوائد  ویکی ڈیٹا پر (P800) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

ابو الحسن نور الدین علی بن ابی بکر بن سلیمان الحیثمی ( 735 ھ - 1335/807 ہجری - 1405 ) حدیث کا ایک عالم اور مصنف کتاب مجمع الزوائد ومنبع الفوائد.[1] [2]

پیدائش اور حصول حدیث[ترمیم]

وہ سن 735 ہجری میں رجب کے مہینے میں پیدا ہوئے ، وہ جوانی میں ہی شیخ زین الد ین العراقی کے ہمراہ تھے ، انہوں نے اس کی درخواست سے حدیث سننے کا آغازکیا : ابو الفتوح المسدومی ، ابن الملوک ، ابن القطوانی اور دوسرے مصریوں سے۔انھوں نے حدیث سنی : ابن الخباز ، ابن الحموی ، ابن قیم الضیائیہ اور شامیوں سے۔ پھر وہ اپنے سارے سفروں پر شیخ زین الدین عراقی کے ساتھ روانہ ہوا اور ان کے ساتھ حج بھی ادا کیا اور وہ ہر سفراور حضر میں ان کے ساتھ رہے، اورانہوں نے ان کی بیٹی سے شادی کی اور حدیث میں اس کے ساتھ فارغ التحصیل ہوئے اور آپ نے ان کو اکثر کتابیں پڑھائیں۔ ان کے طلبہ میں سب سے مشہور حافظ حافظ ابن حجر عسقلانی اور ابن فہد المکی ، برہان الدین ابو الوفا ابراہیم بن محمد بن خلیل ، سبط ابن الجمی کے نام سے مشہور ہیں۔[3]

علما اس کی تعریف کرتے ہیں[ترمیم]

  • حاسظ ابن حجر عسقلانی ؒ نے کہا:وہ نصوص پر بہت غور و فکر کرنے والے تھے۔لوگوں میں اچھے ،نرم مزاج،اور بہت محبت کرنے والے تھے۔شیخ کی خدمت کرنے والے اور حدیث لکھنے سے وہ کبھی تنگ نہیں ہوئے۔
  • تقی الفاسی نے کہا: وہ نصوص اور نوادرات کا ایک اچھا حافظ تھا۔
  • الافقصی نے کہا :"وہ ایک ایسا امام تھا جو جاننے والا ، یادگار ، صالح ، شائستہ ، لوگوں کے ساتھ نرم ، عبادت گزار اور پرہیزگار تھا۔"
  • سخاوی نے کہا: "وہ دین دار، ​​متقی ، سنجیدہ ، علم کے لیے پرجوش ، عبادت ، ، شیخ کی خدمت ، کسی بھی معاملے میں لوگوں سے اختلاط نہ کرنے اور حدیث اور اس کے لوگوں سے محبت کرنے میں حیرت زدہ تھا۔"۔ «[4]

تصانیف[ترمیم]

حافط ہیثمی حفظ اور تحریر میں بہت کارگر تھا اور انھوں نے جو کتابیں لکھیں ان میں سے:[5]

    • البدر المنير في زوائد المعجم الكبير.
    • بغية الباحث عن زوائد الحارث.
    • ترتيب الثقات لابن حبان.
    • ترتيب الثقات للعجلي.
    • تقريب البغية في ترتيب أحاديث الحلية.
    • زوائد ابن ماجة على الكتب الخمسة .
    • غاية المقصد في زوائد أحمد .
    • كشف الأستار عن زوائد البزار.
    • مجمع البحرين في زوائد المعجمين: (الأوسط والصغير).
    • مجمع الزوائد ومنبع الفوائد.
    • المقصد الأعلى في زوائد أبي يعلى.
    • موار الظمآن لزوائد ابن حبان.

حوالہ جات[ترمیم]

  1. نور الدين الهيثمي المكتبة الشاملة. وصل لهذا المسار في 24 نوفمبر 2015 آرکائیو شدہ 2017-07-07 بذریعہ وے بیک مشین
  2. كتاب مجمع الزوائد ومنبع الفوائد المكتبة الشاملة. وصل لهذا المسار في 24 نوفمبر 2015 آرکائیو شدہ 2017-06-08 بذریعہ وے بیک مشین
  3. كتاب السيرة النبوية عند الهيثمي في كتابه مجمع الزوائد ومنبع الفوائد المكتبة الشاملة. وصل لهذا المسار في 24 نوفمبر 2015 آرکائیو شدہ 2015-12-22 بذریعہ وے بیک مشین
  4. منهج الإمام الهيثمي في كتابه مجمع الزوائد ومنبع الفوائد الجمعية العلمية السعودية للسنة وعلومها، 05 أغسطس 2010. وصل لهذا المسار في 24 نوفمبر 2015 آرکائیو شدہ 2015-12-25 بذریعہ وے بیک مشین
  5. علي بن أبي بكر الهيثمي آرکائیو شدہ [Date missing] بذریعہ almeshkat.net [Error: unknown archive URL]شبكة مشكاة الإسلامية. وصل لهذا المسار في 24 نوفمبر 2015 [https://web.archive.org/web/20200504083528/http://www.almeshkat.net/books/search.php?do=all&u=���+��+���+���+������� "نسخة مؤرشفة"]. 4 مايو 2020 میں [http://www.almeshkat.net/books/search.php?do=all&u=���+��+���+���+������� اصل] سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 27 سبتمبر 2020.