مندرجات کا رخ کریں

نومل جیومل

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
نومل جیومل
ذاتی معلومات
مکمل نامنومل جیومل مکھیجا
پیدائش17 اپریل 1904(1904-04-17)
کراچی, بمبئی پریزیڈنسی, برطانوی ہند
وفات28 جولائی 1980(1980-70-28) (عمر  76 سال)
ممبئی (اب ممبئی), مہاراشٹر, بھارت
قد5 فٹ 9 انچ (1.75 میٹر)
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیلیگ بریک گیند باز
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 5)25 جون 1932  بمقابلہ  انگلستان
آخری ٹیسٹ10 فروری 1934  بمقابلہ  انگلستان
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ فرسٹ کلاس
میچ 3 84
رنز بنائے 108 4,140
بیٹنگ اوسط 27.00 32.59
100s/50s 0/0 7/16
ٹاپ اسکور 43 203*
گیندیں کرائیں 108 5102
وکٹ 2 108
بولنگ اوسط 34.00 27.54
اننگز میں 5 وکٹ - 6
میچ میں 10 وکٹ - 0
بہترین بولنگ 1/4 5/18
کیچ/سٹمپ 0 43
ماخذ: ای ایس پی این کرک انفو، 9 مئی 2020

نومل جیومل مکھیجاनौमाल जियोमल मखीजा (پیدائش: 17 اپریل 1904ء کراچی، سندھ) | (وفات: 28 جولائی 1980ء بمبئی) ایک بھارتی کرکٹ کھلاڑی تھے جنھوں نے بھارت کی طرف سے 3 ٹیسٹ میچ کھیلے جو ٹیسٹ کرکٹ میں بھارت کا پہلا اوپننگ بلے باز تھا۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

وہ 17 اپریل 1904ء کو کراچی، سندھ میں پیدا ہوئے۔ وہ ایک پرائیویٹ کمپنی کے ہیڈ کلرک کا بیٹا تھا۔ اس نے اپنا فرسٹ کلاس ڈیبیو آرتھر گلیگن کے ایم سی سی کے خلاف 1926-27ء میں ہندو اور دی ریسٹ کے لیے کراچی میں کیا، جس میں 16 رنز بنائے۔

ٹیسٹ کرکٹ کا آغاز[ترمیم]

نومل جیومل نے 1932ء میں لارڈز میں اپنے پہلے ٹیسٹ میں ہندوستان کی اننگز کا آغاز کرتے ہوئے 33 اور 25 رنز بنائے۔ انھوں نے دونوں اننگز میں اپنے اوپننگ پارٹنر جناردن نولے کے ساتھ 39 اور 41 رنز بھی بنائے۔ نومل ایک کمزور، دفاعی بلے باز تھا جس کا مضبوط نقطہ کٹ تھا۔ اس نے اس دورے میں تمام 26 فرسٹ کلاس میچوں میں کھیلتے ہوئے 1,297 رنز بنائے، جو ایک اچھی کارکردگی تھی اس بات پر غور کرتے ہوئے کہ اس نے اس وقت تک صرف میٹنگ وکٹوں پر کھیلا تھا۔ وزڈن نے جیومل کی فیلڈنگ کی صلاحیتوں پر بھی تبصرہ کیا۔ جب 1933-34ء میں انگلینڈ کا دورہ واپس آیا تو جیومل پہلے ٹیسٹ سے محروم ہو گئے۔ انھوں نے کلکتہ میں 2 اور 43 رنز بنائے لیکن مدراس میں نوبی کلارک کے منہ پر مارے گئے ایک گیند نے بائیں آنکھ کے پار آدھا انچ کٹ چھوڑ دیا۔ انجری کے باعث ان کی اننگز ختم ہو گئی اور وہ دوسرا ٹیسٹ نہیں کھیل پائے۔ رنجی ٹرافی میں اپنے پہلے میچ میں، 1934-35ء میں مغربی بھارت کے خلاف سندھ کے لیے، اس نے امر سنگھ اور لدھا رام جی کے مارے جانے کے باوجود 63 اور 53 رنز بنائے اور بولنگ میں 5/78 اور 3/52 لیے۔ انھوں نے 1922ء سے 1946ء تک سندھ پینٹنگولر میچز میں 6 سنچریوں کے ساتھ 1,993 رنز 47 کی اوسط سے بنائے۔

اول درجہ کرکٹ[ترمیم]

اول درجہ کرکٹ میں ان کا سب سے زیادہ اسکور 203* تھا جو 1938-39ء میں نواں نگر کے خلاف سندھ کے لیے ساڑھے چار گھنٹے میں بنایا گیا تھا۔ اس وقت سندھ کا مجموعی اسکور 326 تھا جس میں دگنی سنچری شامل کرنے والی دوسری سب سے کم اول درجہ اننگز مکمل ہوئی تھی۔

پاکستان کی کوچنگ[ترمیم]

انھوں نے 1950ء کی دہائی کے آخر میں پاکستان کی کوچنگ کی اور 1957ء سے قومی سلیکٹر بنے۔ وہ 1971ء میں واپس بھارت چلے گئے۔ جیومل 1980ء میں گولڈن جوبلی ٹیسٹ میں شرکت کرنے والے سب سے عمر رسیدہ بھارتی ٹیسٹ کرکٹ کھلاڑی تھے، جس نے بی سی سی آئی کے قیام کے پچاسویں سال کو منایا۔ سب سے عمر رسیدہ کرکٹ کھلاڑی کوٹا رامسوامی غیر حاضر تھے۔

اعداد و شمار[ترمیم]

نومل جیومل نے 3 ٹیسٹ میچوں کی 5 اننگز میں ایک دفعہ ناٹ آئوٹ رہ کر 27.00 کی اوسط کے ساتھ 108 رنز سکور کیے۔ 43 ان کی کسی ایک اننگ کا سب سے بڑا انفرادی سکور تھا۔ جبکہ 84 فرسٹ کلاس میچوں کی 143 اننگز میں 16 دفعہ بغیر آئوٹ ہوئے 32.59 کی اوسط سے 41.40 رنز بنائے۔ 203 ناقابل شکست رنز ان کی کسی ایک اننگ کا سب سے زیادہ سکور تھا۔ فیلڈنگ کے شعبے میں انھوں نے 43 کیچز بھی تھامے۔ نومل جیومل نے بولنگ کے میدان میں 68 رنز دے کر 2 ٹیسٹ وکٹیں اپنے نام کیں۔ 1/4 اس کی بہترین بولنگ کا عدد تھا۔ جبکہ 2975 رنز دے کر انھوں نے 108 فرسٹ کلاس وکٹوں کا جادو جگایا۔ 5/18 ان کی کسی ایک اننگ کا بہترین سکور اور فی وکٹ اوسط 27.54 رہی۔ انھوں نے 6 دفعہ کسی ایک اننگ میں 5 وکٹ حاصل کیے۔

وفات[ترمیم]

نومل جیومل 28 جولائی 1980ء کو بمبئی (اب ممبئی)، مہاراشٹر، میں 76 سال اور 102 دن کی عمر میں فوت ہوئے۔

نوٹ: وزڈن المناک اور وزڈن کرکٹ ماہانہ میں جیومل کی وفات کی تاریخ دونوں 18 جولائی بتاتی ہیں۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]