نیرجا بھانوٹ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
نیرجا بنوٹ
Neerja Bhanot 2004 stamp of India.jpg
ہندوستانی ڈاک ٹکٹ، 2004

معلومات شخصیت
پیدائش 7 ستمبر 1963(1963-09-07)
چندی گڑھ
وفات 5 ستمبر 1986(1986-90-05) (عمر  22 سال)
کراچی، سندھ، پاکستان
قومیت بھارتی
والدین راما بنوٹ
ہریش بنوٹ
عملی زندگی
مادر علمی سینٹ زیوئرس کالج، ممبئی  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ایئر ہوسٹس
نوکریاں پین امریکن ورلڈ ایئرویز  ویکی ڈیٹا پر (P108) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ شہرت پین ایم فلائٹ 73
اعزازات
Ashoka Chakra ribbon.svg اشوک چکر [1]  ویکی ڈیٹا پر (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

نیرجا بھانوٹ (7 ستمبر 1963ء - 5 ستمبر 1986ء) [2] [3] ایئر لائنز پین ایم میں ایک افسر (purser)تھیں۔ 5 ستمبر 1986ء کو پین ایم فلائٹ 73 کو پاکستان کے شہر کراچی میں ایک عارضی قیام کے دوران میں دہشت گردوں کے ذریعے اغوا کر لیا گیا تھا۔ مسافروں کی جان بچاتے وقت نیرجا کو گولی لگی جس کی وجہ سے ان کی موت ہو گئی۔ فوت ہونے کے بعد، اشوک چکرا ایوارڈ کو حاصل کرنے والی ہندوستان کی سب سے کم عمر وصول کنندہ بن گئیں۔ 1987ء میں حکومت پاکستان کی جانب سے تمغہ پاکستان[2] اور امریکہ کی طرف سے کئی دیگر ایوارڈز دیے گئے۔ جہاز میں موجود لوگوں کے مطابق نیرجا کو اس وقت گولی ماری گئی جب وہ مسافروں کو ہنگامی حالت سے باہر نکلنے میں مدد کر رہی تھیں۔[3][4] نیرجا کی زندگی اور بہادری نے فلم نیرجا کو متاثر کیا جو 2016ء میں ریلیز ہوئی تھی اور رام مادھانی کی ہدایت کاری میں سونم کپور نے اداکاری کی ہے۔

پیشہ ورانہ زندگی[ترمیم]

نیرجا نے پین ایم کے ساتھ فلائٹ اٹینڈنٹ ملازمت کے لئے اس درخواست دی تھی جب 1985ء میں پین ایم نے فرینکفرٹ سے ہندوستان کے راستوں کے لئے تمام ہندوستانی کیبن عملہ رکھنے کا فیصلہ کیا۔ نیرجا فلائٹ اٹینڈنٹ کی حیثیت سے تربیت کے لئے فلوریڈا کے میامی گئی لیکن وہ بطور جہاز افسر (purser) واپس لوٹی۔[2][5] نیرجا نے پین ام میں اپنے کام کے دوران میں ماڈلنگ میں کامیابی بھی حاصل کی تھی۔

ذاتی زندگی اور خاندان[ترمیم]

نیرجا کے دو بھائی، اکھیل اور انیش تھے۔ نیرجا کی شادی ایک طے شدہ شادی تھی لیکن شادی کے دو ماہ بعد وہ اپنے گھر واپس آگئی۔ ان کے والد ہریش بھانوٹ 30 سال سے زیادہ عرصہ تک ہندستان ٹائمز کے ساتھ بطور صحافی کام کرتے رہے اور 86 سال کی عمر میں چندی گڑھ میں سنہ 2008ء میں نئے سال کے دن ان کا انتقال ہوگیا۔[6] 5 دسمبر 2015ء کو نیرجا کی والدہ کا بھی انتقال ہوگیا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. http://gallantryawards.gov.in/Awardee/neerja-mishra — اخذ شدہ بتاریخ: 9 جولا‎ئی 2019
  2. ^ ا ب پ "Brave in life, brave in death". tribuneindia.com. 
  3. ^ ا ب "'I saw Neerja being shot in the head'". ٹائمز آف انڈیا. 
  4. "Inside a hijack: The unheard stories of the Pan Am 73 crew". bbc.com. 
  5. "The story of Neerja Bhanot, India's bravest flight attendant". Cntraveller.in. 
  6. "Journalist, former MC member Harish Bhanot passes away". انڈین ایکسپریس.