وادی محسر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

وادی محسر ایک ایسی جگہ ہے جو منٰی اور مزدلفہ کے مابین حد فاصل ہے۔ وہ دونوں میں سے کسی کا حصہ نہیں ہے۔[1] حرم عرفات کے بعد فورا شروع ہوجاتا ہے۔ سوائے وادی محسر کے کسی بھی جگہ کا استثناء نہیں کیا، محسر نہ تو مشعر ہے نہ مزدلفہ کا حصہ ہے اور نہ منیٰ کا۔ ابرہہ حاکم یمن لشکر عظیم لیکر جس میں ہاتھی بھی تھے خانہ کعبہ کو منہدم کرنے چڑھ آیا، جب وادی محسر میں پہنچا تو سمندر کی طرف سے کچھ پرندے آئے، ان کے پنجوں اور چونجوں میں مسور اور چنے کی برابر کنکریاں تھیں انہوں نے ان کنکریوں کو لشکر پر پھینکنا شروع کیا، یہ کنکریاں بندوق کی گولی کی طرح لگتی تھیں اور ہلاک کردیتی تھیں، اکثر تو اس عذاب سے ہلاک ہوئے اور دوسرے بھاگ گئے اور دوسری بڑی بڑی تکلیفیں اٹھا کر مر گئے،[2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. المجموع شرح المہندب
  2. تفسیر بیان القرآن مولانا اشرف علی تھانوی سورۃ الفیل