وجے روپانی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
وجے روپانی
The Chief Minister of Gujarat Vijay Rupani on February 12, 2018.jpg 

مناصب
رکن راجیہ سبھا   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں منصب (P39) ویکی ڈیٹا پر
دفتر میں
2006  – 2012 
رکن گجرات قانون ساز اسمبلی   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں منصب (P39) ویکی ڈیٹا پر
آغاز منصب
19 اکتوبر 2014 
وزیر اعلیٰ گجرات (16 )   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں منصب (P39) ویکی ڈیٹا پر
آغاز منصب
7 اگست 2016 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png آنندی بین پٹیل 
  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
معلومات شخصیت
پیدائش 2 اگست 1956 (63 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
یانگون  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of India.svg بھارت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
مذہب جین مت
جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر

وجے رمنیکلال روپانی (ہندی: विजय रमणिकलाल रूपाणी) ایک بھارتی جو بھارتیہ جنتا پارٹی کے سیاست دان ہیں۔ وجے 7 اگست 2016ء سے[1] مغربی بھارتی ریاست گجرات کے وزیر اعلیٰ ہیں۔[2] وہ مغربی راجکوٹ سے گجرات قانون ساز اسمبلی کے رکن بھی ہیں۔[3]

وجے روپانی نے اپنی سیاسی زندگی کا آغاز اپنے زمانۂ طالب علمی میں اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد کے سرگرم کارکن کے طور پر کیا تھا[4] انہوں راشٹریہ سویم سیوک سنگھ میں شمولیت اختیار کی بعد ازاں سنہ 1971ء میں جن سنگھ میں شامل ہو گئے۔ وہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے قیام سے ہی اس کے ساتھ منسلک ہیں۔[5][4][6]

ابتدائی زندگی[ترمیم]

وجے روپانی کی پیدائش 2 اگست 1965ء کو رنگون، برما (موجودہ یانگون، میانمار) میں ایک جین بنیا خاندان کے مایابین اور رمنیکلال روپانی کے ہاں ہوئی تھی،،[5] وہ اپنے والدین کے ساتویں اور سب سے چھوٹے بیٹے تھے۔[7] ان کا خاندان سنہ 1960 میں برما میں غیر متوازن سیاسی حالات کی وجہ سے راجکوٹ ہجرت کر گیا تھا۔ انہوں نے دھرمیندرسنجی آرٹس کالج سے بی اے اور سوراشٹر یونیورسٹی سے ایل ایل بی کیا تھا۔[8][3][9][6]

نجی زندگی[ترمیم]

وجے روپانی کی شادی انجلی روپانی سے ہوئی، جو بھارتیہ جنتا پارٹی خواتین گروپ کی رکن بھی ہیں۔[7] ان کا ایک بیٹا روشبھ ہے، جو انجینئری کا طالب علم ہے اور ایک بیٹی رادھیکا، شادی شدہ ہے۔ ان کا سب سے چھوٹا بیٹا پوجیت ایک حادثے میں فوت ہو گیا تھا اور انہوں نے اس کی یاد میں پوجیت روپانی میموریل ٹرسٹ فار چیرٹی شروع کیا تھا۔[7][10][11]

وزیر اعلیٰ گجرات[ترمیم]

7 اگست 2016ء کو آنندی بین پٹیل کی جگہ گجرات کے وزیر اعلیٰ کے طور پر حلف اٹھایا۔[12][13][14][15] سنہ 2017ء کے گجرات قانون ساز اسمبلی انتخابات میں وہ راجکوٹ حلقے سے دوبارہ منتخب ہوئے اور انڈین نیشنل کانگریس کے امیدوار اندرنیل راجیہ گرو کو شکست دی۔[16] وہ 22 دسمبر 2017ء کو اتفاق رائے سے قانون ساز جماعت کے قائد منتخب ہوئے اور وہ وزارت اعلیٰ برقرار رہے ساتھ ہی نتن پٹیل نائب وزیر اعلیٰ منتخب ہو گئے۔[17][18]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Vijay Rupani sworn in as new Gujarat Chief Minister"۔ دی ٹائمز آف انڈیا۔ 7 اگست 2016۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 اگست 2016۔
  2. "Vijay Rupani to continue as Gujarat chief minister, Nitin Patel to be his deputy"۔ دی ٹائمز آف انڈیا۔ 22 دسمبر 2017۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 23 دسمبر 2017۔
  3. ^ ا ب "MEMBERS OF PARLIAMENT"۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 دسمبر 2014۔
  4. ^ ا ب "Saurashtra strongman Vijay Rupani in Gujarat Cabinet"۔ اکنامک ٹائمز۔ 20 نومبر 2014۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 دسمبر 2014۔
  5. ^ ا ب "How Vijay Rupani pipped Nitin Patel to become Gujarat chief minister"، دی ٹائمز آف انڈیا، 5 اگست 2016
  6. ^ ا ب "How Vijay Rupani pipped Nitin Patel to become Gujarat chief minister"۔ دی ٹائمز آف انڈیا۔ 5 اگست 2016۔ مورخہ 6 اگست 2016 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 6 اگست 2016۔ |archiveurl= اور |archive-url= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت); |archivedate= اور |archive-date= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت)
  7. ^ ا ب پ "Vijay Rupani: A swayamsevak, stock broker and founder of a trust for poor"۔ 6 اگست 2015۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 اگست 2016۔
  8. "Vijay Rupani: Member's Web Site"۔ انٹرنیٹ آرکائیو۔ 30 ستمبر 2007۔ مورخہ 30 ستمبر 2007 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 5 اگست 2016۔ |archiveurl= اور |archive-url= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت); |archivedate= اور |archive-date= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت)
  9. "Vijay Rupani: A swayamsevak, stock broker and founder of a trust for poor"۔ دی انڈین نیوز۔ 6 اگست 2016۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 6 اگست 2016۔
  10. "From RSS cadre to CM"۔ دکن ہیرلڈ۔ 8 اگست 2016۔ مورخہ 21 اگست 2016 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 اگست 2016۔ |archiveurl= اور |archive-url= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت); |archivedate= اور |archive-date= ایک سے زائد مرتبہ درج ہے (معاونت)
  11. "રૂપાણીએ 15 વર્ષ પહેલાં રાજકારણ છોડી દીધું હતું، કોણ તેમને પાછું રાજકારણમાં લઈ આવ્યું ? જાણો"۔ 7 اگست 2016۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 اگست 2016۔
  12. "Vijay Rupani sworn-in as the 16th chief minister of Gujarat; Nitin Patel Deputy CM"۔ فرسٹ پوسٹ۔ 7 اگست 2016۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 اگست 2016۔
  13. "Vijay Rupani to succeed Anandiben Patel as Gujarat CM, Nitin Patel to be his deputy"۔ دی اکنامک ٹائمز۔ 5 اگست 2016۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 5 اگست 2016۔
  14. "Vijay Rupani named Gujarat chief minister; Nitin Patel to be deputy CM"۔ دی ٹائمز آف انڈیا۔ 5 اگست 2016۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 5 اگست 2016۔
  15. "Unseen Photos Of Gujarat New Chief Minister Vijay Rupani"۔ دیویا بھاسکر۔ 5 اگست 2016۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 5 اگست 2016۔
  16. "Gujarat elections: Chief minister Vijay Rupani wins from Rajkot West"۔ لائیو مِنٹ۔ 2017-12-18۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2017-12-23۔
  17. "BJP Picks Status Quo In Gujarat. Vijay Rupani Stays Chief Minister"۔ این ڈی ٹی وی (انگریزی زبان میں)۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2017-12-23۔
  18. "BJP retains Vijay Rupani as CM in Gujarat, but is undecided in Himachal Pradesh"۔ دی انڈین ایکسپریس (امریکی انگریزی زبان میں)۔ 2017-12-23۔ مورخہ 26 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2017-12-23۔