ولی محمد پاشا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ولی محمد پاشا
(عثمانی ترک میں: ولى محمد پاشا ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
معلومات شخصیت
تاریخ پیدائش 17ویں صدی  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ وفات جولا‎ئی 1716 (65–66 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of the Ottoman Empire (1844–1922).svg سلطنت عثمانیہ  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مناصب
قپودان پاشا   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
1706  – 1707 
گورنر مصر   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
1711  – 1712 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png  
قرہ محمد پاشا  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
گورنر مصر   ویکی ڈیٹا پر (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
برسر عہدہ
1712  – 1714 
Fleche-defaut-droite-gris-32.png قرہ محمد پاشا 
عبدی پاشا  Fleche-defaut-gauche-gris-32.png
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان،  فوجی افسر  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عسکری خدمات
عہدہ امیر البحر  ویکی ڈیٹا پر (P410) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

ولی محمد پاشا (وفات سن 1716) ، جسے محمد ولی پاشا یا ولی پاشا بھی کہا جاتا ہے ، ایک عثمانی سیاستدان تھا جنہوں نے کاپودان پاشا (1706–1707) اور ایالت بوسنیا (1707) اور ایالتمصر (1711–1714) کے عثمانی گورنر کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔ [1] [2]

جب وہ 1711 میں مصر کے گورنر تھے تو ، ایک ترک مبلغ قاہرہ پہنچا اور صوفیوں کی قبروں پر نماز پڑھنے کی مذمت کرنے لگے ، اور یہ دعویٰ کیا کہ یہ اسلام کے خلاف ہے [3] ایک مقامی علماء (دینی عالم) نے اس دعوے کو مسترد کرتے ہوئے ترک مبلغ کے خلاف فتویٰ جاری کر دیا۔ تاہم ، مبلغ نے مقامی لوگوں میں مقبولیت حاصل کرلی تھی ، اور لوگوں نے ویلی محمود پاشا کی حکومت کے خلاف بغاوت اور مقامی صوفیوں کے خلاف تشدد کی دھمکی دے دی۔ جب مبلغ کے حامیوں نے اپنے نمائندے ولی محمد کو اپنے مطالبات بتانے کے لئے بھیجے تو اس نے ان سے بات چیت کر تو لی ، لیکن جب وہ چلے گئے تو انہوں نے مملوک امیروں کو آگاہ کیا کہ عوام نے اس کی اور اس کے قاضی کی توہین کرکے بغاوت کرنے کے ارادے کا اظہار کیا ہے۔ [4] اس نے امیروں کو یہ بھی بتایا کہ اس نے اپنی جان کے خوف سے شہر چھوڑنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس خبر پر امیر پریشان ہوگئے اور انہوں نے عوام کے رہنماؤں کو گرفتار کرنے اور قاہرہ سے ترک مبلغ کو جلا وطن کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے اپنی فوج اور سنجاق سرداروں کو جمع کیا۔ [5] امرا کی فوج نے ان ذمہ داران کو پکڑ لیا اور انہیں قتل کرکے اور جلاوطنی کی سزا دے کر بغاوت کو ناکام بنا دیا دیا۔ ولی محمد پاشا کو 1714 میں مصر کی امارت سے برطرف کردیا گیا۔

جون یا جولائی 1716 میں سلطان احمد ثالث کے حکم پر اسے پھانسی دی گئی۔

سیاسی عہدے
ماقبل 
کوسے خلیل پاشا
مصر کا عثمانی گورنر
1711–1712
مابعد 
قرۃ محمد پاشا
ماقبل 
قرۃ محمد پاشا
مصر کے عثمانی گورنر
1712–1714
مابعد 
عابدی پاشا

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Yılmaz Öztuna (1994). Büyük Osmanlı Tarihi: Osmanlı Devleti'nin siyasî, medenî, kültür, teşkilât ve san'at tarihi (بزبان التركية). 10. Ötüken Neşriyat A.S. صفحات 412–416. ISBN 975-437-141-5. 
  2. 'Abd al-Rahman Jabarti؛ Thomas Philipp؛ Moshe Perlmann (1994). Abd Al-Rahmann Al-Jabarti's History of Egypt. 1. Franz Steiner Verlag Stuttgart. صفحہ 77. 
  3. 'Abd al-Rahman Jabarti؛ Thomas Philipp؛ Moshe Perlmann (1994). Abd Al-Rahmann Al-Jabarti's History of Egypt. 1. Franz Steiner Verlag Stuttgart. صفحہ 79. 
  4. 'Abd al-Rahman Jabarti؛ Thomas Philipp؛ Moshe Perlmann (1994). Abd Al-Rahmann Al-Jabarti's History of Egypt. 1. Franz Steiner Verlag Stuttgart. صفحات 80–81. 
  5. 'Abd al-Rahman Jabarti؛ Thomas Philipp؛ Moshe Perlmann (1994). Abd Al-Rahmann Al-Jabarti's History of Egypt. 1. Franz Steiner Verlag Stuttgart. صفحہ 81.