يحيىٰ القطان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

’’’یحیٰ بن سعید القطان‘‘‘:صحاح ستہ کے راویوں میں شمار ہوتے ہیں

پورانام[ترمیم]

ان کا مکمل نام یحییٰ بن سعید القطان بن فروخ تمیمی بصری ابو سعید کنیت اورنسبت القطان تمیمی تھی۔

ولادت[ترمیم]

ولادت 120ھ میں بصرہ میں ہوئی حافظ حدیث اور ثقہ راوی ہیں

فن رجال[ترمیم]

فن رجال کا سلسلہ ان ہی سے شروع ہوا۔ علامہ ذہبی نے لکھا ہے کہ فن رجال میں اول جس شخص نے لکھا وہ یحی بن سعید القطان ہیں۔ امام احمد بن حنبل کا قول ہے "میں نے اپنی آنکھوں سے یحیٰ کا مثل نہیں دیکھا۔"

حدیث سے شغف[ترمیم]

حدیث کے امام حافظ،ثقہ،متقن،قدوہ تھے۔ امام مالک وابن عینیہ اور شعبہ کے معاصرین میں سے ہیں امام ابو حنیفہ کے قول پر فتوی دیتے تے اور آپ سے امام احمد و ابن المدینی اور ابن معین نے روایت کی، بیس سال تک ہر روز قرآن شریف کا ختم کرتے رہے اور چالیس سال تک آپ سے مسجد میں زوال فوت نہ ہوا۔ آپ کا دستور تھا کہ بعد نماز عصر کے آپ منارۂ مسجد میں تکیہ لگا کر بیٹھ جاتے اور آپ کے روبرو امام احمد وابن مدینی اور ابن خالد کھڑے ہو کر حدیث پوچھتے اور مغرب تک کسی کو نہ کہتے کہ بیٹھ جاؤ اور نہ آپ کی ہبیت و جلال سے کوئی بیٹھ سکتا تھا،۔ آپ سے صحاح ستہ والوں نے تخریج کی

امام ابو حنیفہ کے شاگرد[ترمیم]

اس فضل و کمال کے باوجود امام ابو حنیفہ کے حلقۂ درس میں اکثر شریک ہوتے اور انکی شاگردی پر فخر کرتے تھے۔ علامہ ذہبی نے لکھا ہے کہ یحیٰ بن سعید القطان اکثر امام ابو حنیفہ کے قول پر ہی فتوی دیا کرتے تھے۔ ۔

وفات[ترمیم]

اٹھتر سال کی عمر میں 198ھ میں بمقام بصرہ وفات پائی۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. موسوعہ فقہیہ ،جلد28 صفحہ 341، وزارت اوقاف کویت، اسلامک فقہ اکیڈمی انڈیا