ٹائیفائڈ ویکسین

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ایک لڑکی کو ٹائیفائڈ کا ویکسین دیا جا رہا ہے۔

ٹائیفائڈ ویکسین (انگریزی: Typhoid vaccine) سے مرد وہ ویکسین یا ٹیکے ہیں جو بہ طور خاص ٹائیفائڈ جیسے مرض کے انسداد اور اس سے مزاحمتی صلاحیت پیدا کرنے کے لیے بنائے گئے ہیں۔[1][2] اس سلسلے کی کوششیں کئی سالوں سے جاری ہیں۔

پاکستان ٹائیفائیڈ کے علاج کے لیے ایک نئی ویکسین استعمال کرنے والا دنیا کا پہلا ملک بن گیا ہے۔ پاکستان کو اپنے ہاں اس مرض کی ایک نئی وبا کا سامنا تھا۔ یہ نئی دوائی حکمت عملی عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کی منظور شدہ ہے۔ یہ نومبر 2019ء سے شروع ہوا تھا۔[3]

پاکستان میں کام کرنے والے ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ ٹائیفائیڈ کا مقابلہ کرنے کے لیے متعارف کروائی جانے والی نئی ویکسین ’بہت اچھی طرح کام کر رہی ہے‘ اور ایک تقریباً لاعلاج انفیکشن کو ختم کرنے میں مددگار ثابت ہو رہی ہے۔ نیو انگلینڈ جرنل آف میڈیسن میں چھپنے والی ایک رپورٹ کے مطابق نئی ویکسین کے ٹیسٹ کے دوران بیکٹیریا کے ذریعے سے پھیلنے والی بیماری کے معاملات میں 80 فی صد تک کمی آئی ہے۔ صوبہ سندھ میں اس وقت 90 لاکھ بچوں کو حفاظتی ٹیکے لگائے گئے۔ ماہرین کا کہنا تھا کہ اس ویکسین نے ٹائیفائیڈ کے خلاف جنگ کی کایا پلٹ دی ہے اور اس کے استعمال سے ٹائیفائیڈ سے ہونے والی اموات میں قدرے کمی کا امکان ہے۔ [4]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Typhoid vaccines: WHO position paper – March 2018". Weekly Epidemiological Record 93 (13): 153–172. 2018. doi:ڈی او ئي. 
  2. "Typhoid vaccines: WHO position paper, مارچ 2018 - Recommendations". Vaccine 37 (2): 214–216. 2019. doi:10.1016/j.vaccine.2018.04.022. PMID 29661581. 
  3. پاکستان ٹائیفائیڈ کی نئی ویکسین استعمال کرنے والا دنیا کا پہلا ملک
  4. ٹائیفائیڈ: نئی ویکسین سے سندھ کے 90 لاکھ بچے مستفید ہوں گے