پاکستانی پاسپورٹ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
پاکستانی پاسپورٹ
Pakistan Passport.jpg
پاکستانی پاسپورٹ کا سامنے والا کوَر.
Pakistan Passport Biodata Page.jpg
موجودہ پاکستانی پاسپورٹ
اجرا بذریعہ Flag of Pakistan.svg پاکستان
دستاویزی قسم پاسپورٹ
مقصد شناخت
مطلوبہ اہلیت پاکستانی شہریت

پاکستانی پاسپورٹ ریاستِ پاکستان کے تمام شہریوں کو بین الاقوامی سفر کے لیے مہیا کیا جاتا ہے۔ وزارت داخلہ کی شاخ ڈی جی آئی پی کی یہ ذمہ داری ہے کہ شہریوں کو پاسپورٹ فراہم کریں۔

اقسام[ترمیم]

اس وقت پاکستانی پاسپورٹ کی تین اقسام ہیں:

  • سفارتی پاسپورٹ: سفارتی پاسپورٹ سفارتکاروں اور سفارت سے متعلق دیگر افراد کے لیے جاری کیا جاتا ہے۔
  • آفیشل پاسپورٹ: یہ پاسپورٹ اراکین سینیٹ، اراکین قومی اسمبلی، صوبائی وزراء وغیرہ کے لیے جاری کیا جاتا ہے۔
  • عام پاسپورٹ: یہ پاسپورٹ ریاست کے جملہ عام شہریوں کے لیے جاری کیا جاتا ہے۔
  • حج پاسپورٹ: حج کے لیے پہلے خصوصی پاسپورٹ ہوتا تھا تاہم اب یہ سلسلہ ختم کر دیا گیا ہے اور اب عام پاسپورٹ ہی کو حج و عمرے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔

تدریجی انواع[ترمیم]

2006ء کے اوائل میں پاکستان، مشینی قابل مطالعہ پاسپورٹ (یعنی ایسا پاسپورٹ جس میں معطیات کو شناختی صفحہ پر بصریاتی حرف شناسی شکل میں تشفیر کیا جاتا ہے) اور خودکار انگشت شناسی و چہرہ شناسی نظام دونوں بائیومیٹرک ٹیکنالوجی استعمال کرکے، پاسپورٹ جاری کرنے والا، دنیا کا پہلا ملک بن گیا ۔[1]

طرز[ترمیم]

پاکستانی پاسپورٹ میں یہ جملہ لکھا ہوتا ہے کہ اسرائیل کے علاوہ ہر ملک کے لیے یہ پاسپورٹ کارآمد ہے.

عام پاکستانی پاسپورٹ گہرے سبز رنگ کا اور اس کے باہر قومی نشان بنایا ہوا ہوتا ہے۔ قومی نشان کے اوپر انگریزی میں 'Islamic Republic of Pakistan' اور اردو میں ' اسلامی جمہوریہ پاکستان' درج ہوتا ہے۔ جبکہ قومی نشان کے نیچے اردو اور انگریزی دونوں میں 'پاسپورٹ' لفظ لکھا ہوتا ہے۔ معیاری پاسپورٹ میں کل 36 صفحات ہوتے ہیں لیکن کچھ مسافر ایسے پاسپورٹ کے لیے تجویز دے سکتے ہیں جس میں 72 سے لے کر 100 تک کے صفحات ہوتے ہیں۔

صاحبِ پاسپورٹ کی معلومات[ترمیم]

2004ء تک پاکستانی پاسپورٹوں میں اکثر خانے دستی لکھائی سے پُر کیے جاتے تھے اور تصویر کو ساتھ میں لگایا جاتا تھا۔ لیکن جدید پاسپورٹوں میں تمام چیزیں کمپیوٹرائزڈ کی گئی ہیں، تصویر بھی اب اسٹیپل کرنے کی بجائے کمپیوٹر سے پہلے صفحے میں پرنٹ کیا جاتا ہے۔

  • صفحہ اول پر درجہ ذیل معلومات ہوتی ہیں:
    • صاحبِ پاسپورٹ کی تصویر
    • قسم (ذاتی کے لیے 'P'، سفارتکار کے لیے 'D'، سروس کے لیے 'S')
    • ملکی کوڈ
    • پاسپورٹ نمبر
    • مختصر نام
    • پیدائشی نام
    • قومیت
    • تاریخ پیدائش
    • شہریت نمبر
    • جنس
    • جائے پیدائش
    • والد کا نام
    • پاسپورٹ بننے کی تاریخ
    • پاسپورٹ کی مدت ختم ہونے کی تاریخ
    • جاری کرنے والی اتھارٹی
    • ٹریکنگ نمبر
    • کتابچہ نمبر
  • پہلے صفحے پر صدر پاکستان کے متعلق ایک نوٹ لکھا ہوتا ہے
  • دوسرے صفحے پر ایک انوٹیشن ہوتا ہے جس میں یہ چیزیں درج ہوتے ہیں:
    • مذہب
    • سابقہ پاسپورٹ نمبر
    • صاحبِ پاسپورٹ کی دستخط
  • تیسرے صفحے پر اسرائیل کے متعلق یہ جملہ لکھا ہوتا ہے کہ "یہ پاسپورٹ سوائے اسرائیل کے دنیا کے تمام ممالک کے لیے کارآمد ہے".

حصول کے لیے اہم معلومات (سعودی عرب)[ترمیم]

اوقات کار[ترمیم]

  1. صبح 8:30 سے شام 4:00 بجے تک
  2. روزانہ 600 ٹوکن جاری کیے جاتے ہیں جو پہلے آئے پہلے پائے کی بنیاد پر جاری ہوتے ہیں

فیسوں کی تفصیل[ترمیم]

قسم فیس (سعودی ریال میں)
نارمل 155
ارجنٹ 255
گمشدہ نارمل 305
گمشدہ ارجنٹ 505
دوسری مرتبہ گمشدہ نارمل 605
دوسری مرتبہ گمشدہ ارجنٹ 1010
100 صفحہ نارمل 305
100 صفحہ ارجنٹ 605

پاسپورٹ کی واپسی[ترمیم]

  • نارمل: 35 سے 45 دن میں
  • ارجنٹ: 15 سے 20 دن میں
  • وقت : 2 سے 4 بجے تک

مطلوبہ دستاویزات[ترمیم]

  1. پاسپورٹ (اصل+فوٹو کاپی)
  2. کارآمد شناختی کارڈ (اصل+فوٹو کاپی)
  3. بی فارم [اصل+فوٹو کاپی، اگر شناختی کارڈ نہ بنا ہو تو (16 سے کم عمر کے بچو کے لیے)
  4. اقامہ کی فوٹو کاپی

گمشدہ پاسپورٹ کے لیے مطلوبہ دستاویزات[ترمیم]

  1. جوازات کا لیٹر (اصل+فوٹوکاپی) شہادہ فقدان جواز
  2. کفیل کا لیٹر (اصل) خطاب کفیل
  3. گمشدہ پاسپورٹ کی کاپی
  4. کارآمد شناختی کارڈ (اصل+فوٹو کاپی)
  5. اخبار میں اشتہار

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]