پاکستان میڈیکل کمیشن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
پاکستان میڈیکل کمیشن
معلومات
تاسیس 2019
نوع سرکاری
محل وقوع
شہر اسلام آباد
ملک پاکستان
شماریات
ویب سائٹ رسمی موقع

پاکستان میڈیکل کمیشن پاکستان میں طب اور دندان کی تعلیم اور طبیبوں کے لیے قانونی ضوابطی اتھارٹی ہے۔

تاریخ[ترمیم]

پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل 1947 میں پاکستان ہیلتھ کانفرنس کی سفارشات پر برٹش انڈین میڈیکل کونسل ایکٹ 1933 اپنا کر ابتدائی طور پر 1948 میں 'پاکستان میڈیکل کونسل' کے نام سے قائم ہوئی تھی۔ بعد میں اسے پاکستان میڈیکل کونسل ایکٹ 1951 کے تحت تنظیم نو کی گئی جس کے تحت ہر صوبے کی اپنی میڈیکل کونسل ہے۔ 1957 میں ، سندھ میڈیکل کونسل اور پنجاب میڈیکل کونسل کو ضم کرکے مغربی پاکستان میڈیکل کونسل تشکیل دی گئی۔ پاکستان میڈیکل کونسل آرڈیننس 1962 نے موجودہ پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل کو 1962 میں ایک قانونی ادارہ کے طور پر قائم کیا اور تمام صوبائی کونسلیں تحلیل کردی گئیں۔[1] Three amendments were passed thereafter as the Medical and Dental Council (Amendment) Act in 1973, 1999 and 2012.[2]

مقصد[ترمیم]

پاکستان میں طب اور دندان سازی کے عمل کو باقاعدہ بنانے کے لیے کونسل کو یہ حکم دیا گیا ہے کہ: * انڈرگریجویٹ اور پوسٹ گریجویٹ میڈیکل اور ڈینٹل قابلیت کے حصول کے لیے تربیت کے نصاب تعلیم کے یکساں معیار کا مشورہ

  • مطالعہ کے انڈرگریجویٹ اور پوسٹ گریجویٹ میڈیکل اور ڈینٹل کورسز کے مواد اور مدت کے لیے کم سے کم تقاضوں کا تعین کرنا
  • تربیت کے کورسز میں داخلے کے لیے شرائط پیش کرنا جیسے کہ مذکورہ بالا
  • میڈیکل اور ڈینٹل اداروں میں تقرری کے لیے اساتذہ کی کم سے کم قابلیت اور تجربہ کی تجویز کرنا
  • امتحانات کے معیار ، امتحانات کے انعقاد کے طریقے
  • پیشہ ور امتحانات کے لیے امتحان دہندگان کی مطلوبہ قابلیت اور تجربے کا تعین کرنا
  • تمام میڈیکل اور ڈینٹل اداروں کے فیکلٹی اور طلبہ کا اندراج کرنا
  • میڈیکل اور ڈینٹل پریکٹیشنرز کے رجسٹر کو برقرار رکھنا * انڈرگریجویٹ اور پوسٹ گریجویٹ قابلیت کی تربیت کے لیے میڈیکل اور ڈینٹل اداروں کو تسلیم کرنے سے متعلق سفارشات کا معائنہ اور مرتب کرنا
  • معیاری کاری کے لیے انڈرگریجویٹ اور پوسٹ گریجویٹ امتحان کا معائنہ کرنا
  • رجسٹرڈ پریکٹیشنرز کے خلاف طرز عمل اور پیشہ ورانہ غفلت کے الزامات کا فیصلہ کرنا
  • گھریلو ملازمت اور تربیت کے ل اسپتالوں کا معائنہ اور ان کی منظوری
  • میڈیکل اور ڈینٹل جرائد کے لیے ہدایت نامہ پیش کرنا
  • فیکلٹی کو تجربہ سرٹیفکیٹ جاری کرنا
  • دوسرے ممالک اور میڈیکل اور ڈینٹل ریگولیٹری حکام کے ساتھ باہمی تعاون کی اسکیمیں مرتب کرنا

قیام تحلیل اور بحالی[ترمیم]

اکتوبر 2019 میں ، صدر عارف علوی کے پاکستان میڈیکل کمیشن آرڈیننس 2019 پر دستخط کے بعد پی ایم ڈی سی کو پاکستان میڈیکل کمیشن (پی ایم سی) نے تحلیل کر دیا اور ان کی جگہ لے لی۔ یہ اقدام میڈیکل تعلیم ، تربیت اور طب اور دندان سازی میں اہلیتوں کے تسلیم کرنے کے یکساں کم سے کم معیارات قائم کرکے پاکستان میں طبی پیشے کو باقاعدہ اور کنٹرول کرنے کے لیے کیا گیا تھا۔ ایسا ہونے کے ل، ، یہ استدلال کیا گیا کہ نئے آرڈیننس کو صحیح طریقے سے نافذ کرنے کے لیے پی ایم ڈی سی کو پہلے تحلیل کرنا پڑا۔ ضروری ریکارڈوں اور اثاثوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے پی ایم ڈی سی دفاتر کو عارضی طور پر سیل کر دیا گیا تھا۔ نیا پی ایم سی موجودہ میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل ، نیشنل میڈیکل اینڈ ڈینٹل اکیڈمک بورڈ اور نیشنل میڈیکل اتھارٹی پر مشتمل ہوگا جو کمیشن کے سیکریٹریٹ کے طور پر کام کرے گا۔ [3]2020 کو ، اسلام آباد ہائی کورٹ نے پاکستان میڈیکل کمیشن آرڈیننس کو کالعدم قرار دے کر پی ایم ڈی سی کو بحال کر دیا۔ [4] 16 ستمبر 2020 کو ، پاکستان میں معیاری طبی تعلیم کو یقینی بنانے کے لیے پی ایم ڈی کے ذریعہ پی ایم ڈی سی کی جگہ کا بل منظور کرکے سینیٹ اور پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کے ذریعے اسے پھر تحلیل کر دیا گیا۔ [5]

Midori Extension.svg یہ ایک نامکمل مضمون ہے۔ آپ اس میں اضافہ کر کے ویکیپیڈیا کی مدد کر سکتے ہیں۔
  1. "The Medical and Dental Council Ordinance - 1962" (PDF). punjab.gov.pk. [مردہ ربط]
  2. The Medical and Dental Council (Amendment) Act, 2012
  3. "Building sealed, PMDC employees stopped from working" (بزبان انگریزی). 
  4. "IHC restores PMDC, dissolves new medical council formed through presidential ordinance" (بزبان انگریزی). </ref//www.dawn.com/news/1533799)langlang=en}}
  5. "Pakistan Medical Commission". www.facebook.com (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 17 ستمبر 2020.