پراوین امرے

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
پراوین امرے
پروین امرے باکس کرکٹ کے فائنل میں
ذاتی معلومات
مکمل نامپروین کلیان امرے
پیدائش14 اگست 1968ء (عمر 55 سال)
ممبئی، مہاراشٹرا، بھارت
بلے بازیدائیں ہاتھ کا بلے باز
گیند بازیدائیں ہاتھ کا لیگ بریک گیند باز
حیثیتبلے باز
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ٹیسٹ (کیپ 195)13 نومبر 1992  بمقابلہ  جنوبی افریقہ
آخری ٹیسٹ4 اگست 1993  بمقابلہ  سری لنکا
پہلا ایک روزہ (کیپ 82)10 نومبر 1991  بمقابلہ  جنوبی افریقہ
آخری ایک روزہ20 فروری 1994  بمقابلہ  سری لنکا
ملکی کرکٹ
عرصہٹیمیں
ایئر انڈیا
بنگال کرکٹ ٹیم
بولینڈ کرکٹ ٹیم
گوا کرکٹ ٹیم
ممبئی کرکٹ ٹیم
ریلوے کرکٹ ٹیم
راجستھان کرکٹ ٹیم
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ٹیسٹ ایک روزہ فرسٹ کلاس لسٹ اے
میچ 11 37 86 113
رنز بنائے 425 513 5,815 2,382
بیٹنگ اوسط 42.50 20.52 48.86 27.37
100s/50s 1/3 0/2 17/25 1/14
ٹاپ اسکور 103 84* 246 103*
گیندیں کرائیں 2 30 26
وکٹ 0 0 0
بالنگ اوسط
اننگز میں 5 وکٹ
میچ میں 10 وکٹ
بہترین بولنگ
کیچ/سٹمپ 9/– 12/0 58/0 32/–
ماخذ: ای ایس پی این کرک انفو، 17 فروری 2018

پروین کلیان امرے (پیدائش: 14 اگست 1968ء) ایک بھارتی کرکٹ کھلاڑی ہے جس نے 1991ء اور 1999ء کے درمیان ہندوستانی کرکٹ ٹیم کی نمائندگی کی۔ انھوں نے 11 ٹیسٹ میچ اور 37 ایک روزہ بین الاقوامی کھیلے۔

مقامی کیریئر[ترمیم]

مقامی سطح پر، امرے نے ممبئی ، ریلوے ، راجستھان اور بنگال جیسی مختلف ٹیموں کے لیے کھیلا، جبکہ بولانڈ کے لیے جنوبی افریقہ میں بھی کھیلا۔ بنگال کے خلاف ریسٹ آف انڈیا کے لیے ان کا 246 کا سکور ایرانی ٹرافی میں کسی بھی بلے باز کا سب سے بڑا اسکور ہے۔ [1] ان کے کوچ، رماکانت اچریکر ، جو سچن ٹنڈولکر کے کوچ بھی تھے، نے ایک بار مشہور طور پر دعویٰ کیا تھا کہ وہ سچن سے بھی بہتر بلے باز ہوں گے۔

بین الاقوامی کیریئر[ترمیم]

امرے نے 10 نومبر 1991ء کو کولکتہ میں جنوبی افریقہ کے خلاف اپنا ایک روزہ بین الاقوامی ڈیبیو کیا، جس نے 74 گیندوں پر 55 رنز بنائے۔ [2] ان کا ٹیسٹ ڈیبیو اسی ٹیم کے خلاف ڈربن میں ہوا، اس نے سنچری اسکور کی جو اتفاق سے ٹیسٹ میں ان کا سب سے زیادہ سکور تھا۔ [3] ایونٹ میں وہ یہ کارنامہ انجام دینے والے نویں ہندوستانی کھلاڑی بن گئے۔ [4] پروین امرے کا سب سے زیادہ ون ڈے سکور بھی جنوبی افریقہ کے خلاف آیا جب انھوں نے 98 گیندوں پر ناقابل شکست 84 رنز بنا کر ہندوستان کو 1992ء کی ون ڈے سیریز کے ساتویں ایک دن میں فتح سے ہمکنار کیا۔ [5]

کرکٹ کے بعد[ترمیم]

امرے کو رماکانت اچریکر نے کوچ کیا، جنھوں نے سچن ٹنڈولکر اور ونود کامبلی جیسے کرکٹرز کو بھی تربیت دی۔ وہ ہندوستان کی انڈر 19 کرکٹ ٹیم کے کوچ تھے، جس نے آسٹریلیا اور ممبئی کرکٹ ٹیم میں 2012ء کا انڈر 19 کرکٹ ورلڈ کپ جیتا تھا۔ وہ انڈین پریمیئر لیگ میں پونے واریئرز انڈیا کے اسسٹنٹ کوچ تھے۔ وہ آئی پی ایل میں دہلی کیپٹلس کے ٹیلن سکاؤٹ تھے۔ جولائی 2019 ءمیں انھیں مختصر مدت کی بنیاد پر ریاستہائے متحدہ کی قومی کرکٹ ٹیم کا بیٹنگ کوچ مقرر کیا گیا۔ [6] جنوری 2021ء میں، انھیں دہلی کیپٹلز کا اسسٹنٹ کوچ مقرر کیا گیا۔ [7]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Ankush Das (23 July 2019)۔ "10 Talented Indian Cricketers who Failed at the International Level"۔ Cricket Addictor۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 جون 2020 
  2. Suvajit Mustafi (10 November 2016)۔ "Pravin Amre recalls his ODI debut that marked South Africa's readmission in international cricket"۔ Cricket Country۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 جون 2020 
  3. "Pravin Amre profile and biography, stats, records, averages, photos and videos"۔ ESPNcricinfo (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 جولا‎ئی 2021 
  4. "Records / Test matches / Batting records / Hundred on debut"۔ ESPNcricinfo۔ 23 اپریل 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 12 دسمبر 2012 
  5. "Full Scorecard of South Africa vs India 7th ODI 1992/93 - Score Report | ESPNcricinfo.com"۔ ESPNcricinfo (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 جولا‎ئی 2021 
  6. "USA Cricket Announces New National Team Coaching Structure"۔ USA Cricket۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 جولا‎ئی 2019 
  7. "Pravin Amre Returns to Delhi Capitals as Assistant Coach"۔ Delhi Capitals (بزبان انگریزی)۔ 6 January 2021۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 جنوری 2021