پہلی آیت سجدہ تلاوت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

قرآن مجید کی پہلی  آیت سجدہ تلاوت سورہ الاعراف کی آیت 206 ہے۔

Ra bracket.png إِنَّ الَّذِينَ عِندَ رَبِّكَ لاَ يَسْتَكْبِرُونَ عَنْ عِبَادَتِهِ وَيُسَبِّحُونَهُ وَلَهُ يَسْجُدُونَ Aya-206.png La bracket.png

ترجمہ[ترمیم]

یقیناً جو تیرے رب کے نزدیک ہیں، وہ اُس کی عبادت سے تکبر نہیں کرتے اور اُس کی پاکی بیان کرتے ہیں اور اُس کو سجدہ کرتے ہیں  O

تفسیر[ترمیم]

امام ابن ابی شیبہ نے حضرت عبداللہ بن عمر سے روایت نقل کی ہے کہ وہ اپنے سجود میں کہا کرتے تھے: اَللّٰھُمَّ لَکَ سَجَدَ سَوَادِیْ وَبِکَ آمَنَ فُوَّادِیْ، اَللّٰھُمَّ ارْزُقْنِیْ عِلْمًا یَنْفَعُنِیْ وَ عِلْمًا یَّرْفَعُنِیْ اے اللہ تیرے لیے میرے وجود نے سجدہ کیا اور میرا دِل تیرے ساتھ ایمان لایا، اے اللہ مجھے ایسا علم عطاء فرما جو میرے لیے نفع بخش ہو اور ایسا علم عطاء فرما جو میرے لیے باعث رِفعت و بلندی ہو۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. جلال الدین سیوطی: تفسیر الدر المنثور، جلد 3، صفحہ 503، تحت سورۃ الاعراف، آیت 206۔ مطبوعہ لاہور۔