پہلی نہرو وزارت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
پہلی نہرو وزارت
Flag of India.svg
the ڈومنین بھارت کی پہلی وزارت
The first Cabinet of independent India.jpg
بھارت کی کابینہ 31 جنوری 1950، نومنتخب صدر راجندر پرساد کے ہمراہ۔ (بائیں سے دائیں بیٹھے ہوئے) ڈاکٹر۔ بھیمراو رامجی آمبیڈکر، رفیع احمد قدوائی، بالدیو سنگھ، ابو الکلام آزاد، جواہر لعل نہرو، ڈاکٹر۔ راجندر پرساد، ولبھ بھائی پٹیل، ڈاکٹر۔ John Mathai، شری Jagjivan Ram، راجکماری امرت کور اور ڈاکٹر۔ S. P. Mukherjee۔ (دائیں سے بائیں کھڑے) خورشید لال، R.R. Diwakar، Mohanlal Saksena، N. Gopalaswami Ayyangar، N.V. Gadgil، K. C. Neogy، Jairamdas Daulatram، K. Santhanam، Satya Narayan Sinha اور ڈاکٹر۔ بی۔ وی۔ کیشکر۔
تاریخ تشکیل 14 اگست 1947ء (1947ء-08-14)
تاریخ تحلیل 15 اپریل 1952ء (1952ء-04-15)
افراد اور تنظیمیں
سربراہ حکومت جواہر لعل نہرو
نائب سربراہ حکومت ولبھ بھائی پٹیل (15 دسمبر 1950 تک)
صدر ریاست لوئس ماؤنٹ بیٹن (گورنر جنرل ہند)
(15 اگست 1947 – 21 جون 1948)
چکرورتی راجگوپال آچاریہ (گورنر-جنرل)
(21 جون 1948 – 26 جنوری 1950)
راجندر پرساد (صدر بھارت)
(26 جنوری 1950 سے)
رکن جماعت انڈین نیشنل کانگریس
مقننہ میں اکثریت
حزب اختلاف کوئی نہیں
قائد حزب اختلاف کوئی نہیں
تاریخ
انتخابات 1946
Outgoing election 1951
مقننہ کی مدت کچھ وقت
پیشرو کوئی نہیں
جانشین دوسری نہرو وزارت

14 اگست 1947ء میں آزادی کے بعد، جواہر لعل نہرو نے بطور پہلے وزیراعظم بھارت کے دفتر سنبھالا اور پہلی نہرو وزارت کی تشکیل کے لیے پندرہ وزرا کا انتخاب کیا۔

پس منظر[ترمیم]

بھارت ابھی برطانیہ کے تحت تھا کہ اس نے آئین ساز اسمبلی تشکیل دی، یہ تشکیل ہندوستانی رہنماؤں اور برطانوی اراکین کیبنٹ مشن پلان کے مابین مذاکرات کے بعد ہوئی۔ صوبائی اسمبلی کے انتخابات 1946 کی ابتدا میں منعقد ہوئے۔ آئین ساز اسمبلی کے اراکین بالواسطہ طور پر ان نو منتخب صوبائی اسمبلیوں کے ارکان سے منتخب کیے گئے اور ابتدائی طور پر ان صوبوں کے نمائندے شامل تھے جو بعد میں پاکستان کا حصہ بنے اور بعض اب بنگلہ دیش میں ہیں۔ آئین ساز اسمبلی میں 9 خواتین سمیت 299 نمائندے تھے۔

نو منتخب آئین ساز اسمبلی سے 2 ستمبر 1946 کو بھارت کی عبوری حکومت تشکیل دی گئی۔ کل نشستوں میں سے سب سے 69 فیصد کے ساتھ، انڈین نیشنل کانگریس اسمبلی میں اکثریتی جماعت تھی جبکہ مسلم لیگ نے مسلمانوں کی تقریباً تمام مخصوص نشستیں حاصل کیں۔ چھوٹی جماعتوں سے کچھ ارکان بھی موجود تھے، جیسا کہ شیڈولڈ کاسٹ فیڈریشن، کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا اور یونینسٹ پارٹی۔ پاکستانی آئین ساز اسمبلی کے کراچی میں ہونے والے اجلاس کے لیے جون 1947 میں، سندھ، مشرقی بنگال، بلوچستان، پنجاب، پاکستان اور شمال مغربی سرحدی صوبے کے وفود دستبردار ہو گئے۔ 15 اگست 1947 کو ڈومنین بھارت اور ڈومنین پاکستان خود مختار قوم بن گئے، وہ ارکان مسلم لیگ جو کراچی آئین ساز اجلاس کی وجہ سے دستبردار نہیں ہوئے تھے وہ بھارتی پارلیمنٹ میں آ گئے۔ مسلم لیگ کے صرف 28 ارکان نے بھارت اسمبلی کی رکنیت اختیار کی۔ بعد میں، 93 اراکن کو ہندوستان کی نوابی ریاستیں سے نامزد کیا گیا تھا۔ اس طرح گانگریس نے 82% سے اکثریت حاصل کر لی۔

جواہر لال نہرو نے پہلے وزیراعظم بھارت کے طور پر 15 اگست 1947 کو ذمہ داری لی اور کابینہ کے لیے 15 دیگر ارکان کا انتخاب کیا۔ ولبھ بھائی پٹیل نے پہلے نائب وزیر اعظم کا عہدہ پایا جس پر وہ اپنی وفات 15 دسمبر 1950 تک برقرار رہے۔ لوئس ماؤنٹ بیٹن اور بعد میں چکرورتی راجگوپال آچاریہ نے بطور گورنر جنرل ہند 26 جنوری 1950 تک خدمات سر انجام دیں، پھر راجندر پرساد پہلے صدر بھارت منتخب ہوئے۔[1][2]

کابینہ ارکان[ترمیم]

کابینہ ارکین میں ہندو، مسلمان، مسیحی اور سکھ برادریوں سے ارکان شامل تھے۔ جبکہ دو ارکان دلت ذات سے تھے۔[3][4][5] راجکماری امرت کور کابینہ کی واحد خاتون رکن تھیں۔ آزاد بھارت کی پہلی کابینہ میں وزرا کی ایک فہرست ذیل میں ہے۔[1]

کلید
  • وزرات کے دوران میں انتقال
  • RES مستعفی
قلمدان وزارت وزیر در منصب ترک منصب پارٹی
وزیراعظم بھارت
وزیر خارجہ امور و دولت مشترکہ
وزیر سائنسی تحقیقات
 جواہر لعل نہرو15 اگست 1947دوسری نہرو وزارتانڈین نیشنل کانگریس
نائب وزیر اعظم ولبھ بھائی پٹیل15 اگست 194715 دسمبر 1950[†]انڈین نیشنل کانگریس
وزیر داخلہ و ریاستی امور ولبھ بھائی پٹیل15 اگست 194715 دسمبر 1950[†]انڈین نیشنل کانگریس
 چکرورتی راجگوپال آچاریہ[6]26 دسمبر 195025 اکتوبر 1951[RES]انڈین نیشنل کانگریس
 Kailash Nath Katju1951دوسری نہرو وزارتانڈین نیشنل کانگریس
وزیر اطلاعات و نشریات ولبھ بھائی پٹیل15 اگست 19471949انڈین نیشنل کانگریس
 R. R. Diwakar[7]194915 اپریل 1952انڈین نیشنل کانگریس
وزیر خزانہ R. K. Shanmukham Chetty15 اگست 19471949انڈین نیشنل کانگریس
 John Mathai19491950[RES]انڈین نیشنل کانگریس
 C. D. Deshmukh1950دوسری نہرو وزارتانڈین نیشنل کانگریس
وزیر قانون بھیمراو رامجی آمبیڈکر[6]15 اگست 19471951[RES]ایس سی ایف
وزیر دفاع بالدیو سنگھ15 اگست 1947دوسری نہرو وزارتپینتھک پارٹی
وزیر ریلوے و ٹرانسپورٹ John Mathai15 اگست 194722 ستمبر 1948انڈین نیشنل کانگریس
 N. Gopalaswami Ayyangar22 ستمبر 1948دوسری نہرو وزارتانڈین نیشنل کانگریس
وزیر تعلیم ابو الکلام آزاد15 اگست 1947دوسری نہرو وزارتانڈین نیشنل کانگریس
وزیر خوراک و زراعت Jairamdas Daulatram15 اگست 194715 اپریل 1952انڈین نیشنل کانگریس
وزیر صنعت و سپلائز Syama Prasad Mookerjee15 اگست 19476 اپریل 1950[RES]ہندو مہاسبھا
وزیر محنت Jagjivan Ram15 اگست 194715 اپریل 1952انڈین نیشنل کانگریس
وزیر تجارت Cooverji Hormusji Bhabha15 اگست 194715 اپریل 1952انڈین نیشنل کانگریس
وزیر مواصلات رفیع احمد قدوائی15 اگست 194715 اپریل 1952انڈین نیشنل کانگریس
وزیر صحت امرت کور15 اگست 194715 اپریل 1952انڈین نیشنل کانگریس
وزیر ورکس، کانکنی و برقیات Narhar Vishnu Gadgil15 اگست 194715 اپریل 1952انڈین نیشنل کانگریس
Minister of Relief and Rehabilitation K. C. Neogy15 اگست 1947اپریل 1950[RES]انڈین نیشنل کانگریس
وزیر بے محکمہ N. Gopalaswami Ayyangar[8]15 اگست 194722 ستمبر 1948انڈین نیشنل کانگریس
 Mohanlal Saxena15 اگست 194715 اپریل 1952انڈین نیشنل کانگریس

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب Ananth V. Krishna۔ India Since Independence: Making Sense Of Indian Politics۔ India: Pearson Education India۔ صفحات 34–36۔ آئی ایس بی این 9788131734650۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 27 مئی 2014۔
  2. Ramachandra Guha, "India After Gandhi"، Picador India, 2007. ISBN 978-0-330-39610-3
  3. vignesh venkatesan (2010-08-25)۔ "DARE TO READ: India's first cabinet"۔ Thevkyblog.blogspot.com۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 2011-08-06۔
  4. "The New Cabinet"۔ Hindustan Times۔ 15 اگست 1947۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 19 اگست 2011۔
  5. "New Cabinet of India"۔ Times of India۔ 15 اگست 1947۔ صفحہ 1۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 19 اگست 2011۔
  6. ^ ا ب Déjà View | The Chetty affair - Livemint
  7. [1]پی ڈی ایف (RAJYA SABHA MEMBERS, BIOGRAPHICAL SKETCHES, 1952–2003: D)
  8. 10 facts about Article 370 that you need to know

مزید پڑھیے[ترمیم]

سانچہ:Indian federal ministries