پیشینس کوپر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
پیشینس کوپر
پیشینس کوپر

معلومات شخصیت
پیدائش 1905
کولکاتا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 1993
پاکستان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of India.svg بھارت
British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
شوہر Gul Hamid
عملی زندگی
پیشہ اداکار
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحات  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں آئی ایم ڈی بی - آئی ڈی (P345) ویکی ڈیٹا پر

پیشینس کوپر (انگریزی: Patience Cooper) ایک بھارتی فلمی اداکارہ تھی۔ پیشنس کُوپر کا نام ہندوستانی فلمی صنعت کی پہلی خاتون سپر سٹار کی حیثیت سے ہمیشہ زندہ رہے گا۔ ہندوستانی فلمی صنعت کی پہلی خاتون سپر سٹار جن کو خاموش فلموں کی مدھو بالا بھی کہا جاتا ہے۔ 1920ء کی دہائی میں جب ہندوستان میں خاموش فلمیں بنائی جاتی تھیں تو اس وقت چند فنکاروں نے اپنی بہترین کارکردگی کی وجہ سے شہرت حاصل کی۔ ان میں سے ایک نام پیشنس کُوپر کا بھی تھا۔

حالات زندگی[ترمیم]

1905ء میں پیدا ہونے والی یہ خاتون اداکارہ اینگلو انڈین تھیں اور ان کا تعلق کلکتہ سے تھا۔

پیشنس کُوپر نے ذ اتی زندگی میں بہت صدمات جھیلے لیکن وہ ایک حوصلہ مند خاتون تھیں جنہوں نے بڑی ہمت اور استقامت سے حالات کا مقابلہ کیا۔ ان کی پہلی شادی گل حمید سے ہوئی جو اپنے وقت کے بڑے مشہور ہیرو تھے ۔گل حمید بھی بڑے حسین تھے بلکہ ان کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ مردانہ وجاہت کا جیتا جاگتا شاہکار تھے۔ بد قسمتی سے شادی کے صرف 6برس بعد وہ اس جہانِ فانی سے رخصت ہو گئے۔ کُوپر کو جوانی میں ہی اپنے شوہر کی موت کا صدمہ برداشت کرنا پڑا۔

کُوپر نے یہ عظیم صدمہ برداشت کر لیا اور پھر سے زندگی کی ڈگر پر چلنے لگیں۔ کچھ حلقوں کی رائے میں کُوپر نے سب سے پہلے ایم اے ایچ اصفہانی سے شادی کی جو چائے کی صنعت سے وابستہ تھے۔ اس وقت ان کی عمر21سال تھی۔ ان کی شادی طلاق پر منتج ہوئی۔ جس کے بعد انہوں نے گل حمید کو اپنا شریک حیات بنایا۔ 1947ء میں پیشنس کُوپر پاکستان آ گئیں اور اپنا نام صابرہ بیگم رکھ لیا۔ وہ کراچی میں اپنی دو لے پالک بیٹیوں کیساتھ رہائش پزیر ہو گئیں جن کے نام زینت اور حلیمہ ہیں۔ اپنی زندگی کے آخری دن انہوں نے اپنی لے پالک بیٹیوں کے ساتھ کراچی میں گزارے۔ 1983ء میں ان کا انتقال ہو گیا۔[1]

فنّی خدمات[ترمیم]

انہوں نے 40کے قریب خاموش اور بولتی فلموں میں کام کیا لیکن انہوں نے زیادہ تر خاموش فلموں میں اداکاری کی۔ ان کی کامیاب فلموں کی تعداد اتنی زیادہ تھی کہ انہیں ہندوستانی فلمی صنعت کی پہلی خاتون سپر سٹار کہا جاتا ہے۔ انہوں نے1920ء سے لے کر 1944ء تک فلموں میں کام کیا۔ انہوں نے اپنے کیرئیر کا آغاز رقاصہ کی حیثیت سے کیا۔ 1922ء میں ان کی فلم ’’پتی بھکتی ‘‘ کو بہت کامیابی ملی۔ ان کے بارے میں یہ بھی کہا جاتا ہے کہ بھارتی سکرین پر پہلی بار ڈبل رول انہوں نے ادا کیا۔ پہلے فلم ’’پتنی پرتاب ‘‘میں وہ جڑواں بہنوں کی حیثیت سے جلوہ گر ہوئیں اور بعد میں انہوں نے فلم ’’کشمیری سُندری ‘‘میں ماں اور بیٹی کا ڈبل رول اداکیا لیکن ہندوستان کے کچھ فلمی حلقے اسے درست نہیں مانتے۔ ان کے مطابق سب سے پہلے اداکارہ اینا سلینکھے نے 1917ء میں ریلیز ہونیوالی خاموش فلم ’’ لنکا دہن ‘‘ میں رام اور سیتا کا ڈبل رول ادا کیا۔ ’’پتی بھگتی ‘‘ کو پیشنس کُوپرکی بہترین فلم قرار دیا جاتا ہے۔ اس فلم میں انہوں نے لیلا وتی کا کردار ادا کیا تھا۔ اس فلم کے ہدایتکار جے جے مدن تھے جو اپنے وقت کے عظیم ہدایتکار مانے جاتے تھے۔ فلم میں انہوں نے عورتوں کو یہ پیغام دیا کہ وہ اپنے شوہروں کے لیے سب کچھ وقف کر دیں۔ انہوں نے جے جے مدن کی ایک اور یادگار فلم میں اپنے فن کے جوہر دکھائے جس کا نام تھا ’’ لیلیٰ مجنوں ‘‘۔ 1923ء میں جے جے مدن کی ہی ایک اور فلم ’’نورجہاں ‘‘ میں پیشنس کُوپر نے اپنی فنکارانہ صلاحیتوں کا مظاہرہ کیا۔ اس کے علاوہ 1928ء میں ’’آنکھ کا نشہ ‘‘ اور پھر ’’ حورِ عرب ‘‘ میں بھی انہوں نے شاندار اداکاری کی بدولت فلم بینوں کو متاثر کیا۔ 1936ء میں انہیں گل حمید کی ہدایتکاری میں مشہور فلم ’’ خیبر پاس ‘‘ میں کام کرنے کا موقع ملا۔ یہ بولتی فلم تھی۔ اس کے بعد انہوں نے اپنے وقت کی ایک اور مشہور فلم ’’ باغی سپاہی ‘‘ میں با کمال اداکاری کی۔ اس فلم کے ہیرو گل حمید تھے جبکہ ہدایتکاری کے فرائض اے آر کاردار نے سر انجام دیے۔ پیشنس کُوپر کی دیگر مشہور فلموں میں ’’ فخر اسلام ‘‘، ’’نل مانیتی ‘‘، ’’ وشنو اوتار ‘‘ اور ’’علی بابا چالیس چور ‘‘ شامل ہیں۔ سیاہ آنکھیں، تیکھے نقوش اور آبنوسی بال۔1944ء میں انہوں نے فلموں سے ریٹائرمنٹ لے لی۔ ان کی آخری فلم ’’ ارادہ ‘‘ تھی۔[2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. پیشنس کوپر: ماضی کی حورِعرب۔ اے آر وائی نیوز
  2. عبدالحفیظ ظفر (2013-10-11)۔ "پیشنس کُوپر - روزنامہ دنیا"۔ مورخہ 6 جنوری 2019 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔
Midori Extension.svg یہ ایک نامکمل مضمون ہے۔ آپ اس میں اضافہ کر کے ویکیپیڈیا کی مدد کر سکتے ہیں۔